உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اہم خبر: اب نہیں بنیں گی ڈیزل کاریں، Maruti Suzuki کا بڑا اعلان

    ماروتی سوزوکی (Maruti Suzuki)  کا خیال ہے کہ اخراج کے اصولوں کے اگلے مرحلے سے ڈیزل گاڑیوں کی قیمت میں اضافہ ہو گا جس سے مارکیٹ میں ان کی فروخت مزید متاثر ہو گی، جس میں گزشتہ کچھ سالوں سے  پٹرول کاروں کی طرف  دھیرے۔دھیرے بدلاؤبدیکھا گیا ہے۔

    ماروتی سوزوکی (Maruti Suzuki) کا خیال ہے کہ اخراج کے اصولوں کے اگلے مرحلے سے ڈیزل گاڑیوں کی قیمت میں اضافہ ہو گا جس سے مارکیٹ میں ان کی فروخت مزید متاثر ہو گی، جس میں گزشتہ کچھ سالوں سے پٹرول کاروں کی طرف دھیرے۔دھیرے بدلاؤبدیکھا گیا ہے۔

    ماروتی سوزوکی (Maruti Suzuki) کا خیال ہے کہ اخراج کے اصولوں کے اگلے مرحلے سے ڈیزل گاڑیوں کی قیمت میں اضافہ ہو گا جس سے مارکیٹ میں ان کی فروخت مزید متاثر ہو گی، جس میں گزشتہ کچھ سالوں سے پٹرول کاروں کی طرف دھیرے۔دھیرے بدلاؤبدیکھا گیا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ملک کی سب سے بڑی کار ساز کمپنی ماروتی سوزوکی (Maruti Suzuki) کا خیال ہے کہ اخراج کے اصولوں کے اگلے مرحلے سے ڈیزل گاڑیوں کی قیمت میں اضافہ ہو گا جس سے مارکیٹ میں ان کی فروخت مزید متاثر ہو گی، جس میں گزشتہ کچھ سالوں سے پٹرول کاروں کی طرف دھیرے۔دھیرے بدلاؤبدیکھا گیا ہے۔ کمپنی کے ایک سینئر افسر کے مطابق، ماروتی سوزوکی انڈیا (MSI) نے ڈیزل کے حصے میں واپس آنے سے انکار کر دیا ہے کیونکہ ان کا ماننا ہے کہ 2023 میں اخراج کے اصولوں کے اگلے مرحلے کی شروعات کے ساتھ ایسی گاڑیوں کی فروخت میں مزید کمی آئے گی۔ کمپنی نے فیصلہ کیا ہے کہ اسے ڈیزل گاڑیوں کے سیگمینٹ سے دور رہنا چاہئے۔

      کمپنی کے چیف ٹیکنیکل آفیسر سی وی رمن نے پی ٹی آئی کو بتایا، "ہم ڈیزل کاریں تیار نہیں کریں گے۔ ہم نے پہلے اشارہ دیا تھا کہ ہم اس کا مطالعہ کریں گے اور اگر صارفین کی طرف سے مطالبہ ہوا تو ہم واپسی کر سکتے ہیں لیکن آگے جاکر ہم ڈیزل کے شعبے میں حصہ نہیں لیں گے۔"

      کیا وجہ ہے؟
      چیف ٹیکنیکل آفیسر سی وی رمن نے مزید کہا کہ سال 2023 میں ہونے والے اخراج کے اصولوں کے اگلے مرحلے کے شروعات ہونے کے بعد ڈیزل گاڑیوں کی فروخت کم ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ کچھ سالوں میں لوگوں کی دلچسپی پٹرول کاروں کی طرف زیادہ ہوئی ہے، یہی نہیں، سی وی رمن نے مزید کہا کہ آنے والے وقت میں ہم ڈیزل کے شعبے میں حصہ نہیں لینے والے ہیں۔

      صنعت میں لگائے گئے اندازے کے مطابق، فی الحال یہ کل مسافر گاڑیوں (PV) کی فروخت کے 17 فیصد سے کم ہے۔ یہ 2013-14 کے مقابلے میں ایک بھاری کمی ہے جب کل ​​فروخت میں ڈیزل کاروں کی حصہ داری 60 فیصد تھی۔ ماروتی سوزوکی انڈیا نے سخت BS-VI اخراج کے اصولوں کی شروعات کے ساتھ اپنے پورٹ فولیو سے ڈیزل ماڈل کو بند کر دیا تھا۔

      1 اپریل 2020 سے BS-VI کے اخراج کے نظام کے شروع ہونے کے ساتھ، ملک میں پہلے ہی کئی کار ساز اداروں نے اپنے متعلقہ پورٹ فولیوز کے ڈیزل ٹرمز کو منسوخ کر دیا ہے۔ کمپنی کی پوری ماڈل رینج فی الحال BS-VI کے مطابق 1L، 1.2L اور 1.5L پٹرول انجنوں سے چلتی ہے۔ یہ اپنے سات ماڈلز میں سی این جی ٹرم بھی پیش کرتا ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: