بڑی خبر ! اب دوسرے نیٹ ورک پر کال کرنے کیلئے جیو یورزس کو دینے ہوں گے پیسے ، جانیں کیوں

اگر آپ کے پاس بھی ریلائنس جیو کا سم ہے تو آپ کو اب دوسرے نیٹ ورک پر بات کرنے کیلئے پیسہ دینا ہوگا ۔

Oct 09, 2019 06:30 PM IST | Updated on: Oct 09, 2019 08:09 PM IST
بڑی خبر ! اب دوسرے نیٹ ورک پر کال کرنے کیلئے جیو یورزس کو دینے ہوں گے پیسے ، جانیں کیوں

اگر آپ کے پاس بھی ریلائنس جیو کا سم ہے تو آپ کو اب دوسرے نیٹ ورک پر بات کرنے کیلئے پیسہ دینا ہوگا ۔ جیو کے ذریعہ جاری ایک پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ دوسری کمپنیوں کے نیٹ ورک پر کال کرنے کیلئے صارفین کو 9 اکتوبر سے چھ پیسے فی منٹ چارج ادا کرنا ہوگا ۔ حالانکہ جیو سے جیو کے نیٹ ورک پر کال کرنا فری ہوگا ۔

ساتھ ہی ساتھ جیو نے اپنے صارفین کو اس بات کی یقین دہانی کرائی ہے کہ یہ چارج اس وقت تک ہی جاری رہے گا جب تک آئی یو سی کا چارج کم ہوکر صفر نہیں ہوجاتا ہے ۔ بتادیں کہ آئی یو سی چھ پیسے فی منٹ کے حساب سے انٹرکنیکٹ چارج لیتا ہے ۔ یہ چارج ٹرائی نے طے کر رکھا ہے ۔ دراصل انٹرکنیکٹ چارج اس وقت لگتا ہے جب ایک نیٹ ورک کا یوزر کسی دوسرے نیٹ ورک کے یوزر پر کال کرتا ہے ۔ اس کو موبائل آف نیٹ کال بھی کہتے ہیں ۔

Loading...

اس اعلان کے ساتھ ہی جیو نے دوسرے نیٹ ورک پر کال کرنے کیلئے پلان بھی جاری کردئے ہیں ۔ اس کے تحت جیو نے 10 روپے سے لے کر 100 روپے تک کے پلان جاری کئے ہیں ۔ 10 روپے کے پلان میں یوزر کو دوسرے نیٹ ورک پر 124 منٹ کی کالنگ جبکہ 20 روپے میں  249 منٹ کی کالنگ کی سہولت ملے گی ۔ وہیں 50 روپے میں 656 منٹ اور 100 روپے پلان میں 1362 منٹ کی کالنگ کی سہولت ملے گی ۔ حالانکہ اس کی بھرپائی کیلئے کمپنی اس کی قیمت کے برابر ڈیٹا یوزرس کو دے گی ۔ 10 روپے کے ٹاپ آپ پر ایک جی بی ، 20 روپے پر دو جی بی ، 50 روپے پر پانچ جی بی اور 100 روپے پر 10 جی بی ڈیٹا ملے گا ۔

بتادیں کہ وہاٹس ایپ اور فیس ٹائم سمیت اس طرح کے دیگر پلیٹ فارموں سے کئے گئے کال پر بھی چارج نہیں لگے گا اور سبھی نیٹ ورک کی انکمنگ کالس مفت رہیں گی ۔ ٹرائی نے آئی یو سی کو 2014 میں 14 پیسے سے کم کرکے چھ پیسے فی منٹ کردیا تھا ۔ ٹرائی نے کہا تھا کہ جنوری 2020 تک اس کو ختم کردیا جائے گا ۔ اب ٹرائی نے اس بارے میں مشورے کا عمل جاری کیا ہے ۔

قابل ذکر ہے کہ کمپنی پہلی مرتبہ اپنے صارفین سے کال کیلئے چارج لینے والی ہے ۔ ابھی تک جیو کے صارفین کو صرف ڈیٹا کیلئے چارج ادا کرنا پڑتا تھا ۔

Loading...