ہوم » نیوز » معیشت

ہندوستان کے پاس چوتھے صنعتی انقلاب کی قیادت کرنے کا ایک بہت بڑا موقع : مکیش امبانی

ریلائنس انڈسٹریز کے چیئرمین مکیش امبانی نے ڈیجیٹل ٹرانسفارمیشن ورلڈ سیریز 2020 سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مجھے پورا یقین ہے کہ ہندوستان چوتھے صنعتی انقلاب کی قیادت کرے گا ۔

  • Share this:
ہندوستان کے پاس چوتھے صنعتی انقلاب کی قیادت کرنے کا ایک بہت بڑا موقع : مکیش امبانی
ہندوستان ڈیٹا انقلاب کی قیادت کرنے کیلئے تیار ، ڈیجیٹل ٹرانفارمیشن ورلڈ سیریز 2020 میں مکیش امبانی کا خطاب

ریلائنس انڈسٹریز کے چیئرمین مکیش امبانی نے ڈیجیٹل ٹرانسفارمیشن ورلڈ سیریز 2020 سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مجھے پورا یقین ہے کہ ہندوستان چوتھے صنعتی انقلاب کی قیادت کرے گا ۔ ڈیجیٹل کنکٹیویٹی ، کلاوڈ کمپیوٹنگ ، انٹرنیٹ آف تھنگس ، اسمارٹ ڈیوائس ، آرٹیفیشیل انٹلیجنس اور روبوٹکس جیسی ڈیجیٹل تکنیکیں چوتھے صنعتی انقلاب کی ریڑھ کی ہڈی ثابت ہوں گی ۔


جیو کی تعریف کرتے ہوئے مکیش امبانی نے کہا کہ جیو آنے سے پہلے ہندوستان ٹوجی میں اٹکا ہوا تھا ۔ جیو کے ذریعہ سے ملک کو پہلی مرتبہ آئی پی بیسڈ نیٹ ورک کنیکٹیویٹی ملی ، جہاں ٹوجی نیٹ ورک لگانے میں دیگر کمپنیوں نے 25 سال لگا دئے ، وہیں جیو نے صرف تین سالوں میں ہندوستان میں فورجی نیٹ ورک کھڑا کردیا ۔


انہوں نے کہا کہ ہندوستانی ٹیلی مواصلات صنعت کو اپنا ٹو جی نیٹ ورک بنانے میں 25 سال لگ گئے ، لیکن جیو نے صرف تین سالوں میں ہی اپنا فورجی نیٹ ورک بنالیا ۔ ڈیٹا سروس کو پورے ہندوستان میں پہنچانے کیلئے ہم نے دنیا کے سب سے کم ڈیٹا ٹیرف پلان لانچ کئے اور جیو صارفین کیلئے پوری طرح سے مفت میں وائس سروس یعنی کال پر بات کرنے کی سہولت فراہم کرائی ۔


جیو سے پہلے نصف ارب سے زیادہ ہندوستانیوں کو ڈیجیٹل آندولن کا فائدہ نہیں مل رہا تھا ۔ کیونکہ وہ اسمارٹ فون نہیں خرید سکتے تھے اور انہیں ٹوجی فیچر فون کا استعمال کرنا پڑ رہا تھا ۔ ہمارے نوجوان اور باصلاحیت جیو انجینئروں نے دنیا کا الٹرا کفایتی ڈیوائس جیو فون ڈیزائن کیا ۔ اس فون کا ایک سال سے بھی کم عرصہ میں 100 ملین سے زیادہ ہندوستانیوں نے استعمال کیا ۔

جیو صارفین کو کئی موبائل ایپلی کیشنز دیتا ہے ، جس میں لائیو ٹی وی ، سنیما ، گانا ، نیوز ، میگزینس اور دیگر ایپلی کیپشنز جیسے مالی ادائیگی جیسے ایپ شامل ہیں ۔ یہی وجہ ہے کہ جیو کے آنے کے بعد ہندوستان میں ڈیٹا کی ماہانہ کھپت 0.2 بلین جی بی سے بڑھ کر 1.2 بلین جی بی ہوگئی ہے اور ڈیٹا کی کھپت پہلے سے کئی گنا بڑھ گئی ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Oct 08, 2020 05:42 PM IST