உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Pakistan:ہندوستان سے مال خریدنے کے لئے اتحادی جماعتوں سے بات کرے گا پاکستان، سیلاب سے سینکڑوں ایکڑ فصل تباہ

    پاکستان نے ہندوستان سے مال خریدنے پر کیا غور۔ (تصویر: moneycontrol)

    پاکستان نے ہندوستان سے مال خریدنے پر کیا غور۔ (تصویر: moneycontrol)

    Pakistan: پاکستان کے سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں 6.5 لاکھ حاملہ خواتین کو اس آفت سے نمٹنے کے لیے فوری دیکھ بھال کی اشد ضرورت ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • New Delhi | Hyderabad
    • Share this:
      Pakistan: پاکستان کے وزیر خزانہ مفتاح اسمعیل نے کہا ہے کہ حکومت اتحادی جماعتوں سے بات چیت کے بعد ہندوستان سے مال خریدنے پر غور کرے گی۔ بتادیں کہ، نقدی کی کمی اور ملک بھر مین سیلاب کی وجہ سے ضروری اشیا کی قیمتوں میں ہوئے اضافے کو مستحکم کرنے کے لئے پاکستان ہندوستان سے سامان خریدنا چاہتا ہے۔

      ہندوستان سے اشیائے خوردونوش درآمد کرنے کا خیال سب سے پہلے پیر کو وزیر خزانہ نے پیش کیا کیونکہ ملک میں سیلاب کی وجہ سے سینکڑوں ایکڑ پر کھڑی فصلیں تباہ ہو چکی ہیں۔ پاکستان کی کئی بین الاقوامی ایجنسیوں نے حکومت سے رابطہ کیا ہے اور کہا ہے کہ وہ زمینی سرحد سے ہندوستانی کھانے پینے کی اشیاء لانے کی اجازت دے۔ اب وزیر خزانہ نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ اس کے لیے حکومت اپنے اتحادیوں کے ساتھ مشاورت سے فیصلہ کرے گی۔ ادھر پاکستان نے خوراک کے بحران کے پیش نظر ایران اور افغانستان سے پیاز اور ٹماٹر درآمد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Russia Ukraine War: زاپوریزیا کے لئے آگے بڑھا آئی اے ای اے کارواں، یوکرین کے 48ٹینک تباہ

      یہ بھی پڑھیں:
      پاکستان کے حالات پر PM مودی نے کیا ایسا ٹوئٹ، شہباز شریف کو کہنا پڑا ’شکریہ‘

      Pakistan Flood:پاکستان میں سیلاب سے تباہی، ہیلی کاپٹر نہیں پہنچاپارہے مدد

      6.5 لاکھ سے زیادہ حاملہ خواتین کو دیکھ بھال کی شدید ضرورت
      پاکستان کے سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں 6.5 لاکھ حاملہ خواتین کو اس آفت سے نمٹنے کے لیے فوری دیکھ بھال کی اشد ضرورت ہے۔ اقوام متحدہ کے پاپولیشن فنڈ (UNFPA) نے خبردار کیا ہے کہ اس سیلاب کے دوران ملک میں صنفی بنیاد پر تشدد کا خطرہ بھی بڑھ گیا ہے کیونکہ تین ماہ کے دوران پاکستان بھر میں سیلاب سے تقریباً 10 لاکھ مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔ 6.5 لاکھ حاملہ خواتین میں سے 73,000 کی اگلے مہینے ڈیلیوری ہونا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: