اپنا ضلع منتخب کریں۔

    ہندوستان میں 2023 تنخواہوں میں ہوگاسب سے زیادہ اضافہ، پاکستان اورسری لنکاکانمبرہوگاآخری

    Youtube Video

    رپورٹ کے مطابق امریکہ میں اس سال تنخواہوں میں 4.5 فیصد کی کمی دیکھنے میں آئی ہے جو اگلے سال گرتی ہوئی مہنگائی سے پلٹ جائے گی۔ حالیہ جاری معاشی بحران کے درمیان برطانیہ کے ملازمین کو اس سال سب سے زیادہ نقصان پہنچا، جب سے سروے 2000 میں شروع ہوا تھا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai | Hyderabad | Jammu | Lucknow | Karnawal
    • Share this:
      ایک ایسے وقت میں جب بڑھتی ہوئی مہنگائی کی وجہ سے لوگ معاشی طور پر پریشان ہیں۔ ایسے میں 2023 کے دوران تنخواہوں میں اضافے کا امکان ہے۔ دنیا بھر میں تنخواہوں میں سب سے زیادہ اضافہ ہندوستان میں ہوسکتا ہے۔ عالمی سطح پر تنخواہوں کے بارے میں ریکارڈ رکھنے اور مستقبل کے رحجانات کے بارے میں آگاہ کرنے والے ای سی یو سیلاری ٹرنڈ سروے (ECA’s Salary Trends Survey) کے تحت ان باتوں کا اظہار کیا گیا ہے۔

      ای سی یو سیلاری ٹرنڈ سروے 68 ممالک اور شہروں میں 360 سے زیادہ ملٹی نیشنل کمپنیوں سے جمع کی گئی معلومات پر مبنی ہے۔ بلومبرگ نے سروے کے نتائج کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ سب سے زیادہ متاثرہ خطہ یورپ ہوسکتا ہے۔ جہاں حقیقی تنخواہیں، برائے نام اجرت میں اضافہ مائنس مہنگائی کی شرح کو اوسطاً 1.5 فیصد کم دیکھا جا رہا ہے۔

      یہ سرفہرست 10 ممالک ہیں اور 2023 میں ان کی اصل مدت کی تنخواہ میں اضافے کی پیش گوئی کی گئی ہے:

      ہندوستان (4.6 فیصد)

      ویتنام (4.0 فیصد)
      چین (3.8 فیصد)

      برازیل (3.4 فیصد)

      سعودی عرب (2.3 فیصد)

      ملائیشیا (2.2 فیصد)

      کمبوڈیا (2.2 فیصد)

      تھائی لینڈ (2.2 فیصد)

      عمان (2.0 فیصد)

      روس (1.9 فیصد)

      پاکستان (-9.9 فیصد)

      گھانا (-11.9 فیصد)

       

      ترکی (-14.4 فیصد)

      سری لنکا (-20.5 فیصد)

      ارجنٹائن (-26.1 فیصد)

      رپورٹ کے مطابق امریکہ میں اس سال تنخواہوں میں 4.5 فیصد کی کمی دیکھنے میں آئی ہے جو اگلے سال گرتی ہوئی مہنگائی سے پلٹ جائے گی۔ حالیہ جاری معاشی بحران کے درمیان برطانیہ کے ملازمین کو اس سال سب سے زیادہ نقصان پہنچا، جب سے سروے 2000 میں شروع ہوا تھا۔ 3.5 فیصد اوسط برائے معمولی تنخواہ میں اضافے کے باوجود حقیقی معنوں میں تنخواہوں میں 5.6 فیصد کمی واقع ہوئی، جس کی وجہ 9.1 فیصد اوسط مہنگائی ہے۔ وہ 2023 میں مزید 4 فیصد گرنے کے لیے تیار ہیں۔

      یہ بھی پڑھی: 


      ایشیائی ممالک حقیقی تنخواہوں میں اضافے کی پیشن گوئی کرنے والے سرفہرست 10 ممالک میں سے آٹھ ہیں، جس کی قیادت ہندوستان کرے گا، جہاں 4.6 فیصد، ویتنام میں 4.0 فیصد اور چین میں 3.8 فیصد اضافہ ہوا۔ ای سی اے انٹرنیشنل کے ریجنل ڈائریکٹر برائے ایشیا لی کوان نے کہا کہ ہمارا سروے 2023 میں عالمی سطح پر کارکنوں کے لیے ایک اور مشکل سال کی نشاندہی کرتا ہے۔ سروے کیے گئے ممالک میں سے صرف ایک تہائی میں حقیقی معنوں میں تنخواہوں میں اضافے کی پیش گوئی کی گئی ہے، حالانکہ یہ 22 ممالک سے بہتر ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: