ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

فائزر کی جانب سے کووڈ۔19ویکسین کی منظوری کے لیے ہندوستان کے ساتھ مذاکرات جاری

فائزر بائیو این ٹیک کے سربراہ البرٹ بورلا (Albert Bourla) نے کہا ہے کہ’’بدقسمتی سے ہماری ویکسین ہندوستان میں رجسٹرڈ نہیں ہے حالانکہ ہماری درخواست مہینوں قبل جمع کروائی گئی تھی۔ ہم فی الحال ہندوستانی حکومت سے ہمارے فائیزر بائیو ٹیک ٹیکوں کو ملک میں استعمال کے لئے منظوری کے ایک تیز رفتار راستے پر تبادلہ خیال کر رہے ہیں‘‘۔

  • Share this:
فائزر کی جانب سے کووڈ۔19ویکسین کی منظوری کے لیے ہندوستان کے ساتھ مذاکرات جاری
فائزر کی کورونا ویکسین

فائزر بائیو این ٹیک (Pfizer-BioNTech) ہندوستان میں اپنی کووڈ۔19 ویکسین کی فراہمی اور منظوری کے لیے تیز رفتار انداز میں ہندوستانی حکومت سے بات چیت کر رہا ہے۔فائزر بائیو این ٹیک کے سربراہ البرٹ بورلا (Albert Bourla) نے پیر اس بات کی اطلاع دی ہے۔ جبکہ فرم کا کہنا ہے کہ وہ 70 ملین امریکی ڈالر (510 کروڑ روپے سے زائد) کی ادویات ہندوستان میں COVID-19 مریضوں کے علاج کے لیے عطیہ کررہی ہے۔انہوں نے فائزر انڈیا (Pfizer India) کے ملازمین کو بھیجے گئے خط میں کہا ہے کہ ’’ہمیں ہندوستان میں کورونا وائرس کی نازک صورتحال سے گہری تشویش ہے۔ ہمارے دل آپ اور آپ کے چاہنے والوں اور تمام ہندوستانی عوام کے سامنے محبت کے لیے بے قرار ہیں‘‘۔


انہوں نے مزید کہا کہ فائزر اس مرض کے خلاف ہندوستان کی لڑائی میں شراکت دار ہونے کے لئے پرعزم ہیں اور کمپنی کی تاریخ میں سب سے بڑی انسانی امدادی کوششوں کو متحرک کرنے کے لئے تیزی سے کام کر رہے ہیں۔فائزر بائیو این ٹیک کے سربراہ البرٹ بورلا نے کہا ہے کہ ’’ابھی، امریکہ، یورپ اور ایشیا میں تقسیم کار مراکز میں فائزر اور اس کے شراکت دار دوائیں بھیجنے کے کام کے لیے سخت مشقت کررہے ہیں جن کی حکومت ہند نے اپنے کووڈ ٹریٹمنٹ پروٹوکول کے ایک حصے کے طور پر نشاندہی کی ہے‘‘۔



فائزر نے اس بات کی بھی یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ اپنی دوائوں کا عطیہ کرے گا۔ تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ ہندوستان کے ہر سرکاری اسپتال میں ہر کووڈ۔19 مریض کو کمپنی کی دوائیوں تک بلا معاوضہ رسائی حاصل ہو۔ انہوں نے مزید کہا کہ’’ 70 ملین امریکی ڈالر سے زیادہ کی قیمت کی یہ دوائیں فوری طور پر دستیاب کی جائیں گی۔ ہم حکومت اور ہماری این جی او کے شراکت داروں کے ساتھ مل کر کام کریں گے تاکہ انھیں جہاں ضرورت ہے وہاں پہنچ جائیں‘‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہماری یہ کوشش فائزر فاؤنڈیشن کی مالی اعانت کے طور پر ہے۔ جو ہندوستان کو وینٹیلیٹر، آکسیجن اور ضروری ادویات کے ذریعہ انسانی ہمدردی پر مبنی تنظیموں کی مدد کرتی ہے۔ یہ اب تک کا ہمارا سب سے بڑا انسانی امدادی کا اقدام ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ کمپنی اس بات سے بھی واقف ہے کہ اس وبائی بیماری کے خاتمے کے لئے ویکسین تک رسائی ناگزیر ہے۔

فائزر بائیو این ٹیک کے سربراہ البرٹ بورلا (Albert Bourla) نے کہا ہے کہ’’بدقسمتی سے ہماری ویکسین ہندوستان میں رجسٹرڈ نہیں ہے حالانکہ ہماری درخواست مہینوں قبل جمع کروائی گئی تھی۔ ہم فی الحال ہندوستانی حکومت سے ہمارے فائیزر بائیو ٹیک ٹیکوں کو ملک میں استعمال کے لئے منظوری کے ایک تیز رفتار راستے پر تبادلہ خیال کر رہے ہیں‘‘۔

’’فائزر اس وقت ہندوستان اور دنیا بھر میں COVID-19 سے متاثرہ تمام افراد کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتا ہے۔ ہم ان سب کو مدد فراہم کرنے کے لئے ہر ممکن کوشش کرتے رہیں گے‘‘۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: May 04, 2021 11:18 AM IST