உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Niti Aayog: ہندوستان کے لیے سب سے بڑا چیلنج کیا ہے؟ تین دہائیوں تک کیلئے کونسی بات ہے اہم؟

    ماہرین اقتصادیات کے مطابق آنے والے دنوں میں افراط زر میں مزید اضافہ ہوسکتا ہے۔

    ماہرین اقتصادیات کے مطابق آنے والے دنوں میں افراط زر میں مزید اضافہ ہوسکتا ہے۔

    نیتی آیوگ کے سی ای او امیتابھ کانت نے کہا کہ ہم نے عالمی وبا کورونا وائرس COVID-19 کے بعد بھی ترقی کے ہے اور ویکسینیشن پر بہت اچھا کام کیا ہے، اگلے سال بھی ہم ترقی کریں گے۔

    • Share this:
      نیتی آیوگ کے سی ای او امیتابھ کانت (Niti Aayog CEO Amitabh Kant) نے منگل کو کہا کہ ہندوستان نے ویکسینیشن کے محاذ پر بہت اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔ اس کے باجود ملک کے لیے چیلنج ہے کہ اگلی تین دہائیوں میں 8 تا 9 فیصد ترقی کی جائے۔ پبلک افیئرز فورم آف انڈیا (PAFI) کے زیر اہتمام ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کانت نے مزید کہا کہ ہندوستان کی فی کس آمدنی میں اضافہ ملک میں غربت کو دور کرنے کے لیے اہم ہے۔

      نیتی آیوگ کے سی ای او امیتابھ کانت نے کہا کہ ہم نے عالمی وبا کورونا وائرس COVID-19 کے بعد بھی ترقی کے ہے اور ویکسینیشن پر بہت اچھا کام کیا ہے، اگلے سال بھی ہم ترقی کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ چیلنج (ہندوستان کے لیے) اگلی تین دہائیوں میں 8 تا 9 فیصد کی بلند ترقی کو برقرار رکھنا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      OIC کے بیان پر ہندوستان کا شدید ردعمل،کہا-’فرقہ وارانہ ایجنڈہ‘ نہ چلائیں

      کانٹ کے مطابق حکومت کا کردار عوامی پالیسی میں ہونا چاہیے اور پالیسی کو نجی شعبے کے ذریعے دولت پیدا کرنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو تعلیم، صحت اور غذائیت میں ہونا چاہیے۔ کانت کے مطابق، ہندوستانی صنعت کاروں کے لیے یہ ضروری ہے کہ وہ عالمی منڈیوں اور ویلیو چینز میں گھس جائیں۔

      یہ بھی پڑھیں:

      مسلم دانشوروں کی اپیل-مسلم بھائی بڑادل کرکے ہندوبھائیوں کوسونپ دیں Gyanvapi مسجد

      انہوں نے کہا کہ تکنیکی چھلانگ کے بغیر، ہندوستان کے لیے بلند شرح سے ترقی کرنا مشکل ہوگا۔ نیتی آیوگ کے سی ای او نے کہا کہ ہندوستان موسمی لحاظ سے برکت والا ہے اور یہ قابل تجدید توانائی کے استعمال کا ایک موقع ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: