உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Facebook: فیس بک ملازمین کو بوسٹر شاٹس کی اپیل، مارچ کے بعد ہوگی ملازمین کی دفتر واپسی

    کمپنی اومی کرون ویرینٹ پر گہری نظر رکھی ہوئی ہے۔

    کمپنی اومی کرون ویرینٹ پر گہری نظر رکھی ہوئی ہے۔

    فیس بک نے کہا کہ جو ملازمین دفتر سے کام کرنے کا انتخاب کرتے ہیں، ان کے لیے دوبارہ کھلنے کی تاریخ 31 جنوری 2022 کے پہلے منصوبے سے 28 مارچ 2022 تک موخر کر دی گئی ہے۔ دفتر میں واپس آنے والے تمام ملازمین کو اپنے بوسٹر ڈوسیز کا ثبوت پیش کرنا ہوگا۔

    • Share this:
      فیس بک (Facebook) کے پیرنٹ میٹا پلیٹ فارمز (Meta Platforms) نے اپنے امریکی دفتر کے دوبارہ کھلنے کی تاریخ میں تاخیر کی ہے اور دفتر میں واپس آنے والے ملازمین کے لیے بوسٹر شاٹس کو لازمی قرار دیا ہے، جو کہ اومی کرون کے بڑھتے ہی دوبارہ کھولنے کے منصوبوں کو بہتر بنانے والی کمپنیوں کی بڑھتی ہوئی فہرست میں شامل ہو رہا ہے۔

      فیس بک نے کہا کہ جو ملازمین دفتر سے کام کرنے کا انتخاب کرتے ہیں، ان کے لیے دوبارہ کھلنے کی تاریخ 31 جنوری 2022 کے پہلے منصوبے سے 28 مارچ 2022 تک موخر کر دی گئی ہے۔ دفتر میں واپس آنے والے تمام ملازمین کو اپنے بوسٹر ڈوسیز کا ثبوت پیش کرنا ہوگا، جبکہ کمپنی اومی کرون ویرینٹ پر گہری نظر رکھی ہوئی ہے۔ میٹا فی الحال اپنے دفتر آنے والے تمام امریکی ملازمین کو کورونا وائرس سے بچاؤ کے ٹیکے لگانے کی ضرورت پر زور دے رہی ہے۔

      ملازمین کے پاس 14 مارچ تک یہ فیصلہ کرنے کا وقت ہے کہ آیا دفتر واپس جانا ہے یا انھیں گھر سے ہی کام انجام دینا ہے۔ فل ٹائم کام کرنے کی درخواست کرنا ہے یا عارضی طور پر گھر سے کام کرنے کی درخواست کرنا ہے۔ ایک ترجمان نے کہا کہ جن ملازمین کو طبی وجوہات کی بنا پر ویکسین نہیں لگائی گئی ہے وہ ایسے دور دراز کے کام کی درخواست کر سکتے ہیں۔

      ترجمان نے ای میل کے ذریعے کہا کہ جو ملازمین ان رہنما خطوط پر عمل نہیں کرتے، ان کو برطرفی سمیت تادیبی اقدامات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ ظاہر ہے کہ یہ ایک آخری حربہ ہوگا۔ کارپوریٹ امریکہ نے ویکسینیشن کے مینڈیٹ کو دوگنا کر دیا ہے اور بیک ٹو آفس منصوبوں میں تاخیر کی ہے کیونکہ اومی کرون ویرینٹ پورے ملک میں انفیکشن کو ریکارڈ سطح تک لے جارہا ہے۔

      پچھلے ہفتے انویسٹمنٹ بینکنگ کمپنی سٹی گروپ (Citigroup) نے کہا کہ اس کے جن امریکی عملے کو 14 جنوری تک کورونا کے خلاف ویکسین نہیں لگائی گئی ہے، انہیں بلا معاوضہ چھٹی پر رکھا جائے گا اور مہینے کے آخر میں نوکری سے نکال دیا جائے گا۔ دسمبر میں فیس بک، انسٹاگرام اور واٹس ایپ کی پیرنٹ کمپنی نے دفتر واپسی کو موخر کرنے کا آپشن پیش کیا تھا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: