உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ITR کی آخری تاریخ نکل گئی، نہیں بھرنے والے 5،000 جرمانے کے ساتھ فائل کرسکتے ہیں ٹیکس ریٹرن

    انکم ٹیکس ریٹرن بھرنے کی آخری تاریخ ہوگئی ختم، اب دینا ہوگا جرمانہ۔

    انکم ٹیکس ریٹرن بھرنے کی آخری تاریخ ہوگئی ختم، اب دینا ہوگا جرمانہ۔

    لیٹ فائن کے ساتھ آئی ٹی آر داخل کرنے کی سہولت آن لائن اور آف لائن دونوں طرح سے ملتی ہے۔ وقت پر ٹیکس ریٹرن فائل نہیں کرنے کا جرمانہ 5000 روپے کا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: انکم ٹیکس ریٹرن کی آخری تاریخ نکل گئی ہے۔ ریٹرن داخل کرنے کی ڈیڈلائن 31 دسمبر تھی۔ محکمہ انکم ٹیکس نے بتایا ہے کہ آخری دن 31 دسمبر تک ملک میں تقریباً 5.89 کروڑ ریٹرن داخل کیے گئے ہیں ان میں سے 46.11 لاکھ آئی ٹی آر 31 دسمبر کی آخری تاریخ کو جمع کیے گئے ہین۔ اس کے باوجود جو لوگ ریٹرن بھرنے سے چھوٹ گئے ہیں، وہ آگے جمع کر سکتے ہیں لیکن اس کے لئے اُنہیں جرمانہ ادا کرنا ہوگا۔

      سینٹرل بورڈ آف ڈائریکٹ ٹیکسس یا CBDT نے کہا ہے کہ 31 دسمبر تک 5.89 کروڑ آئی ٹی آر بھرے گئے ہیں۔ ابھی حال میں حکومت نے نیا ای فائلنگ پورٹل بھی لانچ کیا تھا جس پر آئی ٹی آر دخل کیے گئے ہیں۔ محکمہ کے مطابق سبھی آئی ٹی آر نئے ای فائلنگ پورٹل پر جمع کیے گئے ہیں۔ کچھ ریٹرن آف لائن موڈ میں بھی داخل کیے گئے ہیں جس کے لئے آف لائن سافٹ ویئر بنایا گیا ہے۔ تقریباً 3 کروڑ ریٹرن آئی ٹی آر فارم-1 میں داخل کیے گئے ہیں۔ 31 دسمبر کی آخری تاریخ تک جن لوگوں نے ٹیکس ریٹرن نہیں بھرا ہے، اُن کے لئے بھی موقع ہے۔

      جرمانے کا پروویژن
      ڈیڈلائن کے بعد اگر کوئی شخص ریٹرن داخل کرتا ہے تو اس کے لئے کچھ جرمانے کا پروویژن ہے۔ محکمہ انکم ٹیکس بہت پہلے سے لوگوں کو آگاہ کررہا تھا، ڈیڈ لائن کا انتظار کیے بغیر جلد ریٹرن بھر دیا جائے کیونکہ بعد میں جرمانہ دے کر کام کرنا پڑے گا جو لوگ نہیں بھرپائے ہیں اب وہ جرمانے کے ساتھ اپنا ٹیکس ریٹرن داخل کریں گے۔

      لیٹ فائن کے ساتھ آئی ٹی آر داخل کرنے کی سہولت آن لائن اور آف لائن دونوں طرح سے ملتی ہے۔ وقت پر ٹیکس ریٹرن فائل نہیں کرنے کا جرمانہ 5000 روپے کا ہے۔ محکمہ پہلے جرمانے کی رقم کے طور پر 10 ہزار روپے وصول کیا کرتا تھا۔ لیکن ایسسمنٹ ایئر 2020-21 کے لئے جرمانے کی اس رقم کو کم کر کے 5000 روپے کردیا گیا ہے۔ آپ چاہے تو اتنے پیسے جمع کر کے ریٹرن فائل کرسکتے ہیں۔

      کچھ ٹیکس ادا کرنے والوں کو راحت
      حکومت نے چھوٹے ٹیکس دہندگان کو جرمانے سے کچھ ریلیف بھی دیا ہے۔ اگر کسی شخص کی کل آمدنی 5 لاکھ روپے سے زیادہ نہیں ہے اور وہ آخری تاریخ تک انکم ٹیکس ریٹرن فائل نہیں کرتا ہے تو زیادہ سے زیادہ جرمانہ 1000 روپے ہوگا۔ کچھ لوگوں کو اس میں بھی راحت ملتی ہے اور انہیں جرمانے کے طور پر کوئی رقم ادا نہیں کرنی پڑتی۔مالی سال 2020-21 کے لیے، اگر آپ 31 دسمبر 2021 (آڈٹ کے لیے 15 فروری 2022 اور ٹرانسفر پرائسنگ کیس کے لیے 28 فروری 2022) سے پہلے ITR فائل کرتے ہیں تو کوئی جرمانہ قابل ادائیگی نہیں ہوگا۔ اگر اس تاریخ کے بعد ریٹرن فائل کیا جاتا ہے تو 5000 روپے تک کا لیٹ فائن ادا کرنا پڑ سکتا ہے۔

      انٹرسٹ بھی دینا ہوتا ہے
      یہی نہیں دیر سے جرمانے کے ساتھ سود بھی ادا کرنا پڑ سکتا ہے۔ اگر آپ مقررہ تاریخ کو یا اس سے پہلے انکم ٹیکس ریٹرن فائل نہیں کرتے ہیں، تو آپ کو سیکشن 234 اے کے مطابق بقایہ ٹیکس کی رقم پر ہر مہینے یا مہینے کے کچھ حصے کے لیے 1فیصد کی شرح سے انٹرسٹ ادا کرنا ہوگا۔ یہ دھیان رکھناضروری ہے کہ اگر کسی نے ٹیکس ادا نہیں کیا ہے تو اس کا آئی ٹی آر فائل نہیں کیا جا سکتا۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: