உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Mission Karmayogi: سرکاری ملازمین کی تربیت کے لیے آن لائن پورٹل کے تحت کمپنی کا قیام، کثیررقمی ہوگی سرمایہ کاری

    اس میں کہا گیا ہے کہ کرمایوگی بھارت کا شیئر کیپٹل 40 کروڑ روپے ہوگا، جسے چار کروڑ ایکویٹی شیئرز میں تقسیم کیا جائے گا۔ اس میں کہا گیا ہے کہ ڈی او پی ٹی میں ڈپٹی سکریٹری (تربیت) ڈاکٹر کارتک ہیگڈیکٹی کے پاس 3.96 کروڑ شیئرز یا کمپنی کے 99 فیصد حصص ہوں گے اور وزارت داخلہ کے ڈپٹی سکریٹری سنیش کے پاس چار لاکھ یا ایک فیصد شیئر ہوں گے۔

    اس میں کہا گیا ہے کہ کرمایوگی بھارت کا شیئر کیپٹل 40 کروڑ روپے ہوگا، جسے چار کروڑ ایکویٹی شیئرز میں تقسیم کیا جائے گا۔ اس میں کہا گیا ہے کہ ڈی او پی ٹی میں ڈپٹی سکریٹری (تربیت) ڈاکٹر کارتک ہیگڈیکٹی کے پاس 3.96 کروڑ شیئرز یا کمپنی کے 99 فیصد حصص ہوں گے اور وزارت داخلہ کے ڈپٹی سکریٹری سنیش کے پاس چار لاکھ یا ایک فیصد شیئر ہوں گے۔

    اس میں کہا گیا ہے کہ کرمایوگی بھارت کا شیئر کیپٹل 40 کروڑ روپے ہوگا، جسے چار کروڑ ایکویٹی شیئرز میں تقسیم کیا جائے گا۔ اس میں کہا گیا ہے کہ ڈی او پی ٹی میں ڈپٹی سکریٹری (تربیت) ڈاکٹر کارتک ہیگڈیکٹی کے پاس 3.96 کروڑ شیئرز یا کمپنی کے 99 فیصد حصص ہوں گے اور وزارت داخلہ کے ڈپٹی سکریٹری سنیش کے پاس چار لاکھ یا ایک فیصد شیئر ہوں گے۔

    • Share this:
      پرسنل اینڈ ٹریننگ ڈیپارٹمنٹ (DoPT) نے ’کرما یوگی بھارت‘ (Karmayogi Bharat) کے نام سے ایک نئی غیر منافع بخش خود مختار کمپنی قائم کی ہے جو کہ سرکاری ملازمین کی آن لائن تربیت کے لیے ڈیجیٹل اثاثوں اور پلیٹ فارم کو چلانے میں مدد دے گی، جو کہ نریندر مودی کی زیر قیادت حکومت کے’مشن کرمایوگی‘ کا حصہ ہے۔

      سال 2020 میں منظور کیے گیے مشن کرمایوگی ایک صلاحیت سازی کا پروگرام ہے جو ہندوستانی سرکاری ملازمین کو ان کی بنیادی مہارت کے مطابق تربیت اور مستقبل کے لیے تیار کرنے میں مدد دے گا۔ اس میں 46 لاکھ مرکزی ملازمین کا احاطہ کرے گا اور 510.86 کروڑ روپے 21-2020 سے 25-2024 تک کے پانچ سال کے دوران پروگرام کے لیے خرچ کیے جائیں گے۔

      جمعہ کو جاری کردہ ایک دفتری میمورنڈم (او ایم) میں مرکزی حکومت نے کمپنیز ایکٹ 2013 کے سیکشن 8 کے تحت کرمایوگی بھارت کو نیشنل پروگرام برائے سول سروسز کیپسٹی بلڈنگ (NPCSCB) یا مشن کرمایوگی کے تحت 100 فیصد سرکاری ملکیتی کمپنی کے طور پر قائم کرنے کی منظوری دی ہے۔ جس کی ایک کاپی نیوز 18 نے حاصل کی ہے۔

      گزشتہ سال 23 جون 2021 کو جاری ہونے والے پہلے کے او ایم میں کہا گیا تھا کہ یہ کمپنی کچھ اہم کاروبار کی نشاندہی کرتے ہوئے قائم کی جائے گی جن کی کمپنی سے توقع کی جائے گی۔ تاہم تازہ ترین او ایم کمپنی کے قیام پر حکومت کی منظوری کے بارے میں مزید معلومات درکار ہیں۔

      اس میں کہا گیا ہے کہ کرمایوگی بھارت کا شیئر کیپٹل 40 کروڑ روپے ہوگا، جسے چار کروڑ ایکویٹی شیئرز میں تقسیم کیا جائے گا۔ اس میں کہا گیا ہے کہ ڈی او پی ٹی میں ڈپٹی سکریٹری (تربیت) ڈاکٹر کارتک ہیگڈیکٹی کے پاس 3.96 کروڑ شیئرز یا کمپنی کے 99 فیصد حصص ہوں گے اور وزارت داخلہ کے ڈپٹی سکریٹری سنیش کے پاس چار لاکھ یا ایک فیصد شیئر ہوں گے۔

      اس نے مزید کہا کہ کمپنی کے بورڈ میں ڈائریکٹرز کی تعداد دو سے کم یا 11 سے زیادہ نہیں ہوگی۔ یہ ڈی او پی ٹی کے انتظامی کنٹرول میں کام کرے گا۔ کمپنی iGOT-Karmyogi کے ڈیجیٹل لرننگ پلیٹ فارم کو ڈیزائن کرنے لاگو کرنے، بڑھانے اور اس کے انتظام کے لیے ذمہ دار ہوگی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: