உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندوستان کلین اینرجی کے دور میں ہورہا ہے داخل، سبز ہائیڈروجن ہندوستان کے مستقبل کی کلید:مکیش امبانی

    Youtube Video

    سبز توانائی پر وزیر اعظم مودی کی توجہ پر روشنی ڈالتے ہوئے مکیش امبانی نے کہا کہ ’’پی ایم مودی کی سبز طاقت پر توجہ دنیا کو ایک مضبوط پیغام دیتی ہے اور اب دنیا کو اخراج میں مطلق کمی لانے کی ضرورت ہے‘‘۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      ریلائنس انڈسٹریز کے چیئرمین اور ایم ڈی مکیش امبانی Mukesh Ambani نے انٹرنیشنل کلائمیٹ سمٹ 2021- پاورنگ انڈیاس ہائیڈروجن ایکو سسٹم International Climate Summit 2021- Powering India’s Hydrogen Eco system کے دوارن بات کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان نے دنیا کو ایک پیغام دیا ہے کہ وہ نئی توانائی میں خور کفیل ہے، دنیا موسمیاتی تبدیلی کے تباہ کن اثرات دیکھ رہی ہے اور ہم کلین گرین نئی توانائی کے دور کا آغاز کر رہے ہیں۔

      امبانی نے کہا کہ نیا سبز انقلاب ہندوستان کو توانائی کی پیداوار میں خود انحصار بنا سکتا ہے اور سبز ہائیڈروجن ہمارے مستقبل کی کلید ہے۔ ریلائنس انڈسٹریز پہلے ہی امریکہ میں قائم چارٹ انڈسٹریز کے ساتھ انڈین ہائیڈروجن الائنس تشکیل دے چکی ہے جس کا مقصد ہائیڈروجن ٹیکنالوجی کو کمرشلائز کرنا اور ملک میں سبز اور نیلے ہائیڈروجن کو ترقی دینا ہے۔ دونوں کمپنیاں انڈیا ایچ 2 الائنس (آئی ایچ 2 اے) کی تشکیل کے ذریعے ہائیڈروجن ٹیکنالوجی اور اسی ایجنڈے کو آگے بڑھانے کی راہ پر گامزن ہیں۔


      تیل سے ٹیلی کام گروپ ریلائنس انڈسٹریز نے اے جی ایم میں اعلان کیا کہ کمپنی کلین اینرجی میں 75000 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کرے گی۔کلین اینرجی میں ریلائنس انڈسٹریز کے اس قدم کو ایک گیم چینجر اور تبدیلی کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔ کمپنی کے شمسی توانائی کی پیداوار اور مینوفیکچرنگ ، ہائیڈروجن کی پیداوار ، ای ایندھن اور توانائی کے شعبے میں بڑے منصوبے ہیں۔کلین اینرجی میں یہ 75000 کروڑ کی سرمایہ کاری جام نگر میں دھیرو بھائی امبانی گرین انرجی گیگا کمپلیکس کی تعمیر پر مشتمل ہے۔

      یہ سرمایہ کاری 10 سال میں 100Gw کی شمسی توانائی پیدا کرنے کی صلاحیت کو بھی شامل کرتی ہے، اس وقت ہندوستان کی صلاحیت 40Gw ہے۔ سبز توانائی پر وزیر اعظم مودی کی توجہ پر روشنی ڈالتے ہوئے مکیش امبانی نے کہا کہ ’’پی ایم مودی کی سبز طاقت پر توجہ دنیا کو ایک مضبوط پیغام دیتی ہے اور اب دنیا کو اخراج میں مطلق کمی لانے کی ضرورت ہے‘‘۔


      وزیر اعظم مودی نے 75 ویں یوم آزادی کے موقع پر قوم سے خطاب کرتے ہوئے نیشنل ہائیڈروجن مشن کے قیام کا بھی اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ گرین ہائیڈروجن دنیا کا مستقبل ہے۔ ہمیں امرت کال میں ہندوستان کو گرین ہائیڈروجن کی پیداوار اور برآمد کے لیے ایک عالمی مرکز بنانا ہے۔ اس سے نہ صرف ہندوستان کو توانائی کی خود انحصاری کے شعبے میں نئی ​​پیش رفت کرنے میں مدد ملے گی بلکہ پوری دنیا میںکلین اینرجی کی منتقلی کے لیے ایک نئی تحریک بن جائے گی۔

      کل انرجی کے شعبوں میں داخل ہونے کے بڑے منصوبوں کا اعلان رواں سال RIL کی AGM کے دوران کیا گیا تھا، جبکہ سالانہ جنرل میٹنگ میں خطاب کرتے ہوئے ریلائنس انڈسٹریز کے سی ای او مکیش امبانی نے کمپنی کےکلین اینرجی انرجی اسپیس میں داخل ہونے کے بڑے منصوبوں کے بارے میں آگاہ کیا۔ گرین ہائیڈروجن توانائی کا ایک انوکھا ویکٹر ہو گا جو نقل و حمل اور بجلی کی صنعت جیسے کئی شعبوں کے ڈیکربونائزیشن کو فعال کر سکتا ہے۔

      ریلائنس انڈسٹریز کے مالک مکیش امبانی
      ریلائنس انڈسٹریز کے مالک مکیش امبانی


      انھوں نے کہا کہ ’’سبز ہائیڈروجن پیدا کرنے کے طریقوں میں سے ایک خالص پانی کا الیکٹرولیسس ہے۔ یہ مجھے گیگا فیکٹری کے لیے الیکٹرو لیزر کی تیسری پہل کی طرف لاتا ہے۔ اس کا استعمال گھریلو استعمال کے ساتھ ساتھ عالمی فروخت کے لیے سبز ہائیڈروجن کی اسیر پیداوار کے لیے کیا جا سکتا ہے۔ سبز ہائیڈروجن پر RIL کے بڑے ہونے کی وجہ یہ ہے کہ ہائیڈروجن ماحول کے لیے بالکل نقصان دہ نہیں ہے۔ آب و ہوا کے بحران سے نمٹنے کے لیے ، RIL کے اس بڑے اقدام کو گیم چینجر اور خلل ڈالنے والے کے طور پر دیکھا جاتا ہے‘‘
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: