ہوم » نیوز » عالمی منظر

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے مانا حکومت کی لاپرواہی سے بڑھی چینی، گیہوں کی قیمتیں

پاکستان میں ضروری اجناس بالخصوص آٹا اور چینی کی آسمان چھوتی قیمتوں کو لے کر اپوزیشن کے نشانے پر آئے وزیر اعظم عمران خان نے اعتراف کیا کہ حکومت کی لاپرواہی کی وجہ سے مہنگائی بڑھی ہے۔ پاکستان میں آٹا اور چینی کی قیمتیں فی الحال آسمان چھو رہی ہیں اور لوگوں کو خاصی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

  • Share this:
پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان  نے مانا حکومت کی لاپرواہی سے بڑھی چینی، گیہوں کی قیمتیں
پاکستان میں ضروری اجناس بالخصوص آٹا اور چینی کی آسمان چھوتی قیمتوں کو لے کر اپوزیشن کے نشانے پر آئے وزیر اعظم عمران خان نے اعتراف کیا کہ حکومت کی لاپرواہی کی وجہ سے مہنگائی بڑھی ہے۔ پاکستان میں آٹا اور چینی کی قیمتیں فی الحال آسمان چھو رہی ہیں اور لوگوں کو خاصی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

پاکستان میں ضروری اجناس بالخصوص آٹا اور چینی کی آسمان چھوتی قیمتوں کو لے کر اپوزیشن کے نشانے پر آئے وزیر اعظم عمران خان نے اعتراف کیا کہ حکومت کی لاپرواہی کی وجہ سے مہنگائی بڑھی ہے۔ پاکستان میں آٹا اور چینی کی قیمتیں فی الحال آسمان چھو رہی ہیں اور لوگوں کو خاصی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ لاہور کے ایک روزہ دورہ میں صحت سہولت کارڈ کے اجرا کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ’’میں چینی اور آٹے کے حالیہ بحران میں حکومت کی کوتاہی کو قبول کرتا ہوں اور بحران پیدا کرنے والے ذمہ داران کے خلاف سخت کارروائی ہوگئی۔‘‘

انہوں نے کہا کہ’’تحقیقات کا عمل جاری ہے جس کی گرفت سے کوئی نہیں بچ پائے گا‘‘۔ خیال رہے کہ پاکستان میں آٹے اور چینی کے بحران کی وجہ سے ان کی قیمتوں میں غیرمعمولی اضافہ ہوگیا ہے اور مختلف صوبوں میں کہیں آٹا دستیاب نہیں اور کہیں اس کی قیمت عوام کی قوت خرید سے باہر ہے۔مذکورہ بحران کے پیش نظر اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے ریگولیٹری ڈیوٹی کے بغیر 3 لاکھ ٹن گندم کی درآمد کی اجازت دی تھی۔

وفاقی وزیر برائے خوراک خسرو بختار نے پنجاب حکومت کی جانب سے بین الصوبائی نقل و حرکت پر پابندی اور کراچی میں ٹرانسپورٹرز کی جاری ہڑتال کو سندھ اور خیبرپختونخوا میں آٹے کے بحران کی اہم وجہ قرار دیا تھا۔

First published: Feb 16, 2020 11:55 AM IST