ہوم » نیوز » معیشت

بڑا فیصلہ : مرکزی ملازمین اور پنشن یافتگان کے مہنگائی بھتہ پر جون 2021 تک روک

وزارت خزانہ کے جاری کردہ اعلان کے مطابق، کووڈ۔19سے پیدا ہوئے بحران کو دیکھتے ہوئے مرکزی ملازمین اور پنشن یافتگان کے یکم جنوری 2020سے بقایا مہنگائی بھتہ کی ادائیگی نہ کرنے کا فیصلہ کیاگیا ہے ۔

  • Share this:
بڑا فیصلہ : مرکزی ملازمین اور پنشن یافتگان کے مہنگائی بھتہ پر جون 2021 تک روک
وزارت خزانہ کے جاری کردہ اعلان کے مطابق، کووڈ۔19سے پیدا ہوئے بحران کو دیکھتے ہوئے مرکزی ملازمین اور پنشن یافتگان کے یکم جنوری 2020سے بقایا مہنگائی بھتہ کی ادائیگی نہ کرنے کا فیصلہ کیاگیا ہے ۔

نئی دہلی۔ حکومت نے کورونا وائرس سے پیدا ہوئی صورت حال کے مدنظر مرکزی ملازمین اور پنشن یافتگان کے مہنگائی بھتہ پر جون 2021تک روک لگا دی ہے اور موجودہ شرحیں جون 2021تک جاری رہیں گی۔ اس سلسلہ میں وزارت خزانہ کے جاری کردہ اعلان کے مطابق، کووڈ۔19سے پیدا ہوئے بحران کو دیکھتے ہوئے مرکزی ملازمین اور پنشن یافتگان کے یکم جنوری 2020سے بقایا مہنگائی بھتہ کی ادائیگی نہ کرنے کا فیصلہ کیاگیا ہے ۔ اسی طرح سے یکم جولائی 2020 اور یکم جنوری 2021سے مہنگائی بھتہ کی ادائیگی بھی نہیں کی جائیگی ۔


اس میں کہا گیا ہے کہ ملازمین اور پنشن یافتگان کو موجودہ شرحوں پر مہنگائی بھتہ کی ادائیگی جاری رہے گی ۔اس میں کہا گیاہے کہ یکم جنوری 2020، یکم جولائی 2020 اور یکم جنوری 2020سے لیکر 30جون تک کا کوئی بھی بقایا مہنگائی بھتہ نہیں دیا جائیگا۔


کہا جا رہا ہے کہ حکومت کا یہ فیصلہ کورونا وائرس وبا کے مدنظر لیا گیا ہے جس کی وجہ سے سرکاری خزانہ پر بری طرح اثر پڑا ہے۔ حکومت کے اس فیصلے کا اثر 54 لاکھ سرکاری ملازمین اور 65 لاکھ پنشن یافتگان پر پڑے گا۔


علامتی تصویر

مرکزی ملازمین اور پنشن یافتگان کے لئے مہنگائی بھتے میں چار فیصدی کا اضافہ روکے جانے سے حکومت ہر مہینے اوسطا ایک ہزار کروڑ روپئے بچا سکتی ہے۔ حکومت نے مہنگائی بھتہ بڑھانے کے لئے 14,595 کروڑ روپئے کی اضافی لاگت متعین کی تھی۔ کورونا وائرس کے پھیلنے کو روکنے کے لئے ملک میں جاری لاک ڈاون سے ملک کی معیشت کو کافی گہرا نقصان پہنچا ہے۔

یو این آئی، اردو کے ان پٹ کے ساتھ
First published: Apr 23, 2020 04:27 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading