உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Amul milk price hike: امول دودھ کی بڑھ گئیں قیمتیں، آج سے 2 روپے فی لیٹر مہنگا ہوگا فروخت

    امول دودھ کی قیمتوں میں ہوا پھر اضافہ۔

    امول دودھ کی قیمتوں میں ہوا پھر اضافہ۔

    Amul milk price hike: اگر یونین کی بات مانیں تو وہ صارفین سے ملنے والے ہر ایک روپے میں سے تقریباً 80 پیسے دودھ تیار کرنے والوں میں تقسیم کرتی ہے۔ اس طرح اب قیمتوں میں اضافے سے مویشی کاشتکاروں کو زیادہ دودھ پیدا کرنے کی ترغیب دینے میں مدد ملے گی۔

    • Share this:
      گاندھی نگر: امول نے ملک بھر کی مارکیٹ میں دودھ کی قیمتوں میں 2 روپے فی لیٹر اضافہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اب منگل یکم مارچ سے احمد آباد اور سوراشٹرا (گجرات) کے بازاروں میں امول گولڈ دودھ کی قیمت 30 روپے فی 500 ملی لیٹر ہو گی۔ اس کے ساتھ امول تازہ کے ہر 500 ملی لیٹر دودھ پر 24 روپے اور امول شکتی دودھ کے ہر 500 ملی لیٹر پر 27 روپے ادا کرنے ہوں گے۔

      گجرات کوآپریٹو دودھ مارکیٹنگ فیڈریشن (GCMMF) نے ایک سال مکمل ہونے سے قبل دودھ کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا ہے۔ اس سے قبل جولائی 2021 میں دودھ کی قیمتوں میں اضافہ کیا گیا تھا۔ قیمتوں میں یہ اضافہ امول دودھ کے تمام برانڈز پر لاگو ہوگا، بشمول گولڈ، تازا، شکتی، ٹی اسپیشل، نیز گائے اور بھینس کا دودھ وغیرہ۔ تقریباً 7 ماہ 27 دن کے وقفے کے بعد قیمتوں میں اضافہ کیا جا رہا ہے۔ کمپنی نے کہا کہ قیمتوں میں اضافے کی وجہ پیداواری لاگت میں اضافہ ہے۔


      GCMMF کے مطابق، امول نے پچھلے 2 سالوں میں اپنے تازہ دودھ کے زمرے کی قیمتوں میں صرف 4فیصد سالانہ اضافہ کیا ہے۔ قیمتوں میں یہ اضافہ پیکیجنگ، لاجسٹکس، جانوروں کے کھانے کی لاگت میں اضافے کی وجہ سے کیا گیا ہے، اس طرح دودھ کی ہینڈلنگ اور پیداوار کی مجموعی لاگت میں اضافہ ہوتا ہے۔

      اگر یونین کی بات مانیں تو وہ صارفین سے ملنے والے ہر ایک روپے میں سے تقریباً 80 پیسے دودھ تیار کرنے والوں میں تقسیم کرتی ہے۔ اس طرح اب قیمتوں میں اضافے سے مویشی کاشتکاروں کو زیادہ دودھ پیدا کرنے کی ترغیب دینے میں مدد ملے گی۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: