உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اہم خبر: Swiggy, Zomato جیسے ایپ سے آن لائن کھانا منگانا 60 فیصد تک مہنگا؟ سروے میں ہوا انکشاف، کسٹمر کی جیب پر بڑا اثر

    Online food ordering: دراصل ایک سروے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ سوئیگی اور زوماٹو Swiggy Zomato جیسی ایپس کے ذریعے آن لائن کھانا آرڈر کرنا ریستوراں سے براہ راست خریدنے کے مقابلے میں 10 سے 60 فیصد مہنگا ہوتا ہے۔

    Online food ordering: دراصل ایک سروے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ سوئیگی اور زوماٹو Swiggy Zomato جیسی ایپس کے ذریعے آن لائن کھانا آرڈر کرنا ریستوراں سے براہ راست خریدنے کے مقابلے میں 10 سے 60 فیصد مہنگا ہوتا ہے۔

    Online food ordering: دراصل ایک سروے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ سوئیگی اور زوماٹو Swiggy Zomato جیسی ایپس کے ذریعے آن لائن کھانا آرڈر کرنا ریستوراں سے براہ راست خریدنے کے مقابلے میں 10 سے 60 فیصد مہنگا ہوتا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Mumbai
    • Share this:
    نئی دہلی. ڈیجیٹلائزیشن کے اس دور میں ہر چیز صرف ایک کلک پر دستیاب ہے۔ اس طرح کی بہت سی خدمات ہیں جن کے لیے پہلے خود پیدل چل کر بازار جانا پڑتا تھا، جو اب صرف اب گھر بیٹھے ملتے ہیں۔ گھر بیٹھے کھانا آن لائن آرڈر Online food ordering کرنے کی سہولت بھی ان میں سے ایک ہے۔ اگر آپ بھی آن لائن کھانا آرڈر کرنے کے شوقین ہیں تو یہ خبر آپ کے لیے بیحد اہم ہے۔

    دراصل ایک سروے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ سوئیگی اور زوماٹو Swiggy Zomato جیسی ایپس کے ذریعے آن لائن کھانا آرڈر کرنا ریستوراں سے براہ راست خریدنے کے مقابلے میں 10 سے 60 فیصد مہنگا ہوتا ہے۔

    یہ سروے جیفریز نامی ایک بین الاقوامی تنظیم نے کیا ہے۔ اس میں ملک بھر کے 8 شہروں میں 80 ریسٹورینٹ کو شامل کیا گیا ہے۔ جیفریز کا کہنا ہے کہ زیادہ تر restaurants میں بیٹھ کر کھانے کی قیمت اور آن لائن آرڈر کرکے کھانے کی قیمت میں بہت فرق پایا گیا ہے۔ آپ ریستوران میں 100 روپے میں جو ڈش کھا سکتے ہیں، اس کے لیے آپ کو آن لائن ایپ پر 110 سے 160 روپے خرچ کرنے پڑ سکتے ہیں۔ اس سے آپ سمجھ سکتے ہیں کہ ایک کلک پر کھانے کا آرڈر بک کروانا آپ کی جیب پر کافی مہنگا پڑتا ہے۔

    آخر کیوں ہے اتنا فرق؟
    آن لائن اور آف لائن فوڈ آرڈرز کی قیمتوں میں فرق کی تین وجوہات سامنے آئی ہیں۔ اس میں ریسٹورنٹ کی طرف سے کھانا پیک کرنے کے چارجز، اشتہارات یا پروموشن، اور ریسٹورنٹ اور پارٹنر ایپ کے لیے کمیشن شامل ہے۔ بہت سے ریستوراں بل میں الگ سے پیکنگ چارجز بھی شامل کرتے ہیں۔ یہ فیس بل کے تقریباً 4 سے 5 فیصد تک ہوتی ہے۔

    پاکستان میں 500روپئے کلو ٹماٹر اور 400 روپے میں پیاز، کیا ہندستان سے لے گا مدد

    Johnson & Johnson بند کرےگی بیبی پاؤڈر کی فروخت، دہائیوں تک رہا کمپنی کا symbolic پروڈکٹ

    ڈیلیوری چارج پڑتا ہے مہنگا ۔
    کھانے کی آن لائن آرڈرنگ کے لیے کسٹمرس سے وصول کی جانے والی اضافی رقم میں ڈلیوری چارجز بھی شامل ہیں۔ یہ بل کی کل رقم کا تقریباً 13 فیصد بنتا ہے۔اس کے علاوہ ڈیلیوری ایپ اور ریسٹورنٹ کا کمیشن بھی پہلے سے طے ہوتا ہے۔ کمیشن کی رقم سبھی ایپ میںح ایک دوسرے سے مختلف ہوتی ہے۔

    آپ کو بتاتے چلیں کہ اس سروے کے دوران جیفریز نے ملک کے مختلف شہروں میں ریستورانوں سے 120 روپے سے لے کر 2800 روپے تک کے 240 آرڈرز دیے تھے۔ اس میں 80 فیصد ریستوراں میں آن لائن اور آف لائن قیمتوں میں بڑا فرق سامنے آیا۔ اس سروے میں جیفریز نے بتایا کہ بہت سی آن لائن ایپس ہیں جو ڈسکاؤنٹ دیتی ہیں۔ عام طور پر اس میں 10 فیصد تک کی رعایت ہوتی ہے۔ لیکن آف لائن کے مقابلے یہ تقریباً 20 فیصد زیادہ مہنگا ہے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: