உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پانچ صنعتوں میں2.60لاکھ کروڑ کے غیر قانونی کاروبار سے58521کروڑ کا نقصان، 16 لاکھ لوگوں نے گنوائی ملازمت

    پانچ صنعتوں میں2.60لاکھ کروڑ کے غیر قانونی کاروبار سے58521کروڑ کا نقصان، 16 لاکھ لوگوں نے گنوائی ملازمت

    پانچ صنعتوں میں2.60لاکھ کروڑ کے غیر قانونی کاروبار سے58521کروڑ کا نقصان، 16 لاکھ لوگوں نے گنوائی ملازمت

    FMCG : رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پانچ اہم صنعتوں میں ہوئے مجموعی طور پر غیر قانونی کاروبار مین ایف ایم سی جی صنعت کی حصہ داری 75 فیصدی تھی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai, India
    • Share this:
      FMCG : روزمرہ استعمال کی اشیاء (FMCG)، تمباکو کی مصنوعات، موبائل فون اور شراب سمیت پانچ بنیادی صنعتوں میں غیر قانونی کاروبار کی وجہ سے 2019-20 میں ٹیکس کے طور پر سرکاری خزانے کو 58,521 کروڑ روپے کا نقصان پہنچاہے۔ صنعتی ادارہ FICCI نے جمعرات کو ایک رپورٹ میں کہا کہ ان صنعتوں میں غیر قانونی کاروبار کا حجم 2019-20 میں 2.60 لاکھ کروڑ سے کچھ زیادہ تھا۔

      رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پانچ اہم صنعتوں میں ہوئے مجموعی طور پر غیر قانونی کاروبار مین ایف ایم سی جی صنعت کی حصہ داری 75 فیصدی تھی۔ حکومت کو ہونے والے مجموعی نقصان میں دو سب سے زیادہ ریگولیٹیڈ اور ہائی ٹیکس والے تمباکو پروڈکٹس اور شراب ہیں۔ حکومت کو ہوئے مجموعی ٹیکس نقصان میں ان دونوں کی قریب 49 فیصدی حصہ داری ہے۔

      اس صنعت سے حکومت کو ہوا سب سے زیادہ نقصان
      ان پانچ شعبوں میں غیر قانونی تجارت کی وجہ سے ، حکومت نے ایف ایم جی سی کھانے کی اشیاء میں 17،074 کروڑ کے ٹیکس کا نقصان ہوا۔ شراب کی صنعت نے 15،262 کروڑ، تمباکو کی صنعت 13،331 کروڑ اور ایف ایم سی جی گھریلو اور نجی استعمال کی صنعت کو 9،995 کروڑ کا نقصان ہوا۔ موبائل فون انڈسٹری میں 2،859 کروڑ روپے کے ٹیکس کا نقصان ہوا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      اخراجات کوکم کرنےکامنصوبہ، اسپائس جیٹ کے 80 پائلٹس کو بغیر تنخواہ کے چھٹی پر بھیجاگیا!

      یہ بھی پڑھیں:
      Credit Card کی کیسے ہوئی شروعات، اس آئیڈیا پر آخر کیوں ہنستے تھے لوگ!

      تقریباً 16 لاکھ لوگوں کو گنوانی پڑی ملازمت
      فکی نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ پانچ اہم صنعتوں میں غیرقانونی کاروبار کی وجہ سے 2019-20 کے دوران قریب 16 لاکھ لوگوں کو اپنی نوکری گنوانی پڑی۔ اس دوران ایف ایم سی جی اجناس میں سب سے زیادہ 7.94 لاکھ نوکریاں گئیں۔ اس کے بعد تمباکو انڈسٹری میں 3.7 لاکھ، ایف ایم سی جی گھریلو و نجی استعمال کی انڈسٹری میں 2.98 لاکھ اور شراب انڈسٹری میں 97000 نوکریاں گئیں۔ اس کے علاوہ موبائل فون صنعت میں 35 ہزار لوگوں کی ملازمت چلی گئی۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: