ہوم » نیوز » معیشت

ریلائنس کو لے کر جھوٹی باتیں پھیلائی جارہی ہیں ، نئے قانون سے صرف کسانوں کا ہی فائدہ : مہاراشٹر شیتکاری سنگٹھن

نئے زرعی قوانین کو لے کر پھیلائی جارہی گمراہ کن باتوں پر ریلائنس انڈسٹریز نے پیر کو ایک بیان جاری کیا ہے ۔ کمپنی نے واضح طور پر کہا کہ کارپوریٹ فارمنگ یا کنٹریکٹ فارمنگ سے اس کا کوئی لینا دینا نہیں ہے ۔ نہ ہی کارپوریٹ فارمنگ یا کنٹریکٹ فارمنگ سیکٹر میں اترنے کا ارادہ ہے ۔

  • Share this:
ریلائنس کو لے کر جھوٹی باتیں پھیلائی جارہی ہیں ، نئے قانون سے صرف کسانوں کا ہی فائدہ : مہاراشٹر شیتکاری سنگٹھن
ریلائنس کو لے کر جھوٹی باتیں پھیلائی جارہی ہیں : مہاراشٹر شیتکاری سنگٹھن

نئے زرعی قوانین کی بنیاد پر کارپوریٹ فارمنگ کو لے کر پھیلائی جارہی گمراہ کن باتوں پر ریلائنس انڈسٹریز نے آج اپنی وضاحت جاری کی ہے ۔ کمپنی نے صاف طور پر کہا کہ پہلے بھی اس نے کنٹریکٹ فارمنگ نہیں کی ہے اور نہ ہی آگے بھی ایسا کرنے کا ارادہ ہے ۔ ریلائنس نے یہ بھی کہا کہ وہ کھیتی کی زمین بھی نہیں خرید رہی ہے ۔ ریلائنس کے ذریعہ پیر کو وضاحت جاری کرنے کے بعد کئی جانکاروں نے اپنی باتیں رکھی ہیں ۔


مہاراشٹر شیتکاری سنگٹھن کے سربراہ انل گھنبٹ نے کہا کہ زرعی قوانین کو لے کر لوگوں میں افواہ پھیلائی جارہی ہے کہ بڑی بڑی کمپنیاں کسانوں کی زمین ہڑپ رہی ہں ۔ یہ پوری طرح سے غلط ہے ۔ حقیقت میں کوئی بھی کمپنی کسی بھی حالت میں کسانوں کی زمین پر قبضہ نہیں کرسکتی ہے ۔ پچھلے کئی سالوں سے مہاراشٹر اور پنجاب میں کنٹریکٹ فارمنگ ہورہی ہے ۔ کسانوں کو ہی اس کا فائدہ ملتا ہے ۔ کنٹریکٹ فارمنگ کے تحت کوئی بھی کسانوں کی زمین نہیں لے سکتا ہے ۔


پنجاب بی جے پی لیڈر ہرجیت سنگھ گروال نے کہا کہ ریلائنس کا کنٹریکٹ فارمنگ سے پورے ملک میں کوئی لینا دینا نہیں ہے ۔ ریلائنس کا یہ بیان بالکل ٹھیک ہے ۔ کسانوں کو گمراہ کیا جارہا ہے ۔ ٹاور توڑنے کا نقصان عام لوگوں کو ہی اٹھانا پڑ رہا ہے ۔ پنجاب سرکار کے سابق وزیر سرجیت جیانی نے کہا کہ ریلائنس کا کنٹریکٹ فارمنگ سے کوئی لینا دینا نہیں ہے ۔ وزیر اعظم کو بدنام کرنے کیلئے ریلائنس کا نام ڈالا جارہا ہے ۔


وشواس پاٹھک نے کہا کہ مودی سرکار جو نیا قانون لے کر آئی ہے ، اس میں کنٹریکٹ فارمنگ لازمی نہیں ہے ، لیکن اگر کوئی کنٹریکٹ فارمنگ کرتا ہے تو اس سے کسانوں کو نقصان نہ ہو ، اس کیلئے قانونی بندوبست ہیں ۔ اب ریلائنس اس کاروبار میں ہی نہیں تو ایسے میں ریلائنس کو نشانہ بنانا مناسب نہیں ہے ۔

وجے سردانا نے کہا کہ کچھ لوگ ہندوستان کے کارپوریٹ کو بدنام کرنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ ریلائنس کا یہ بیان بہت اہم ہے ۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا کسانوں کو کنٹریکٹ فارمنگ کرنی چاہئے تو انہوں نے جواب دیا کہ جس طرح سے ہمارے یہاں زمینوں کا ریٹ ہے اور زمین چھوٹے چھوٹے ٹکڑوں میں منقسم ہے ، اس طرح سے دیکھیں تو ہندوستان میں کارپوریٹ فارمنگ فیزیبل نہیں ہے ۔

ادھر بی جے پی لیڈر شہنواز حسین سے جب پوچھا گیا کہ ریلائنس انڈسٹریز نے بیان جاری کیا ہے کہ اس کا کارپوریٹ فارمنگ سے لینا دینا نہیں ہے ، کیا اس سے اپوزیشن کی غلط فہمی دوری ہوگی ؟ انہوں نے جواب دیا کہ یہ بات صحیح ہے کہ ہر چیز کو غلط طریقے سے بتایا جاتا ہے کہ یہ کمپنی آئے گی ، غلام بنا لے جائے گی ، ایسا کہیں نہیں ہے ۔ ایم ایس پی سے نیچے خریدنے کی اجازت کسی کو نہیں ہے ۔

(ڈسکلیمر: نیوز 18 اردو ڈاٹ کام ریلائنس انڈسٹریز کی کمپنی نیٹ ورک 18 میڈیا اینڈ انویسٹمنٹ لمیٹڈ کا حصہ ہے۔ نیٹ ورک 18 میڈیا اینڈ انویسٹمنٹ لمیٹڈ ریلائنس انڈسٹریز کی ملکیت ہے۔)
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jan 04, 2021 02:05 PM IST