உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Drone: نئے ڈرون کے درآمد پر پابندی! ہندوستان میں آپ کو کیسے کرے گا متاثر؟ جانیے تفصیلات

    آپ ڈرون بنانے کے لیے استعمال ہونے والے پرزوں کو آزادانہ طور پر درآمد کر سکتے ہیں۔

    آپ ڈرون بنانے کے لیے استعمال ہونے والے پرزوں کو آزادانہ طور پر درآمد کر سکتے ہیں۔

    وزارت تجارت اور صنعت (Ministry of Commerce and Industry) کی طرف سے اس ہفتے جاری کردہ حکم نامے میں واضح طور پر کہا گیا ہے کہ ڈرون کی درآمد پر پابندی فوری طور پر نافذ العمل ہے۔

    • Share this:
      ڈرون (Drone) کے شوقین افراد اور مینوفیکچررز کو بدھ کے روز کچھ مایوس کن خبریں موصول ہوئیں جب ہندوستانی حکومت نے باضابطہ طور پر دوسرے ممالک سے ڈرون پر پابندی کا حکم جاری کیا۔ یہ نئی پیش رفت ڈرون کی مقامی تیاری کی حوصلہ افزائی کرتی نظر آتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ دکاندار آسانی سے (اور آزادانہ طور پر) ایسے اجزا درآمد کر سکتے ہیں جو ڈرون بنانے کے لیے استعمال ہوتے ہیں۔

      اس حکم نامے میں واضح طور پر درآمد کرنے کے لیے مستثنیات کی فہرست دی گئی ہے۔ کون سا محکمہ غیر ملکی برانڈز کے تیار کردہ ڈرون کا استعمال جاری رکھ سکتا ہے؟ اس پر بھی بحث کی گئی ہے۔ ڈرون کی درآمد پر پابندی کے اس نئے فیصلے کے بارے میں جاننے کے لیے آپ کو درکار سب کچھ یہاں ہے۔

      1. پابندی کب سے نافذ ہو رہی ہے؟

      وزارت تجارت اور صنعت (Ministry of Commerce and Industry) کی طرف سے اس ہفتے جاری کردہ حکم نامے میں واضح طور پر کہا گیا ہے کہ ڈرون کی درآمد پر پابندی فوری طور پر نافذ العمل ہے۔

      2. اب ڈرون درآمد کرنے کی اجازت ہے - آپ کے لیے اس کا کیا مطلب ہے؟

      آسان الفاظ میں اس کا مطلب یہ ہے کہ کوئی بھی شخص ڈرون میں سوار ہو اور بغیر پائلٹ کے فضائی گاڑی (UAV) درآمد کرنے کی کوشش کر رہا ہو۔ خریدار دوسروں کے درمیان DJI، Parrot اور Yuneec جیسے عالمی برانڈز کو ترجیح دیتے ہیں۔ وہ یہاں سے دوسرے ممالک سے ہندوستان میں درآمد کیے گئے ڈرون نہیں لے سکتے۔ اس معاملے میں ڈرون کی کیٹیگری اب لاگو نہیں ہوگی۔ اس کے علاوہ ڈرون کسی بھی شکل میں یعنی مکمل طور پر تعمیر شدہ یونٹ (CBU)، مکمل طور پر دستک شدہ (CKD) یا یہاں تک کہ سیمی ناکڈ ڈاؤن (SKD) کو درآمد نہیں کیا جا سکتا۔

      3. ڈرون کی درآمد پر پابندی کے حکم سے کس کو استثنیٰ حاصل ہے؟

      وزارت تجارت اور صنعت کے حکم نامے میں چند اداروں کا حوالہ دیا گیا ہے جنہیں اس اپ ڈیٹ کے بعد بھی ڈرون درآمد کرنے کی اجازت ہے۔ اس فہرست میں ڈرونز شامل ہیں جو خاص طور پر تحقیق و ترقی، دفاع اور سلامتی کے مقاصد کے لیے استعمال ہوتے ہیں۔ لہذا ہندوستان میں ڈرون درآمد کرنے کی منظوری حاصل کرنے کے لیے آپ کو ان میں سے کسی ایک سرکاری ادارے یا حکومت کی طرف سے تسلیم شدہ کسی بھی R&D باڈی کا حصہ بننے کی ضرورت ہے۔

      4. نئے ڈرون امپورٹ آرڈر کے مطابق کس چیز کی اجازت ہے؟

      ڈرون کی درآمد پر زیادہ تر اداروں کے لیے پابندی ہے، جب تک کہ آپ کسی سرکاری ادارے یا ادارے کا حصہ نہ ہوں۔ تاہم آرڈر میں واضح طور پر کہا گیا ہے کہ آپ ڈرون بنانے کے لیے استعمال ہونے والے پرزوں کو آزادانہ طور پر درآمد کر سکتے ہیں۔

      لہذا ڈرون کے حصے میں داخل ہونے والا کوئی بھی برانڈ حکومت سے مناسب منظوری حاصل کرنے کے بعد پرزے درآمد کر سکتا ہے لیکن اس عمل کے بغیر کسی رکاوٹ کے ہونے کا امکان ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: