உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    1 جنوری سے مہنگی ہوجائیں گی کئی چیزیں اور سروس، آپ کی جیب پر پڑے گا سیدھا اثر

    یکم جنوری 2022 سے بہت سی چیزیں اور سروس ہوجائیں گی مہنگی۔

    یکم جنوری 2022 سے بہت سی چیزیں اور سروس ہوجائیں گی مہنگی۔

    اب صرف کچھ ہی گھنٹوں کے بعد سال 2022 کی شروعات ہوجائے گی اور اسی کے ساتھ شروع ہوگا مہنگائی سے آپ کا سامنا۔ 1 جنوری 2022 سے ہونے والے کچھ تبدیلیوں کا سیدھا اثر ہم سبھی کی جیب پر پڑے گا۔

    • Share this:
      نئی دہلی: آج 31 دسمبر ہے۔ جی ہاں، آج سال 2021 کا آخری دن ہے۔ اب صرف کچھ ہی گھنٹوں کے بعد سال 2022 کی شروعات ہوجائے گی اور اسی کے ساتھ شروع ہوگا مہنگائی سے آپ کا سامنا۔ 1 جنوری 2022 سے ہونے والے کچھ تبدیلیوں کا سیدھا اثر ہم سبھی کی جیب پر پڑے گا۔ یکم جنوری 2022 سے اے ٹی ایم سے کیش نکالنا مہنگا ہوجائے گا۔ اس کے علاوہ نئے سال کے ساتھ ہی انڈیا پوسٹ پیمنٹس بینک (IPPB)میں پیسہ جمع کرنا اب فری یعنی مفت نہیں رہ جائے گا۔

      1 جنوری 2022 سے ہماری زندگی میں کیا کیا بدلنے والا ہے؟
      1 جنوری 2022 سے اے ٹی ایم سے پیسہ نکالنا مہنگا ہوجائے گا۔ گاہکوں کو فری ٹرانزکشن ختم ہونے کے بعد اے ٹی ایم سے پیسے نکالنے پر پہلے سے زیادہ چارج ادا کرنا ہوگا۔ ابھی تک گاہکوں سے فری ٹرانزکشن ختم ہونے کے بعد اے ٹی ایم سے پیسے نکالنے پر 20 روپے فی ٹرانزکشن ادا کرنا پڑتے تھے۔ اب اس چارج کو بڑھا کر 21 روپے کردیا گیا ہے۔

      IPPB میں پیسہ جمع کرنا اور نکالنا ہوگا مہنگا
      انڈیا پوسٹ پیمنٹس بینک (IPPB)میں پیسہ جمع کرنے اور نکالنے پر چارج لگے گا۔ سیونگ اور کرنٹ اکاونٹ کے لئے کیش وتھڈرا 25 ہزار روپے ہر مہینے تک فری ہے۔ فری لمٹ کے کے بعد، ویلیو کا 0.50 فیصدی کم از کم 25 روپے فی ٹرانزکشن تک لیا جائے گا۔ وہیں، کیش جمع 10 ہزار روپے ہر مہینے تک بالکل مفت رہے گا۔ مفت لمٹ کے بعد، ویلیو کے 0.50 فیصدی پر چارج کیا جائے گا جو کم از کم 25 روپے فی ٹرانزکشن ہوگا۔

      جوتے اور کپڑے خریدنا بھی ہوگا مہنگا
      نئے سال سے جوتے اور کپڑے خریدنے کے لئے پہلے سے زیادہ پیسے خرچ کرنے ہوں گے۔ ریڈی میڈ کپڑے اور جوتے چپلوں پر گوڈس اینڈ سروس ٹیکس (GST)یکم جنوری سے بڑھا دیا جارہاہے۔ حکومت پہلے ان سامان پر 5 فیصدی جی ایس ٹی لگاتی تھی، لیکن اس کو بڑھا کر اب 12 فیصدی کردیا گیا ہے۔ نئی قیمتیں یکم جنوری 2022 سے لاگو ہوجائیں گی۔ بتادیں کہ کھادی پر ٹیکس نہیں بڑھایا جائے گا۔

      آن لائن کیب بُکنگ پر لگے گا ٹیکس
      آن لائن یا موبائل ایپ سے کیب، آٹو رکشا، بائیک کی بکنگ کرنے پر گاہکوں سے 5 فیصدی کا ٹیکس وصول کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ سوئیگی اور زوماٹو جیسی آن لائن فوڈ ڈیلیورنگ ایپ بھی آرڈر سروس ٹیکس وصولے گی۔

      1 جنوری سے مہنگی ہوجائیں گی گاڑیاں
      1 جنوری 2022 سے ملک میں کار خریدنا بھی مہنگا ہوجائے گا۔ قریب 10 آٹو موبائل کمپنیاں یکم جنوری 2022 سے اپنی کاروں کی قیمت بڑھا رہی ہیں۔ گاڑیوں کی قیمت بڑھانے والی کمپنیوں میں ماروتی سوزوکی، ٹاٹا موٹرس، فاکس ویگن، ٹویوٹا اور ہونڈا بھی شامل ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: