உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    India's Employment Crisis: جملہ 45 کروڑ سے زیادہ ہندوستانی نوکری کی تلاش میں بھی نہیں ہے؟ کیوں؟

    بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق حوصلہ افزائی کارکنوں کا بڑا حصہ بتاتا ہے۔

    بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق حوصلہ افزائی کارکنوں کا بڑا حصہ بتاتا ہے۔

    وزارت محنت نے ایک بیان میں کہا کہ ای پی ایف او کے عارضی پے رول کے اعداد و شمار نے آج جاری کیا ہے کہ ای پی ایف او نے فروری 2022 کے مہینے میں 14.12 لاکھ نیٹ سبسکرائبرز کو شامل کیا ہے۔ ایمپلائز پراویڈنٹ فنڈ آرگنائزیشن (ای پی ایف او) کے اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ اپریل 2021 اور فروری 2022 کے درمیان خالص اندراج 1.11 کروڑ تھے۔

    • Share this:
      پرائیویٹ ریسرچ فرم سینٹر فار مانیٹرنگ انڈین اکانومی پرائیویٹ (Centre for Monitoring Indian Economy Pvt) کے اعداد و شمار کے مطابق لاکھوں ہندوستانی ہندوستان میں ملازمت کے بازار کو مکمل طور پر چھوڑ رہے ہیں، کیونکہ وہ نوکری کی تلاش میں بھی نہیں ہیں۔ سال 2017 اور 2022 کے درمیان مجموعی طور پر مزدوروں کی شرکت کی شرح 46 فیصد سے کم ہو کر 40 فیصد ہو گئی۔

      سی ایم آئی ای کے مطابق اب قانونی کام کرنے کی عمر کے 90 کروڑ ہندوستانیوں میں سے نصف سے زیادہ تقریباً امریکہ اور روس کی مجموعی آبادی نوکری نہیں چاہتے۔ بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق حوصلہ افزائی کارکنوں کا بڑا حصہ بتاتا ہے کہ ہندوستان اس منافع کو حاصل کرنے کا امکان نہیں ہے جو اس کی نوجوان آبادی کو پیش کرنا ہے۔ ہندوستان ممکنہ طور پر درمیانی آمدنی کے جال میں رہے گا، K کی شکل کی ترقی کا راستہ عدم مساوات کو مزید ہوا دے گا۔

      بنگلورو میں سوسائٹی جنرل جی ایس سی پرائیویٹ کے ماہر اقتصادیات کنال کنڈو کے حوالے سے بتایا کہ میک کینسی گلوبل انسٹی ٹیوٹ کی 2020 کی رپورٹ کے مطابق نوجوانوں کی تعداد کے ساتھ رفتار برقرار رکھنے کے لیے ہندوستان کو 2030 تک کم از کم 9 کروڑ نئی غیر فارمی ملازمتیں پیدا کرنے کی ضرورت ہے۔ رپورٹ کے مطابق اس کے لیے 8 تا 8.5 فیصد کی سالانہ جی ڈی پی (GDP) نمو درکار ہوگی۔

      رپورٹ کے مطابق CMIE کے مہیش ویاس نے کہا کہ خواتین اتنی تعداد میں لیبر فورس میں شامل نہیں ہوتیں کیونکہ نوکریاں اکثر ان پر مہربان نہیں ہوتیں۔ مثال کے طور پر مرد اپنی ملازمت تک پہنچنے کے لیے ٹرینیں بدلنے کے لیے تیار ہیں۔ خواتین ایسا کرنے پر آمادہ ہونے کا امکان کم ہیں۔ یہ بہت بڑے پیمانے پر ہو رہا ہے۔ حال ہی میں ریٹائرمنٹ فنڈ باڈی ای پی ایف او نے یہ بھی کہا کہ اس نے فروری 2022 میں 14.12 لاکھ سبسکرائبرز کا اضافہ کیا، جو کہ ایک سال پہلے اسی مہینے میں اندراج شدہ 12.37 لاکھ سے 14 فیصد زیادہ ہے۔

      وزارت محنت نے ایک بیان میں کہا کہ ای پی ایف او کے عارضی پے رول کے اعداد و شمار نے آج جاری کیا ہے کہ ای پی ایف او نے فروری 2022 کے مہینے میں 14.12 لاکھ نیٹ سبسکرائبرز کو شامل کیا ہے۔ ایمپلائز پراویڈنٹ فنڈ آرگنائزیشن (ای پی ایف او) کے اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ اپریل 2021 اور فروری 2022 کے درمیان خالص اندراج 1.11 کروڑ تھے۔

      سینٹرل ریزرو پولیس فورس بھرتی 2022: یہاں سرکاری نوٹیفکیشن چیک کریں:

      جنوری 2022 میں خالص صارفین کا اضافہ 13,79,977 تھا اور فروری 2021 میں 12,37,489 تھا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ اکتوبر 2021 کے بعد سے خالص صارفین کے اضافے میں مسلسل اضافہ ہوا ہے، جس سے تنظیم کی جانب سے فراہم کردہ خدمات پر اعتماد ظاہر ہوتا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: تلنگانہ : اردو میڈیم اساتذہ کی خالی اسامیوں پرجلد ہوسکتی ہے بھرتی، آئندہ 2دنوں میں ہوگا اجلاس

      خواتین کے لیے وجوہات بعض اوقات گھر میں حفاظت یا وقت گزاری کی ذمہ داریوں سے متعلق ہوتی ہیں۔ اگرچہ وہ ہندوستان کی 49 فیصد آبادی کی نمائندگی کرتے ہیں، لیکن خواتین اس کی اقتصادی پیداوار میں صرف 18 فیصد حصہ ڈالتی ہیں، جو کہ عالمی اوسط کا تقریباً نصف ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: