ہوم » نیوز » معیشت

صرف جون ماہ کے 12 دن میں پٹرول۔ڈیزل اتنا ہوا مہنگا، کئی شہروں میں 105 روپئے فی لیڑ کے پار

گزشتہ4 مئی سے اب تک 23 دن پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ کیا گیا ہے ، جبکہ بقیہ 17 دنوں میں قیمتوں میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے۔ اس عرصے کے دوران دہلی میں پٹرول 5.72 روپے اور ڈیزل 6.25 روپے مہنگا ہو چکا ہے۔

  • Share this:
صرف جون ماہ کے 12 دن میں پٹرول۔ڈیزل اتنا ہوا مہنگا، کئی شہروں میں 105 روپئے فی لیڑ کے پار
گزشتہ4 مئی سے اب تک 23 دن پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ کیا گیا ہے ، جبکہ بقیہ 17 دنوں میں قیمتوں میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے۔ اس عرصے کے دوران دہلی میں پٹرول 5.72 روپے اور ڈیزل 6.25 روپے مہنگا ہو چکا ہے۔

اس وقت پٹرول ڈیزل کے دام میں جم کر اضافہ ہو رہا ہے۔ صرف جون ماہ کے 12 دنوں کی بات کی جائے تو اتنے میں ہی پٹرول تقریبا دو روپئے مہنگا ہو گیا۔ اس بڑھوتری کے بعد ملک کے کئی شہروں میں پٹرول 105 روپئے کے پار پہنچ گیا ہے۔ آئل مارکیٹنگ کمپنیوں نے پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں (Petrol-Diesel Price Today) میں ہفتے کے روز مسلسل دوسرے دن اضافہ کیا،جس سے دہلی اور کولکتہ میں پہلی بار پٹرول 96 روپے فی لیٹر سے تجاوز کر گیا ۔ ملک کے چار بڑے شہروں میں آج پٹرول 27 پیسے اور ڈیزل 24 پیسے تک مہنگا ہوگیا۔


معروف آئل مارکیٹنگ کمپنی انڈین آئل کارپوریشن کے مطابق دہلی میں پٹرول 27 پیسے مہنگا ہو کر 96.12 روپے اور ڈیزل 23 پیسے مہنگا ہو کر 86.98 روپے فی لیٹر مہنگا ہوگیا۔


گزشتہ4 مئی سے اب تک 23 دن پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ کیا گیا ہے ، جبکہ بقیہ 17 دنوں میں قیمتوں میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے۔ اس عرصے کے دوران دہلی میں پٹرول 5.72 روپے اور ڈیزل 6.25 روپے مہنگا ہو چکا ہے۔


ممبئی میں پٹرول میں 26 پیسے اور ڈیزل میں 24 پیسے کا اضافہ کیا گیا۔ اس کے ساتھ ہی پٹرول کی قیمت 102.30 روپے اور ڈیزل کی قیمت 94.39 روپے فی لیٹر تک پہنچ گئی۔

چنئی میں پٹرول 24 پیسے مہنگا ہوکر 97.43 روپے اور ڈیزل 22 پیسے مہنگا ہو کر 91.64 روپے فی لیٹر فروخت ہوا۔  کولکاتہ میں پٹرول 26 پیسے اور ڈیزل 23 پیسے بڑھا ہے ۔ وہاں ایک لیٹر پٹرول 96.06 روپے اور ڈیزل 89.83 روپے فی لیٹر پر پہنچ گیا۔ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں کا یومیہ جائزہ لیا جاتا ہے اور اسی بنیاد پر روزانہ صبح 6 بجے سے نئی قیمتیں لا گو ہو جاتی ہیں ۔

