உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان میں 500روپئے کلو ٹماٹر اور 400 روپے میں پیاز، اب مہنگائی سے بچنے کیلئے ہندستان کے آگے پھیلائے گا ہاتھ

    لائیو منٹ کے مطابق لاہور، اسلام آباد سمیت کئی بڑے شہروں میں سبزیوں اور پھلوں کی قیمتوں میں بڑے اضافے کے بعد اب پاکستان حکومت ہندستان سے پیاز اور ٹماٹر درآمد کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔

    لائیو منٹ کے مطابق لاہور، اسلام آباد سمیت کئی بڑے شہروں میں سبزیوں اور پھلوں کی قیمتوں میں بڑے اضافے کے بعد اب پاکستان حکومت ہندستان سے پیاز اور ٹماٹر درآمد کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔

    لائیو منٹ کے مطابق لاہور، اسلام آباد سمیت کئی بڑے شہروں میں سبزیوں اور پھلوں کی قیمتوں میں بڑے اضافے کے بعد اب پاکستان حکومت ہندستان سے پیاز اور ٹماٹر درآمد کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • inter, IndiaPakistanPakistanPakistan
    • Share this:
      سری لنکا کے بعد ایک اور پڑوسی ملک پاکستان کو شدید مہنگائی کا سامنا ہے۔ پہلے پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ ہوا اور اب مہنگائی کی آگ سبزیوں جیسی اشیائے ضروریہ کو اپنی لپیٹ میں لے رہی ہے۔

      لائیو منٹ کے مطابق لاہور، اسلام آباد سمیت کئی بڑے شہروں میں سبزیوں اور پھلوں کی قیمتوں میں بڑے اضافے کے بعد اب پاکستان حکومت ہندستان سے پیاز اور ٹماٹر درآمد کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔ منڈی کے تاجروں کا کہنا ہے کہ سیلاب کی وجہ سے فصلوں کو کافی نقصان پہنچا ہے اور سپلائی کھپت کے مقابلے کم ہو رہی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ خوردہ بازار میں پھلوں اور سبزیوں کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ ہورہا ہے۔

      Afghanistan میں اچانک آئے سیلاب سے تباہی، 180 لوگوں کی موت، سیکڑوں زخمی اور لاپتہ

      لاش کے واسطے Gold کی کار! ڈیزائن دیکھ کر حیران ہوئے لوگ، دیکھ کر آپ کے بھی اڑ جائیں گے ہوش

       

      عالم یہ ہے کہ اتوار کو لاہور کی مارکیٹ میں ٹماٹر کی قیمت 500 روپے فی کلو اور پیاز 400 روپے تک پہنچ گئی تھی۔ لاہور کے ایک ہول سیل تاجر کا کہنا ہے کہ بعض جگہوں پر اس کی ہول سیل قیمتیں 100 روپے کے لگ بھگ ہیں لیکن پرچون مارکیٹ میں آتے ہی اس کی قیمت چار سے پانچ گنا بڑھ جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان، سندھ اور جنوبی پنجاب میں سیلاب کی بگڑتی ہوئی صورتحال کے باعث سبزیوں کی پیداوار بڑے پیمانے پر متاثر ہوئی ہے اور آنے والے دنوں میں اس کی قیمتوں میں مزید اضافے کا پورا امکان ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: