ہوم » نیوز » معیشت

دھماکیدار آفر: 809  روپئے کا LPG Gas Cylinder صرف 9 روپئے میں مل جائے گا! یہاں جانیں کیسے

گھریلو گیس سلینڈر خریدنے کیلئے پے ٹی ایم (Paytm) اپنے کسٹمرس کے لئے شاندار آفر لیکر آیا ہے۔ اس آگر کے تحت کسٹمرس کو 809 روپئے والا گیس سلینڈر صرف 9 روپئے میں مل سکتا ہے

  • Share this:
دھماکیدار آفر: 809  روپئے کا LPG Gas Cylinder صرف 9 روپئے میں مل جائے گا! یہاں جانیں کیسے
گھریلو گیس سلینڈر خریدنے کیلئے پے ٹی ایم (Paytm) اپنے کسٹمرس کے لئے شاندار آفر لیکر آیا ہے۔ اس آگر کے تحت کسٹمرس کو 809 روپئے والا گیس سلینڈر صرف 9 روپئے میں مل سکتا ہے

اپریل سے ایل پی جی گیس سلیںڈر (LPG Gas Cylinder) کی قیمت گھٹ گئی ہیں۔ ایل پی جی گیس سلینڈر کی قیمت (LPG Price) میں 10 روپئے کی کٹوتی کی گئی ہے۔ اس کے بعد دہلی میں بغیر سبسڈی والے 14.2 کلو گرام کے LPG گیس سلینڈر کی قیمت گھٹ کر 809 روپئے ہو گئی۔ اس کے ساتھ ہی سستے گھریلو گیس سلینڈر خریدنے کیلئے پے ٹی ایم (Paytm) اپنے کسٹمرس کے لئے شاندار آفر لیکر آیا ہے۔ اس آگر کے تحت کسٹمرس کو 809 روپئے والا گیس سلینڈر صرف 9 روپئے میں مل سکتا ہے۔


جانیں کیا ہے آفر؟

پے ٹی ایم (Paytm) نے کیش بیک (Cashback) آفر کی شروعات کی ہے۔ اس کیش بیک آفر کے تحت اگر کوئی کسٹمر گیس سلیںڈر بک کرتا ہے تو اسے 800 روپئت تک کا کیش بیک مل سکتا ہے۔ بتادیں کہ پے ٹی ایم (Paytm) کا یہ آفر 30 اپریل تک کیلئے ہے۔ یعنی اس پورے ماہ میں آپ کے پاس سستے ایل پی جی گیس سلینڈر کو خریدنے کا موقع ہے۔


آفر حاصل کرنے کے لئےآپ کو کیا کرنا پڑے گا؟
اگر آپ اس آفر سے فائدہ اٹھانا چاہتے ہیں تو پہلے آپ کو اپنے موبائل فون میں پے ٹی ایم ایپ ڈاؤن لوڈ کرنا ہوگا۔ اس کے بعد اہنی گیس ایجنسی سے سلینڈر بکنگ کرنی ہوگی۔ اس کے لئے پے ٹی ایم ایپ (Paytm) میںShow more پر جائیں اور کلک کریں ، پھر ریچارج اور پے بل Recharge and Pay Bills پر کلک کریں۔ اس کے بعد آپ کو سلینڈر بک book a cylinder کرنے کا آپشن نظر آئے گا۔ یہاں اپنے گیس پروائیڈر کو سلیکٹ کریں۔ بکنگ سے پہلے آپ کو FIRSTLPG کا پرومو کوڈ ڈالنا ہوگا۔ بکنگ کے 24 گھنٹوں کے اندر آپ کو کیش بیک سکریچ کارڈ مل جائے گا۔ اس سکریچ کارڈ کو 7 دن کے اندر استعمال کرنا ہے۔

ملک کی سب سے بڑی آئل کمپنی آئی او سی کے مطابق دہلی میں بغیر سبسڈی والے 14.2 کلو کے گیس سلینڈ کی قیمت اب 644 روپے ہوگئی ہے ۔ کولکاتہ میں یہ 670.50 روپے ، ممبئی میں 644 روپے اور چنئی میں 660 روپے ہوگئی ہے ۔


مفت ایل پی جی کنکشن کے بدلیں گے قواعد۔
اگر آپ بھی(Ujjwala scheme) کے تحت مفت ایل پی جی LPG گیس کنیکشن (free LPG connection) لینے کا سوچ رہے ہیں تو آپ کے لئے یہ خبر بہت اہم ہے۔ حکومت جلد ہی (Ujjwala scheme) کے تحت ملنے والی سبسڈی کے (structure) میں تبدیلیاں کر سکتی ہے۔ منی کنٹرول کی خبر کے مطابق ، وزارت پٹرولیم 2 نئے ڈھانچے (structure) پر کام کر رہا ہے اور اسے جلد ہی جاری کیا جاسکتا ہے۔ مرکزی حکومت نے اس بجٹ میں ایک کروڑ نئے کنکشن دینے کا اعلان کیا تھا ، لیکن اب حکومت او ایم سی ایس OMCs کی جانب سے ایڈوانس پیمنٹ ماڈل میں تبدیلی کر سکتی ہے۔

اب 14.2 کلو گرام والے بغیر سبسڈی ایل پی جی گیس سلینڈر کیلئے آپ کو مزید 25 روپے ادا کرنے ہوں گے ۔ یہ قیمت آج سے لاگو ہوگی ۔ اسی کے ساتھ قیمتوں میں اضافہ کے بعد دہلی میں گھریلو گیس کے دام 794 سے بڑھ کر 819 روپے ہوگیا ہے ۔(علامتی تصویر)
ملتا ہے 14.2 کلو والا سلینڈر اور گیس چولہا۔۔


ملتا ہے 14.2 کلو والا سلینڈر اور گیس چولہا۔۔
اس سرکاری اسکیم میں ، صارفین کو 14.2 کلوگرام کا سلینڈر اور گیس چولہادیا جاتا ہے۔۔ اس کی لاگت تقریبا 3200 روپے ہوتی ہے اور اس پر حکومت کی جانب سے 1600 روپے کی سبسڈی ملتی ہے جبکہ او ایم سی ایس 1600 روپے ایڈوانس کے طوور دیتی ہیے۔حالانکہ OMCs ری فل کرانے پر سبسڈی کی رقم ای ایم آئی EMI کے طور پر وصول کی جاتی ہے۔

اس طرح آپ اس اسکیم میں رجسٹریشن کرا سکتے ہیں
اس اسکیم کے لئے رجسٹریشن کروانا بہت آسان ہے۔ (Ujjwala scheme) کے تحت گیس کنکشن کیلئے بی پی ایل BPL کنبے سے تعلق رکھنے والی کوئی خاتون گیس کنکشن حاصل کرنے کے لئے درخواست دے سکتی ہے۔ آپ خود اس اسکیم سے وابستہ سرکاری ویب سائٹ pmujjwalayojana.com پر جا کر تفصیلی معلومات حاصل کرسکتے ہیں۔ رجسٹریشن کے لئے آپ کو سب سے پہلے ایک فارم بھرنا ہوگا اور قریبی ایل پی جی LPG ڈسٹریبیوٹر کے پاس جمع کروانا ہوگا۔

اس کے علاوہ اس فارم میں خاتون کو اپنا مکمل پتہ، جن دھن بینک اکاؤنٹ اور کنبے کے تمام ممبروں کا آدھار نمبر بھی فراہم کرنا ہوگا۔ اس پروسیز کے بعد میں ملک کی آئل مارکیٹنگ کمپنیاں اہل فائدہ اٹھانے والوں کو ایل پی جی کنکشن (LPG connection) جاری کرتی ہیں۔ اگر کوئی صارف EMI کا انتخاب کرتا ہے تو پھر سلینڈر پر دی جانے والی سبسڈی میں EMI کی رقم ایڈجسٹ کردی جاتی ہے۔
Published by: Sana Naeem
First published: Apr 04, 2021 12:40 PM IST