جانیں اپنے شہر میں پٹرول ڈیزل کی قیمتیں
>> دہلی۔ 96.12 روپے فی لیٹر جبکہ ڈیزل 86.98 روپے فی لیٹر ہے۔
>> ممبئی ۔10.30 روپے فی لیٹر ، ڈیزل 94.39 روپے فی لیٹر ہے۔
>> کولکتہ۔ 96.06 روپے فی لیٹر ، ڈیزل 89.83 روپے فی لیٹر ہے۔
>> چنئی - فی لیٹر 97.43 روپے ، ڈیزل 91.64 روپے فی لیٹر ہے۔
>> بنگلورو - فی لیٹر 99.33 روپے ، ڈیزل 92.21 روپے فی لیٹر ہے۔
>> نوئیڈا۔ 93.46 روپے فی لیٹر ، ڈیزل 87.46 روپے فی لیٹر ہے۔

ان شہروں میں 100 کے پار
>> جے پور - فی لیٹر 102.73 روپے ، ڈیزل 95.92 روپے فی لیٹر ہے۔
>> بھوپال ۔104.29 روپے فی لیٹر ، ڈیزل 95.60 روپے فی لیٹر ہے۔
>> سرینگا نگر - 107.22 روپے فی لیٹر ، ڈیزل 100.05 روپے فی لیٹر ہے۔
>> ریوا - 106.51 روپے فی لیٹر ، ڈیزل 97.65 روپے فی لیٹر ہے۔

پٹرول-ڈیزل کی قیمتیں کیوں بڑھ رہی ہیں؟

در اصل، ہندوستان میں پٹرول۔ ڈیزل کی خوردہ قیمت، عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت پر منحصر ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اگر عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت کم ہے تو ہندوستان میں پٹرول ڈیزل سستا ہوگا۔ اگر خام تیل کی قیمت میں اضافہ ہوتا ہے تو پٹرول - ڈیزل کی قیمت میں اضافہ ہوگا لیکن ایسا ہر بار نہیں ہوتا ہے۔ جب عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت میں اضافہ ہوتا ہے تو ، اس کا بوجھ صارفین پر ڈال دیا جاتا ہے ، لیکن جب خام تیل کی قیمت کم ہوتی ہے تو ، حکومت اپنی محصول میں اضافے کے لئے صارفین پر ٹیکس عائد کرتی ہے۔

جانئے، پٹرول۔ ڈیزل کی قیمتیں کس طرح روزانہ گھٹتی۔بڑھتی رہتی ہیں

خیال رہے کہ پٹرول۔ ڈیزل کی قیمتیں ہر دن گھٹتی اور بڑھتی رہتی ہیں۔ پٹرول۔ ڈیزل کی نئی قیمت صبح 6 بجے سے نافذ ہو جاتی ہے۔ ان کی قیمت میں ایکسائز ڈیوٹی اور ڈیلر کمیشن سب کچھ جوڑنے کے بعد قیمت تقریبا دوگنی ہو جاتی ہے۔ پٹرول۔ ڈیزل کی روز کی قیمت آپ ایس ایم ایس کے ذریعہ بھی جان سکتے ہیں۔
آپ ایس ایم ایس کے ذریعے پٹرول ڈیزل کی قیمت معلوم کرسکتے ہیں۔ پٹرول ڈیزل کی قیمتوں کو روزانہ صبح 6 بجے اپ ڈیٹ کیا جاتا ہے۔ انڈین آئل کی ویب سائٹ کے مطابق ، آپ کو اپنے شہر کا کوڈ آر ایس پی کے ساتھ ٹائپ کرنا ہوگا اور 9224992249 نمبر پر ایس ایم ایس کرنا ہے۔ ہر شہر کا کوڈ مختلف ہے۔ آپ اسے آئی او سی ایل کی ویب سائٹ سے دیکھ سکتے ہیں۔ اسی کے ساتھ ہی ، آپ اپنے شہر میں پٹرول ڈیزل کی قیمت بھی بی پی سی ایل کسٹمر آر ایس پی 9223112222 اور ایچ پی سی ایل کسٹمر ایچ پی پرائس کو 9222201122 میسج بھیج کر معلوم کرسکتے ہیں
Published by: Sana Naeem
First published: Jun 12, 2021 11:20 AM IST