خوشخبری! سرکاری بینکوں کے ملازمین کی جلد بڑھ سکتی ہے ان ہینڈ تنخواہ

Nov 20, 2019 12:37 PM IST | Updated on: Nov 20, 2019 12:42 PM IST
خوشخبری! سرکاری بینکوں کے ملازمین کی جلد بڑھ سکتی ہے ان ہینڈ تنخواہ

فائل تصویر

نئی دہلی: سرکاری بینک کے ملازمین کیلئے یہ خبر بڑی خوشخبری ہے۔ سرکار تقریبا 8 لاکھ بینک ملازمین کو اگلے مالی سال سے تنخواہ کے علاوہ پرفارمینس۔لنکڈ انسینٹو (پی ایل آئی) دینے کا پلان کررہی ہے۔ اس سے پہلے بینکوں کے مینیجمنٹ نے ویریئیبل پے یا پرفارمینس۔لنکنڈ پے کا پرپوزل دیا تھا۔ ویریئیبل پے پرائیویٹ سیکٹر کےبینکوں کے اپلائیز کو پہلے سے ملتی ہے۔

اس ایسوسی ایشن نے دیا تھا پرپوزل

اکانامک ٹائمس میں چھپی خبر کے مطابق انڈین بینکس ایسوسی ایشن (آئی بی اے) کی تنخواہ پر بات کرنے والی کمیٹی نے گزشتہ ہفتے پی ایل آئی کا پرپوزل دیا تھا جسے اصولی طور پر قبول کرلیا گیا ہے۔ اس کمیٹی کے یونین بینک آف انڈیا کے مینیجنگ ڈائریکٹر راج کرن رائے ہیں۔ بینکوں کے اینول رزلٹ (سالانہ نتائج) کا اعلان کے بعد پی ایل آئی کو کیلکولیٹ کیا جاسکتا ہے۔ سرکاری بینکوں کے ملازمین کی تنخواہ میں اضافہ پر ہر پانچ سال بعد دوطرفہ معاہدہ کیا جاتا ہے۔ تنخواہ میں بڑھوتری کے 11 ویں سمجھوتے پر ابھی بات چیت ہورہی ہے۔ یہ سمجھوتہ 1 نومبر 2017 سے نافذ ہونا ہے۔

آل انڈیا بینک آفیسرز کنفیڈریشن (اے آئی بی او سی ) کے جنرل سیکریٹری سومیہ دتہ کا کہنا ہے کہ پرفارمینس لنکڈ پے کے مسئلے پر رخ میں تبدیلی ہوئی ہے۔ آئی بی اے نے واضح کیا ہے کہ پی ایل آئی کو تنخواہ میں شامل نہیں کیا جائے گا۔ آئی بی اے نے تنخواہ میں 12 فیصد کی پیشکش کی ہے جبکہ بینک یونینس کم سے کم 15 فیصد کی بڑھوتری پر زور دے رہی ہیں۔

Loading...

 

Loading...