உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Twitter controversy:جج نے کہا-ٹوئٹر تنازعہ میں مسک کا جواب آج عام کردیا جائے گا، دونوں وکیلوں میں نوک جھونک

    ایلن مسک (فائل فوٹو)

    ایلن مسک (فائل فوٹو)

    Twitter controversy: اپریل میں ایلون مسک نے ٹوئٹر کو 44 ارب ڈالر میں خریدنے کا اعلان کر کے پوری دنیا میں تہلکہ مچا دیا اور اس کے لیے انہوں نے نقد ادائیگی کی بات کی۔ پھر بعد میں ٹیسلا اور SpaceX کے مالک مسک خود جولائی میں پیچھے ہٹ گئے.

    • Share this:
      Twitter controversy: ایک جج نے فیصلہ دیا کہ سوشل میڈیا کمپنی کو خریدنے کے لیے 44 بلین ڈالر کے معاہدے کی حمایت کرنے کی کوشش پر ٹوئٹر کے مقدمے پر ایلون مسک کا ردعمل جمعہ کی شام تک عام کر دیا جائے گا۔ اس دوران ٹوئٹر اور مسک کے وکلاء کے درمیان ہاتھا پائی ہوئی۔

      ایلون مسک کے وکلاء اپنے جواب کا عوامی ورژن اور ڈیلاویئر کورٹ میں جوابی دعویٰ دائر کرنا چاہتے تھے۔ لیکن ٹویٹر کے وکلاء نے شکایت کی کہ انہیں مسک کی مہربند فائلنگ کا جائزہ لینے اور ممکنہ طور پر نظر ثانی کرنے کے لیے مزید وقت درکار ہے۔ بعد ازاں عدالت کے چیف جسٹس چانسلر کیتھلین سینٹ نے اسے ٹیلی کانفرنس میں پبلک کرنے کے لیے جمعہ کی شام 5 بجے تک کا وقت دیا۔

      اس پورے معاملے میں دونوں فریقوں کے وکلاء کے درمیان کافی نوک جھونک کے درمیان، ٹویٹر نے کہا کہ اس پوری دستاویز میں ضروری چیزوں کے علاوہ دیگر چیزوں کو ظاہر نہیں کیا جانا چاہئے. مسک کے وکیل ایڈورڈ مائیکلٹی نے لکھا کہ مسک کی فائلنگ میں کوئی ایسی خفیہ معلومات نہیں ہے جسے عوام کے سامنے آنے سے روکا جائے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Uber نے WhatsApp کیب، بائیک، آتو کی بکنگ شروع کی، جانئے کیسے کام کرے گا نیا فیچر

      یہ بھی پڑھیں:

      Retail inflation:پانچ مہینوں کی نچلی سطح پر پہنچ سکتی ہے خوردہ مہنگائی

      اپریل میں کیا گیا تھا اس معاہدے کا اعلان
      اپریل میں ایلون مسک نے ٹوئٹر کو 44 ارب ڈالر میں خریدنے کا اعلان کر کے پوری دنیا میں تہلکہ مچا دیا اور اس کے لیے انہوں نے نقد ادائیگی کی بات کی۔ پھر بعد میں ٹیسلا اور SpaceX کے مالک مسک خود جولائی میں پیچھے ہٹ گئے، جس کی وجہ سے ٹویٹر کی مارکیٹ قیمت کریش ہو گئی۔ مسک نے معاہدے سے دستبرداری کی وجہ ٹویٹر پر صحیح بوٹ اکاؤنٹ کی معلومات کی کمی کو بتایا۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: