உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اگلے سال یکم جولائی سے سنگل یوز پلاسٹک پر مکمل طور سے ہوگی پابندی، 2022 سے نافذ ہوں گے قواعد

    مرکزی حکومت نے یکم جولائی 2022 سے سنگل یوز پلاسٹک کے استعمال ، پیداوار اور فروخت پر مکمل پابندی (Single Use Plastic Ban), عائد کردی ہے۔

    مرکزی حکومت نے یکم جولائی 2022 سے سنگل یوز پلاسٹک کے استعمال ، پیداوار اور فروخت پر مکمل پابندی (Single Use Plastic Ban), عائد کردی ہے۔

    مرکزی حکومت نے یکم جولائی 2022 سے سنگل یوز پلاسٹک کے استعمال ، پیداوار اور فروخت پر مکمل پابندی (Single Use Plastic Ban), عائد کردی ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: وزارت ماحولیات نے جمعہ کو پلاسٹک ویسٹ مینجمنٹ رولز نافذ کیے ،جس کے تحت 2022 تک سنگل یوز پلاسٹک آئٹمز پر پابندی ہوگی۔ وزارت نے کہا کہ سنگل یوز پلاسٹک آئٹمز کی وجہ سے آلودگی تمام ممالک کے سامنے ایک اہم ماحولیاتی چیلنج بن چکی ہے اور ہندستان سنگل یوز پلاسٹک کی وجہ سے ہونے والی آلودگی کو کم کرنے کے لیے اقدامات اٹھانے کے لیے پرعزم ہے۔ مرکزی حکومت نے یکم جولائی 2022 سے سنگل یوز پلاسٹک کے استعمال ، پیداوار اور فروخت پر مکمل پابندی (Single Use Plastic Ban), عائد کردی ہے۔ مرکزی حکومت نے سنگل یوز پلاسٹک کے طور پر نشان زدہ پلاسٹک کی پیداوار ، درآمد ، اسٹوریج ، تقسیم ، فروخت اور استعمال پر پابندی کے لیے ترمیم شدہ قوانین کو مطلع notified کیا ہے۔ اس زمرے میں سنگل یوز پلاسٹک سے بنی پلیٹوں ، کپوں ، مٹھائی کے ڈبوں خانوں اور سگریٹ کے پیکٹوں پر چڑھائی جانے والی پلاسٹک کی پرت بھی شامل ہے۔

      نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ "یکم جولائی 2022 سے  سنگل یوز پلاسٹک  کی پیداوار ، درآمد ، اسٹوریج ، تقسیم ، فروخت اور استعمال پر پابندی ہوگی جس میں پولی سٹیرین اور لچکدار پولی اسٹیرین بھی شامل ہے۔" پلاسٹک کی چھڑیوں ، غباروں  کے پلاسٹککے ڈنڈے، پلاسٹک کے جھنڈوں ، لالی پاپ اور آئس کریم کی ڈنڈیا، سجاوٹ میں استعمال ہونے والی پولی اسٹرن ، تھرماکول ، پلیٹیں ، کپ ، شیشے ، کٹلری جیسے کانٹے ، چاقو ، چمچ ، چاقو ، مٹھائی کے ڈبوں میں استعمال ہونے والا پلاسٹک ، 100 مائکرون سے کم موٹائی والے پلاسٹک یا پی وی سی بینرز وغیرہ پر پابندی ہوگی۔

      بڑھائی جائے گی سامان لے جانے والے پلاسٹک کی موٹائی
      12 اگست کو جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق ، سامان لے جانے کے لیے استعمال ہونے والے پلاسٹک کے تھیلوں کی موٹائی 30 مائیکرون سے بڑھا کر 75 مائیکرون ہو جائے گی اور 30 ستمبر 2021 سے اور 120 مائیکرن 31 دسمبر 2022 سے ہوگا۔


      وزارت ماحولیات  نے کہا کہ ریاستی اور مرکزی علاقائی حکومتوں اور متعلقہ مرکزی وزارتوں، محکموں سے بھی درخواست کی جاتی ہے کہ وہ سنگل یوز پلاسٹک کے خاتمے کے لیے ایک جامع ایکشن پلان تیار کریں اور پلاسٹک ویسٹ مینجمنٹ رولز ، 2016 کو مؤثر اور وقت کے ساتھ نافذ کریں۔

       
      Published by:Sana Naeem
      First published: