آئی اے ایس خاتون افسر سے یک طرفہ محبت میں سی آئی ایس ایف کمانڈینٹ نے کیا یہ کام، سلاخوں کے پیچھے پہنچ گیا

وزارت خارجہ میں کام کررہے سی آئی ایس ایف کے ایک کمانڈینٹ کو یکطرفہ محبت نے جیل کی سلاخوں کے پیچھے پہنچادیا ۔

Oct 11, 2019 08:40 AM IST | Updated on: Oct 11, 2019 08:40 AM IST
آئی اے ایس خاتون افسر سے یک طرفہ محبت میں سی آئی ایس ایف کمانڈینٹ نے کیا یہ کام، سلاخوں کے پیچھے پہنچ گیا

آئی اے ایس خاتون افسر سے یک طرفہ محبت میں سی آئی ایس ایف کمانڈینٹ نے کیا یہ کام

وزارت خارجہ میں کام کررہے سی آئی ایس ایف کے ایک کمانڈینٹ کو یکطرفہ محبت نے جیل کی سلاخوں کے پیچھے پہنچادیا ۔ ملزم نے یک طرفہ محبت میں ایک آئی اے ایس خاتون افسر کے شوہر کو ڈرگس کی تسکری میں پھنسانے کی سازش رچی تھی ، لیکن وہ کامیاب نہیں ہوپایا ۔ معاملہ کا انکشاف ہونے کے بعد ملزم کمانڈینٹ سمیت اس کے ساتھی دوست کو دہلی پولیس نے گرفتار کرلیا ہے ۔ دہلی پولیس دونوں ملزمین سے پوچھ گچھ کررہی ہے ۔

اطلاعات کے مطابق ملزم سی آئی ایس ایف کمانڈینٹ رنجن پرتاپ سنگھ آبائی طور پر اترپردیش کے علی گڑھ کا رہنے والا ہے ۔ وہ فی الحال وزارت خارجہ میں ڈیپوٹیشن پر کام کر رہا ہے ۔ وہ دہلی کے ساکیت علاقہ میں رہتا ہے ۔ تقریبا 42 سالہ رنجن پرتاپ سنگھ پر الزام ہے کہ اس نے وزارت برائے اطلاعات و نشریات کے الیکٹرانک نکیتن والے دفتر میں سینئر کنسلٹنٹ امت ساونت کو ڈرگس کی تسکری کے الزام میں پھنسانے کی سازش رچی تھی ۔

Loading...

خاص ذرائع کے مطابق رنجن پرتاپ کی کبھی ٹریننگ کے وقت راجستھان میں تعینات خاتون آئی اے ایس افسر سے ملاقات ہوئی تھی ، اس کے بعد وہ دل ہی دل میں اس خاتون افسر سے یک طرفہ محبت کرنے لگا ، لیکن وہ خاتون آئی اے ایس افسر اس سے بے خبر تھی ۔ اسی درمیان معلوم نہیں ایسا کیا معاملہ ہوگیا کہ رنجن پرتاپ اس خاتون آئی اے ایس افسر اور اس کے شوہر سے بدلہ لینے پر آمادہ ہوگیا اور اس نے خاتون افسر کے شوہر کو ڈرگس کی تسکری کے معاملہ میں پھنسانے کی سازش رچ ڈالی ۔

نو اکتوبر کو دہلی پولیس اور سی آئی ایس ایف کو ایک انجانے موبائل نمبر پر کال سے اس بات کی جانکاری ملی تھی کہ الیکٹرانک نکیتن میں کھڑی ایک کار میں کچھ مشتبہ سرگرمیوں کو انجام دیا گیا ہے ۔ الیکٹرانک نکیتن میں سی آئی ایس ایف کی ٹیم نے جب اس کار کی جانچ کی تو اس میں تقریبا 500 گرام چرس کے کئی پیکٹ برآمد ہوئے ۔ اس کے بعد اس معاملہ کی جانکاری دہلی پولیس کو دی گئی ۔ دہلی پولیس کی ٹیم نے جب اس معاملہ کی تفتیش شروع کی تو پتہ چلا کہ جس موبائل سے کال کی گئی تھی وہ مہرولی کا رہنے والا ہے ، لیکن وہ کافی لو پروفائل شخص ہے ۔

دہلی پولیس نے اس شخص سے پوچھ گچھ کی ۔ اس نے دہلی پولیس کو بتایا کہ دو شخص آئے تھے ۔ انہوں نے اس سے موبائل مانگ کر فون کیا تھا ۔ دہلی پولیس نے پھر سی سی ٹی وی کیمرہ کی جانچ کی تو چونکانے والی بات سامنے آئی ۔ سی سی ٹی وی کیمرے کے فوٹیج کی جب جانچ کی گئی تو پتہ چلا کہ اس میں پردہ لگی ایک کار نظر آرہی ہے اور اس کے شیشے پر وزارت خارجہ کا اسٹیکر لگا ہوا ہے ۔

بعد ازاں دہلی پولیس کڑی سے کڑی جوڑتے ہوئے کمانڈینٹ رنجن پرتاپ سنگھ تک پہنچ گئی ۔ رنجن پرتاپ کا کا دوست نیرج چوہان بھی اس کی اس معاملہ میں مدد کررہا تھا ۔ دہلی پولیس نے رنجن پرتاپ کے ساتھ اس کے دوست نیرج چوہان کو بھی گرفتار کرلیا ہے ۔ نیرج چوہان پیشہ سے وکیل ہے ۔ دہلی پولیس کی ٹیم نے دونوں گرفتار ملزمین کو ساکیت عدالت میں پیش کیا اور ریمانڈ پر لے لیا ۔

Loading...