உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سستا ہوسکتا ہے ہوائی سفر! آج سے ہٹ جائے گی ٹکٹوں کے کرائے پر لگی 27 ماہ پرانی حد

    تقریباً 27 مہینوں کے بعد ہوائی کرایہ پر سے اس کیپ کو ہٹایا جا رہا ہے۔ اس سے تہوار کے موسم میں سفر کرنے والوں کو کرایوں میں راحت ملنے کی امید ہے۔ حکومت نے کرایہ کی بالائی اور نچلی upper and lower limits دونوں حدیں مقرر کی تھیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      نئی دہلی. کووڈ-19 کی پہلی لہر کے بعد 31 اگست سے ہوائی کرایوں پر لگائی گئی حد کو ہٹا دیا جائے گا۔ تقریباً 27 مہینوں کے بعد ہوائی کرایہ پر سے اس کیپ کو ہٹایا جا رہا ہے۔ اس سے تہوار کے موسم میں سفر کرنے والوں کو کرایوں میں راحت ملنے کی امید ہے۔ حکومت نے کرایہ کی بالائی اور نچلی upper and lower limits دونوں حدیں مقرر کی تھیں۔ جس کی وجہ سے ایئر لائنز کے لیے کرایہ مقررہ حد میں رکھنا مجبوری بن گیا تھا۔ تاہم اب ایئر لائنز اپنی مرضی کے مطابق کرایہ بڑھا یا کم کر سکیں گی۔

      تہوار کے موسم میں بہت سی ایئر لائنز airlines آفرز پیش کرتی ہیں جس میں کرایہ کافی حد تک کم کر دیا جاتا ہے۔ قیمتیں طے کرنے کی صورت میں کمپنیاں ایسا نہیں کر پاتی ہیں لیکن اب ایک بار پھر ایئر لائنز صارفین کو خوش کرنے کے لیے سستے ٹکٹ دے سکیں گی۔ ایک حکم میں شہری ہوا بازی کی وزارت نے کہا کہ گھریلو پروازوں کی موجودہ صورتحال اور مسافروں میں ہوائی سفر کی بڑھتی ہوئی مانگ کے جائزہ کے پیش نظر، 31 اگست 2022 سے فیئر بینڈ کو ہٹانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

      Swiggy, Zomato جیسے ایپ سے آن لائن کھانا منگانا 60 فیصد تک مہنگا؟ سروے سے بڑا انکشاف


      آپ پر کیا ہوگا اثر
      31 اگست سے ایئر لائنز کمپنیاں گھریلو پروازوں domestic flights کے کرائے اپنی مرضی کے مطابق طے کر سکیں گی۔ یہ بات مسافروں کے حق میں کسی بھی سمت میں پلٹ سکتی ہے۔ اگر ایئر لائنز تہوار کے موسم festive season میں ڈسکاؤنٹ discount یا آفر دے کر مسافروں کو اپنی طرف متوجہ کرنے کی کوشش کرتی ہیں تو ظاہر ہے کہ انہیں سستے داموں میں ٹکٹ ملیں گے۔ تاہم ایئر لائنز کرایوں میں مزید اضافہ بھی کر سکتی ہیں کیونکہ اس کی بالائی حد upper limit پر کوئی پابندی نہیں ہے۔

      پاکستان میں 500روپئے کلو ٹماٹر اور 400 روپے میں پیاز، کیا ہندستان سے لے گا مدد

      کب لگائی گئی تھی limit؟
      مئی 2020 میں حکومت نے گھریلو پروازوں کے کرایوں پر اوپری اور نچلی upper and lower limits حد لگائی تھی۔ یہ پہلے لاک ڈاؤن کے بعد ہوائی سفر کی بحالی کے وقت کیا گیا تھا۔ حکومت نے گزشتہ سال اکتوبر میں 100 فیصد مسافروں کی گنجائش والے طیاروں کو چلانے کی اجازت دی تھی لیکن یہ کیپ نہیں ہٹایا گیا تھا۔ واضح ہو کہ یہ کیپ چھوٹی ایئر لائنز اور مسافروں کے مفادات کے تحفظ کے لیے لگایا گیا تھا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: