உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    International Climate Summit 2021: مکیش امبانی نے بین الاقوامی موسمیاتی سمٹ 2021 میں کہی یہ10اہم باتیں

    Youtube Video

    ریلائنس انڈسٹریز (RIL) کے چیئرمین اور منیجنگ ڈائریکٹر مکیش امبانی Mukesh Ambani نے کہا کہ ریلائنس انڈسٹریز لمیٹڈ (RIL) 2035 تک خالص صفر کاربن کمپنی بننے کے لیے پرعزم ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      ریلائنس انڈسٹریز (RIL) کے چیئرمین اور منیجنگ ڈائریکٹر مکیش امبانی (Mukesh Ambani) نے کہا کہ ہندوستان میں سبز انقلاب green revolution پہلے ہی شروع ہو چکا ہے جس سے ملک 100 فیصد توانائی پر انحصار سے آزاد ہو جائے گا۔ وہ انٹرنیشنل کلائمیٹ سمٹ 2021 (International Climate Summit 2021)میں خطاب کر رہے تھے۔

      ہندوستان اس کلیدی کانفرنس کی میزبانی کررہا ہے تاکہ ملک میں صاف توانائی کی منتقلی کے لیے بات چیت کو تقویت دی جاسکے جس کی زیادہ تر توجہ ہندوستان کے ہائیڈروجن ماحولیاتی نظام Powering India's Hydrogen Ecosystem پر ہے۔


      3 ستمبر 2021 کو ہونے والے سمٹ میں پالیسی ساز ، ریگولیٹرز ، ماہرین اور صنعت کے رہنما شرکت کریں گے۔ سمٹ کا اہتمام پی ایچ ڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری (PHDCCI) کی ماحولیاتی کمیٹی نے کیا ہے جو کہ ایک غیر سرکاری صنعتی ترقیاتی تنظیم ہے۔

      نامور شخصیات بشمول مرکزی وزراء بھوپندر یادو اور جتیندر سنگھ ، نیتی آیوگ کے رکن ڈاکٹر وی کے سرسوت اور گرین اسٹیٹ انڈیا ، ناروے کی چیئرپرسن سٹرل ہیرالڈ پیڈرسن بھی اس سمٹ کا حصہ ہوں گے۔


      مکیش امبانی نے بین الاقوامی موسمیاتی سمٹ 2021 میں کہی 10 اہم باتیں یہ ہیں:

      • انہوں نے بشمول جام نگر میں دھیرو بھائی امبانی گرین انرجی گیگا کمپلیکس کے اگلے تین سال میں گرین انرجی اقدامات میں 75 ہزار کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کے اپنے عزم کا اعادہ کیا، ۔

      • 5000 ایکڑ پر مشتمل گیگا کمپلیکس دنیا کی سب سے بڑی گرین انرجی سہولیات میں سے ایک ہوگا جس میں چار گیگا فیکٹریاں شمسی مربوط فوٹو وولٹک یونٹ ، توانائی ذخیرہ کرنے کے لیے جدید بیٹریاں ، گرین ہائیڈروجن پیدا کرنے کے لیے الیکٹرولیسس اور اس ہائیڈروجن کو گرین انرجی میں تبدیل کرنے کے لیے فیول سیل پلانٹ تیار کیا جائے گا۔

      • گرین ہائیڈروجن ڈی کاربونائزیشن میں بنیادی کردار ادا کرے گا۔

      • ریلائنس انڈسٹریز لمیٹڈ (RIL) 2035 تک خالص صفر کاربن کمپنی بننے کے لیے پرعزم ہے۔

      • RIL اگلی دہائی میں گرین ہائیڈروجن کی قیمت 1/کلو گرام تک لانے پر کام کرے گی۔

      • RIL 2030 تک کم از کم 100 گیگاواٹ کی قابل تجدید صلاحیت قائم کرے گا۔

      • ہندوستان گرین ہاؤس گیسوں کا دنیا کا تیسرا سب سے بڑا اخراج کرنے والا ملک ہے اور جیواشم ایندھن کی درآمد پر ہمیں سالانہ 160 بلین ڈالر لاگت آتی ہے۔

      • وزیر اعظم مودی کی سبز طاقت پر توجہ دنیا کو ایک مضبوط پیغام دیتی ہے۔ ہندوستان نے دنیا کو پیغام دیا ہے کہ وہ نئی توانائی میں آتمانربھر بن جائے۔

      • ہندوستان 100 GW نصب شدہ قابل تجدید توانائی کے سنگ میل پر پہنچ گیا۔

      • دنیا گلوبل وارمنگ کے تباہ کن اثرات دیکھ رہی ہے اور اس کا واحد آپشن سبز دور میں تیزی سے منتقلی ہے۔ دنیا کو اخراج میں مطلق کمی لانے کی ضرورت ہے۔

      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: