உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    RBI Monetary Policy: آر بی آئی نےشرح سود میں کوئی تبدیلی نہیں کی، جانئے اس کاآپ کی جیب پرکیسے پڑےگااثر

    Youtube Video

    آر بی آئی کے گورنر نے صاف کہہ دیا ہے کہ اب مرکزی بینک کی ترجیح مہنگائی کو روکنا ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ بڑھتی ہوئی مہنگائی کو دیکھتے ہوئے آر بی آئی آنے والے دنوں میں قرض مہنگا کر سکتا ہے، مانا جا رہا ہے کہ جب آر بی آئی اگلی قرض پالیسی کا اعلان کرے گا تو شرح سود میں تبدیلی آئے گی اور قرض بھی مہنگا ہو سکتا ہے

    • Share this:
      RBI Monetary Policy: آر بی آئی نے مالی سال2022-23کے لیے پہلی دو ماہی قرض کی پالیسی پر نظرثانی کا اعلان کردیا گیاہے۔ جس میں شرح سود میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے۔ مانیٹری پالیسی کا اعلان کرتے ہوئے آر بی آئی کے گورنر شکتی کانت داس (RBI Governor Shakti Kant Das)نے کہا کہ ریپو ریٹ کو 4 فیصد پر رکھا گیا ہے۔جس کا مطلب ہے کہ بڑھتی ہوئی مہنگائی کے پیش نظر سود کی شرح مہنگی ہونے کا امکان فی الحال رک گیا ہے۔ جن لوگوں نے بینک سے قرض لیا ہے۔ان کی EMI فی الحال مہنگی نہیں ہونے والی ہے اور جو لوگ ہوم لون یا کورل لون لینے کا سوچ رہے ہیں، انہیں فی الحال سستے قرض کا فائدہ ملتا رہے گا۔

       مزید پڑھیں


      فی الوقت قرضے سستے ہوں گے۔پراپرٹی ڈویلر ،ہو سکتا ہے مکانوں کی قیمتوں میں اضافہ کر رہے ہوں، آٹوموبائل کمپنیاں ،گاڑیوں کی قیمتیں بڑھا رہی ہوں تعلیمی ادارے بھلے ہی اضافی تعلیمی فیس لے رہے ہوں لیکن آر بی آئی کے سود کی شرح میں تبدیلی نہ کرنے کے فیصلے کی وجہ سے، ہوم لون، کار لون یا تعلیمی قرض فی الحال مہنگا نہیں ہوگا۔

      بڑھتی ہوئی مہنگائی تشویش کا باعث بنی ہوئی ہے۔تاہم یہ سوال اٹھائے جا رہے ہیں کہ یہ صورتحال کب تک جاری رہے گی کیونکہ آر بی آئی کے گورنر شکتی کانت داس نے مانیٹری پالیسی کا اعلان کرتے ہوئے سال 2022-23 کے لیے افراط زر کی شرح 5.7 فیصد رہنے کا اندازہ لگایا ہے، جو 2021-22 میں 4.5 فیصد رہاتھا۔ تاہم، فی الحال خوردہ افراط زر کی شرح RBI کے 6 فیصد کے تخمینہ سے کہیں زیادہ ہے۔ اشیاء کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے مہنگائی میں اضافے کا امکان ہے۔
       

      آنے والے دنوں میں قرضے مہنگے ہو سکتے ہیں

      ؎آر بی آئی کے گورنر نے صاف کہہ دیا ہے کہ اب مرکزی بینک کی ترجیح مہنگائی کو روکنا ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ بڑھتی ہوئی مہنگائی کو دیکھتے ہوئے آر بی آئی آنے والے دنوں میں قرض مہنگا کر سکتا ہے، مانا جا رہا ہے کہ جب آر بی آئی اگلی قرض پالیسی کا اعلان کرے گا تو شرح سود میں تبدیلی آئے گی اور قرض بھی مہنگا ہو سکتا ہے۔ اس کا اشارہ اس حقیقت سے بھی لگایا جا سکتا ہے کہ بینک قرضوں پر نہیں بلکہ ڈپازٹس پر شرح سود میں مسلسل اضافہ کر رہے ہیں۔ لیکن بچتوں پر سود کی بڑھتی ہوئی شرح کا مطلب یہ ہے کہ آنے والے دنوں میں قرض بھی مہنگا ہونے والا ہے۔

      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: