உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Budget 2022: کرپٹو کرنسی کی آمدنی پر دینا ہوگا 30 فیصد ٹیکس : وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن

    Union Budget 2022: ڈیجیٹل کرنسی کے کاروبار سے متعلق تذبذب کی صورتحال کو واضح کرتے ہوئے وزیر خزانہ نرملا سیتارمن (Nirmala Sitharaman Live Speech in Urdu)  نے اسکیم فار ٹیکسیشن آن ورچوئل ایسٹس کا اعلان کیا ۔

    Union Budget 2022: ڈیجیٹل کرنسی کے کاروبار سے متعلق تذبذب کی صورتحال کو واضح کرتے ہوئے وزیر خزانہ نرملا سیتارمن (Nirmala Sitharaman Live Speech in Urdu) نے اسکیم فار ٹیکسیشن آن ورچوئل ایسٹس کا اعلان کیا ۔

    Union Budget 2022: ڈیجیٹل کرنسی کے کاروبار سے متعلق تذبذب کی صورتحال کو واضح کرتے ہوئے وزیر خزانہ نرملا سیتارمن (Nirmala Sitharaman Live Speech in Urdu) نے اسکیم فار ٹیکسیشن آن ورچوئل ایسٹس کا اعلان کیا ۔

    • Share this:
      Union Budget 2022: ڈیجیٹل کرنسی کے کاروبار سے متعلق تذبذب کی صورتحال کو واضح کرتے ہوئے وزیر خزانہ نرملا سیتارمن (Nirmala Sitharaman Live Speech in Urdu)  نے اسکیم فار ٹیکسیشن آن ورچوئل ایسٹس کا اعلان کیا ۔ ورچوئل ایسیٹس پر ٹیکس کا اعلان کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کسی بھی قسم کے ورچوئل ڈیجیٹل ایسیٹ سے ہونے والی آمدنی پر 30 فیصد ٹیکس عائد ہوگا ۔ انہوں نے ورچوئل ڈیجیٹل ایسیٹ کے لین دین پر 1 فیصد کی شرح سے ٹی ڈی ایس کاٹنے کی بھی بات کہی ۔

      وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن نے منگل کو لوک سبھا میں مالی سال 2022-23 کا مرکزی بجٹ پیش کیا ۔ اس دوران کئی اہم اعلانات کئے گئے ۔ حالانکہ وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن نے انکم ٹیکس سلیب میں کسی تبدیلی کا اعلان نہیں کیا ۔ بجٹ میں کہا گیا ہے کہ ریزرو بینک آف انڈیا (RBI) ڈیجیٹل کرنسی جاری کرے گا ۔ یہ کرنسی بلاک چین ٹیکنالوجی پر مبنی ہوگی ۔

      وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن نے کہا کہ کسی بھی قسم کے ورچوئل ڈیجیٹل ایسیٹ کی منتقلی یا فروخت پر 30 فیصد کی شرح سے ٹیکس لگے گا ۔

      ورچوئل ڈیجیٹل اثاثہ کی منتقلی سے ہونے والی آمدنی پر 30 فیصد ٹیکس ادا کرنا ہوگا ۔

      ورچوئل ڈیجیٹل اثاثہ بطور تحفہ وصول کرنے والوں پر بھی ٹیکس عائد کیا جائے گا ۔

      کرپٹو کرنسی کی ریڑھ کی ہڈی ہے بلاک چین ٹیکنالوجی

      بلاک چین ٹیکنالوجی کو کرپٹو کرنسی کی ریڑھ کی ہڈی کہا جاتا ہے۔ حالانکہ بلاک چین کا استعمال صرف مقبول ترین کریپٹو کرنسی بٹ کوائن میں ہی نیں، بلکہ بہت سے دوسرے شعبوں میں بھی ہو سکتا ہے اور ہوتا ہے۔ یہ ایک سیکور ، محفوظ اور ڈی سینٹرلائزڈ ٹیکنالوجی ہے ، جس کو ہیک کرنا یا چھیڑ چھاڑ کرنا تقریباً ناممکن ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: