شادی کا جھانسہ دے کر کرتا رہا جنسی استحصال ، پھر بچی پیدا ہونے پر کیا یہ گھنونا کام

متاثرہ کا الزام ہے کہ ملزم نے شادی کا جھانسہ دے کر اس کا جنسی استحصال کیا ، جس سے وہ حاملہ ہوگئی اور اس نے ایک بچی کو جنم دیا ہے ۔

Oct 18, 2019 07:11 PM IST | Updated on: Oct 18, 2019 07:11 PM IST
شادی کا جھانسہ دے کر کرتا رہا جنسی استحصال ، پھر بچی پیدا ہونے پر کیا یہ گھنونا کام

علامتی تصویر

راجستھان کے الور ضلع میں ایک لڑکی کو شادی کا جھانسہ دے کر آبروریزی کرنے کا معاملہ سامنے آیا ہے ۔ نیم رانا تھانہ حلقہ کے تحت جاپانی زون حلقہ میں ایک ہاوسنگ سوسائٹی کے فلیٹ میں رہنے والی لڑکی نے اپنی آبروریزی کی شکایت تھانہ میں درج کرائی ہے ۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق آبروریزی متاثرہ چھتیس گڑھ کی رہنے والی ہے اور الور میں رہ کر نوکری کرتی ہے۔

متاثرہ کے مطابق ملزم نوجوان اس کے ساتھ اسی کمپنی میں کام کرتا ہے ۔ متاثرہ کا الزام ہے کہ ملزم نے شادی کا جھانسہ دے کر اس کا جنسی استحصال کیا ، جس سے وہ حاملہ ہوگئی اور اس نے ایک بچی کو جنم دیا ہے ۔ ملزم نے اب متاثرہ سے شادی کرنے سے انکار کردیا ہے ۔ ساتھ ہی اس کو اور اس کی بیٹی کو جان سے مارنے کی دھمکی بھی دی ہے ۔ ملزم سے ملی اس دھمکی کے بعد متاثرہ نے نیم رانا تھانہ میں اس کے خلاف معاملہ درج کروادیا ہے ۔ پولیس نے معاملہ درج کرکے ملزم کی تلاش شروع کردی ہے ۔

Loading...

اس سلسلہ میں پولیس نے بتایا کہ نیم رانا انڈسٹریل علاقہ کی ایک کمپنی میں کام کرنے والے ملازم کے خلاف اس کی خاتون ساتھی نے شادی کا جھانسہ دے کر آبروریزی کا معاملہ درج کرایا ہے ۔ ملزم کے خلاف شادی کا جھانسہ دے کر جنسی استحصال کرنے کا معاملہ درج کرلیا گیا ہے اور معاملہ کی تفتیش میں پولیس مصروف ہوگئی ہے۔

ایس ایچ او نے بتایا کہ ملزم گڑھی چھلانی تحصیل بھادرا ضلع ہنومان گڑھ کا رہنے والا ہے ۔ ملزم متاثرہ کو تقریبا دو سالوں سے شادی کا جھانسہ دے کر اس کا جنسی استحصال کررہا تھا ۔ اس درمیان گزشتہ 21 دسمبر 2018 کو متاثرہ کو اسپتال میں بیٹی بھی پیدا ہوئی ، لیکن اس نے شادی کرنے سے انکار کردیا ۔ اب متاثرہ کی شکایت پر ملزم نوجوان کے خلاف تھانہ میں معاملہ درج کرکے آگے کی کارروائی شروع کردی گئی ہے ۔

Loading...