ہوم » نیوز » عالمی منظر

نوکری کی گارنٹی مانگنے پر اس ایئر لائن نے 103  ہندستانی ایئر ہوسٹس کو نوکری سے نکالا

جرمنی طیارہ سروس لفتھانسا (Lufthansa) نے ہندستان میں رکھے گئے 103 ایئر ہوسٹس (Flight Attendants) کو نوکری کی گارنٹی مانگنے پرنوکری سے نکال دیا ہے۔

  • Share this:
نوکری کی گارنٹی مانگنے پر اس ایئر لائن نے 103  ہندستانی ایئر ہوسٹس کو نوکری سے نکالا
جرمنی طیارہ سروس لفتھانسا (Lufthansa) نے ہندستان میں رکھے گئے 103 ایئر ہوسٹس (Flight Attendants) کو نوکری کی گارنٹی مانگنے پرنوکری سے نکال دیا ہے۔

جرمنی طیارہ سروس لفتھانسا (Lufthansa) نے ہندستان میں رکھے گئے 103 ایئر ہوسٹس (Flight Attendants) کو نوکری کی گارنٹی مانگنے پرنوکری سے نکال دیا ہے۔ ذرائع کے مطابق کمپنی نے انہیں دو سال تک بغیر تنخواہ کے چھٹی (Leave Without Pay) پر کا متبادل دیا تھا۔


کمپنی ایئر ہوسٹس کی سروس میں توسیع نہیں کرسکتی ہے۔

ذرائع کے مطابق یہ ملازم ایئر لائن کے ساتھ ایک طے شدہ معاہدہ پر کام کر رہے تھے اور ان میں سے کچھ 15 سال سے زیادہ عرصے سے اس کمپنی کے ساتھ تھے۔ لفتھانسا (Lufthansa) کے ترجمان نے بتایا کہ کورونا وائرس وبا کے شدید مالی اثرات کی وجہ سے ایئر لائن کی تنظیم نو (Reorganization) کے علاوہ اور کوئی چارہ نہیں ہے۔ کمپنی دہلی میں قائم ان ایئر ہوسٹس کی سروس میں توسیع نہیں کرسکتی ہے جو مقررہ مدت کے معاہدے پر ہیں۔

حالانکہ ترجمان نے یہ نہیں بتایا کہ کتنے ملازمین کو کام سے نکالا گیا ہے۔ ترجمان کے مطابق کئی سارے ملازمین کی خدمات پر کوئی اثر نہیں پڑا ہے کیونکہ کمپنی ان کے ساتھ الگ۔ا؛گ سمجھوت کر پانے میں کامیاب رہی ہے۔

بیان میں کہا گیا، لفتھانسا کو یہ تصدیق کرتے ہوئے دکھ ہورہا ہے کہ وہ دہلی میں واقع ان ایئر ہوسٹس کی خدمات میں توسیع نہیں دے رہی ہے جو طے شدہ مدت کیلئے نوکری پر رکھے گئے تھے۔ کورونا وائرس وبا کے شدید مالی اثر نے لفتھانسا کے سامنے ایئر لائن کے (Reorganization) کے علاوہ کوئی آپشن نہیں چھوڑا ہے۔ ان طریقوں سے ہندستان جیسے اہم بین الاقوامی مارکیٹ کے ساتھ۔ساتھ جرمنی اور یوروپ میں بھی ملازمین سے متعلق کئے گئے طریقے شامل ہیں۔

طیاروں کی تعداد میں کٹوتی۔۔۔
کمپنی نے کہا کہ اس نے موجودہ صورتحال کو دیکھتے ہوئے 2025 تک کی طویل مدتی منصوبوں میں ہوائی جہاز کی تعداد میں 150 کی کمی کرنی ہوگی۔ اس سے کیبن کے عملے کے اہلکاروں کی تعداد بھی متاثر ہوگی۔ اس سے کیبن کے عملے کے اہلکاروں کی تعداد بھی متاثر ہوگی۔ اس سب کے علاوہ مختلف ممالک کی حکومتوں کی جانب سے بین الاقوامی سفر پر عائد پابندیوں کی وجہ سے کیبن عملے کے ملازمین کے پاس خاص کام نہیں بچا ہے۔
Published by: Sana Naeem
First published: Feb 17, 2021 12:49 PM IST