اوٹی پی چوری کر کے آپ کے بینک کھاتے سے ایسے ہو رہی ہے دھوکہ دہی، جانئے کیسے محفوظ رکھ سکتے ہیں پیسے؟

حال ہی میں ایسے کئی معاملے سامنے آ چکے ہیں جن میں جعل سازوں نے بینک صارفین سے چالاکی سے او ٹی پی مانگ لی یا ان کے اسمارٹ فون ہیک کر کے او ٹی پی کی چوری کر لی۔

Nov 13, 2019 12:59 PM IST | Updated on: Nov 13, 2019 01:01 PM IST
اوٹی پی چوری کر کے آپ کے بینک کھاتے سے ایسے ہو رہی ہے دھوکہ دہی، جانئے کیسے محفوظ رکھ سکتے ہیں پیسے؟

نئی دہلی۔ آن لائن بینکنگ فراڈ کے معاملے مسلسل بڑھ رہے ہیں۔ اسی وجہ سے آن لائن شاپنگ کرتے وقت آپ کو زیادہ محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔ ابھی آن لائن شاپنگ کرتے وقت دو مرحلوں میں تصدیقی عمل کیا جاتا ہے۔ او ٹی پی یعنی ون ٹائم پاس ورڈ سسٹم کو سب سے محفوظ طریقہ مانا جاتا ہے۔ لیکن حقیقت میں ایسا ہے نہیں۔ حال ہی میں ایسے کئی معاملے سامنے آ چکے ہیں جن میں جعل سازوں نے بینک صارفین سے چالاکی سے او ٹی پی مانگ لی یا ان کے اسمارٹ فون ہیک کر کے او ٹی پی کی چوری کر لی۔

اب تو چوروں نے او ٹی پی حاصل کرنے کا نیا طریقہ ڈھونڈ لیا ہے۔ وہ بینک جا کر خود کو اصلی کھاتہ دار بتاتے ہوئے اندراج شدہ فون نمبر ہی بدلوا رہے ہیں۔ ایک بار نمبر بدل جانے کے بعد او ٹی پی ان کے موبائل پر آنے لگتا ہے اور پھر کچھ سیکنڈ میں اکاؤنٹ خالی ہو جاتا ہے۔

Loading...

او ٹی پی دھوکہ دہی کے لئے بینکوں میں رجسٹرڈ موبائل نمبر تبدیل کرانے کا رواج بڑھ رہا ہے۔ دھوکہ دہی کا دوسرا طریقہ یہ اپنایا جاتا ہے کہ وہ موبائل آپریٹر کے پاس فرضی آئی ڈی پروف جمع کر کے ڈپلی کیٹ سم لے لیتے ہیں۔ موبائل آپریٹر نیا سم جاری کرتے ہی پرانے سم کو ڈی ایکٹیویٹ کر دیتا ہے۔ اس طرح سے مجرمین پھر سے ڈپلی کیٹ سم پر او ٹی پی مانگ کر اکاؤنٹ سے پیسے نکال لیتے ہیں۔

کیسے بچیں بینکنگ دھوکہ دہی سے

اینٹی وائرس اور تازہ ترین سیکورٹی تدابیر کا استعمال کریں

اپنے پاس ورڈ کو مضبوط بنائیں اور بدلتے رہیں

بینک کو اپنی تازہ جانکاری دیں

محفوظ نیٹ ورک سے ہی بینک اکاؤنٹ ایکسس کریں

Loading...