உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    OMG! بغیر مکمل ٹریننگ کے ہی طیارہ اڑا رہے تھے SpiceJet کے 90 پائلٹ، DGCA کی کارروائی، ہزاروں مسافروں کی جان خطرے۔۔۔

    SpiceJet:  ہزاروں مسافروں کی زندگیاں خطرے میں ڈالنے والی لاپرواہی کا انکشاف ہوا ہے۔

    SpiceJet: ہزاروں مسافروں کی زندگیاں خطرے میں ڈالنے والی لاپرواہی کا انکشاف ہوا ہے۔

    ڈی جی سی اے کے سربراہ ارون کمار (DGCA chief Arun Kumar) نے بتایا کہ اسپائس جیٹ کے 90 پائلٹ Pilot مکمل ٹریننگ ( without full training) کے بغیر بوئنگ 737 میکس طیارہ اڑا (flying Boeing 737 MAX aircraft) رہے تھے۔ معاملہ پکڑ میں آتے ہی ان تمام پائلٹس پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ اب وہ مکمل تربیت لینے کے بعد ہی اس طیارے کو اڑا سکیں گے۔

    • Share this:
      ڈائریکٹوریٹ جنرل آف سول ایوی ایشن (DGCA) کی تحقیقات میں ایئرلائنز Airlines کمپنیوں کی جانب سے ہزاروں مسافروں کی زندگیاں خطرے میں ڈالنے والی لاپرواہی کا انکشاف ہوا ہے۔ تحقیقات میں پتہ چلا ہے کہ ایئر لائن اسپائس جیٹ (SpiceJet) کے پائلٹ مناسب تربیت کے بغیر طیارے کو اڑارہے تھے۔ ڈی جی سی اے کے سربراہ ارون کمار (DGCA chief Arun Kumar) نے بتایا کہ اسپائس جیٹ کے 90 پائلٹ Pilot مکمل ٹریننگ ( without full training) کے بغیر بوئنگ 737 میکس طیارہ اڑا (flying Boeing 737 MAX aircraft) رہے تھے۔ معاملہ پکڑ میں آتے ہی ان تمام پائلٹس پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ اب وہ مکمل تربیت لینے کے بعد ہی اس طیارے کو اڑا سکیں گے۔

      انہوں نے کہا کہ ڈی جی سی اے ان قصورواروں کے خلاف بھی سخت کارروائی کرے گا جو اس غفلت میں ملوث ہیں۔ پائلٹس کو بھی تربیت پر واپس بھیج دیا گیا ہے۔ اب وہ مکمل تربیت لینے کے بعد ہی کام پر واپس آسکیں گے۔

      ڈی جی سی اے کر رہا ہے پائلٹس کی نگرانی
      ڈی جی سی اے نے اس طیارے کو اڑانے کی اجازت اس شرط پر دی تھی کہ تمام ایئر لائنز اپنے پائلٹوں کو مکمل تربیت training کے بعد ہی اس کے کاک پٹ cockpit میں بھیجیں گی۔ اسپائس جیٹ کے ترجمان نے بدھ کو اس بات کی بھی تصدیق کی کہ اس کے 90 پائلٹس کو مکمل تربیت نہ ہونے کی وجہ سے ہوائی جہاز اڑانے سے روک دیا گیا ہے۔ کمپنی کے پاس کل 650 پائلٹ ہیں، جو بوئنگ کے اس طیارے کو اڑاتے ہیں۔

      ضرور پڑھیں: ایک ہی Savings Account رکھنا نہیں ہے سمجھداری، کہیں آپ بھی تو نہیں کر رہے یہ بڑی غلطی


      اس طیارے پر بھارت میں پابندی عائد کر دی گئی تھی۔

      امریکی طیارہ ساز کمپنی بوئنگ (aircraft of American aircraft manufacturer Boeing) کے اس طیارے پر بھارت میں پابندی لگا دی گئی تھی۔ حالانکہ سافٹ ویئر اپ ڈیٹ ہونے کے بعد گزشتہ اگست میں دوبارہ اجازت دے دی گئی تھی۔ اس طیارے کو 13 مارچ 2019 کو ہندستان میں آنے کی اجازت ملی تھی اور اس کے تین دن بعد ایتھوپیا کی ایئرلائن کا طیارہ حادثے کا شکار ہو گیا تھا۔ اس میں چار ہندوستانیوں سمیت 157 مسافروں کی موت ہوگئی تھی۔ اس کے بعد بھارت میں اس کی پروازوں پر پابندی لگا دی گئی تھی۔

      یہ بھی پڑھیں: OMG! کار چلاتے ہوئے سو گیا ڈرائیور، فٹ پاتھ پر چڑھادی گاڑی، CCTV فوٹیج ہوا وائرل

      ترجمان نے کہا کہ ڈی جی سی اے ہمارے تمام پائلٹس کی سخت نگرانی کرتا ہے اور اس عمل میں اس نے 90 پائلٹس کی تربیت میں کمی دیکھی جس کے بعد ان پر پابندی لگا دی گئی۔ یہ پائلٹ دوبارہ ٹریننگ لیں گے اور مکمل تربیت حاصل کرنے کے بعد طیارے کے کاک پٹ میں آئیں گے۔ ہمارے باقی 540 پائلٹ اس طیارے کو اڑانے کی پوری صلاحیت رکھتے ہیں۔

       
      Published by:Sana Naeem
      First published: