உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    RBI: ریزروبینک آف انڈیانےریپو ریٹ میں کیااضافہ، ہوم لون پر آپ کی EMIs میں کتناہوگااضافہ؟

    آر بی آئی کے گورنر شکتی کانت داس

    آر بی آئی کے گورنر شکتی کانت داس

    آر بی آئی کے گورنر نے مزید کہا کہ اگر مانسون نارمل رہتا ہے اور عالمی سطح پر خام تیل کی قیمتیں 105 ڈالر فی بیرل کے نشان کو عبور نہیں کرتی ہیں تو رواں مالی سال کے لیے ہندوستان کی افراط زر کا تخمینہ 6.7 فیصد رہے گا۔

    • Share this:
      ریپو شرح میں اضافہ (Repo rate hike): ریزرو بینک آف انڈیا (Reserve Bank of India) نے بڑھتی ہوئی افراط زر پر قابو پانے کی کوشش میں ریپو ریٹ میں ایک بار پھر 50 بیسس پوائنٹس کا اضافہ کیا ہے۔ ریزرو بینک آف انڈیا کی پالیسی ریٹ میں اضافے کے بعد چار مہینوں میں ریپو ریٹ 5.40 فیصد کی وبائی مرض سے پہلے کی سطح پر پہنچ گیا ہے۔ مانیٹری پالیسی کمیٹی کے فیصلے کی وضاحت کرتے ہوئے شکتی کانت داس (Shaktikanta Das) نے کہا کہ صارفین کی قیمتوں میں افراط زر غیر آرام دہ حد تک بلند ہے۔

      آر بی آئی کے گورنر نے مزید کہا کہ اگر مانسون نارمل رہتا ہے اور عالمی سطح پر خام تیل کی قیمتیں 105 ڈالر فی بیرل کے نشان کو عبور نہیں کرتی ہیں تو رواں مالی سال کے لیے ہندوستان کی افراط زر کا تخمینہ 6.7 فیصد رہے گا۔

      ریپو ریٹ کیا ہے؟

      ریپو ریٹ وہ شرح ہے جس پر آر بی آئی بینکوں کو قرض دیتا ہے۔ اگر ریپو ریٹ زیادہ ہوتا ہے، تو بینکوں کے پاس قرض دینے کے لیے کم رقم ہوتی ہے، جس کے نتیجے میں لوگوں کی قوت خرید کم ہوتی ہے۔ قوت خرید میں کمی طلب کو کم کرتی ہے جس کے نتیجے میں مہنگائی کم ہوتی ہے۔

      ریزرو بینک آف انڈیا نے ترقی کو تیز کرنے کے لیے ریپو ریٹ کو کم رکھا جو عالمی معیشت پر کورونا وبا کے اثرات کی وجہ سے رک گیا تھا۔ لیکن چونکہ افراط زر اپنی رفتار 6 فیصد سے زیادہ برقرار رکھے ہوئے ہے، اس لیے آر بی آئی کو پالیسی ریٹ بڑھانے پر مجبور کیا گیا۔

      آر بی آئی کے فیصلے کا مطلب ہے کہ ہاؤسنگ لون اور کار لون دینے والے ای ایم آئی میں اضافہ کریں گے۔ یہ ایک سال میں تیسرا موقع ہوگا جب سرکردہ بینک ای ایم آئی میں اضافہ کریں گے۔

      آپ کے ای ایم آئی پر ریپو ریٹ میں اضافے کا کیا اثر پڑے گا؟

      یہ بھی پڑھیں:

      چیف جسٹس آف انڈیا این وی رمنا کے بعد اگلے CJI کون؟ جسٹس ادے امیش للت کی سفارش

      اگر آپ نے 20 سال کے لیے 30 لاکھ روپے کا ہوم لون لیا ہے تو آپ کی شرح سود 7.55 فیصد سے بڑھ کر 8.05 فیصد ہو جائے گی۔ اس صورت میں آپ کی ای ایم آئی 24,200 روپے سے بڑھ کر 25,100 روپے ہو جائے گی، جو کہ 900 روپے کا بھاری اضافہ ہے۔ یہ تقریباً 30 روپے فی لاکھ کا اضافہ ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Covid-19: کورونا نے پھر بڑھائی تشویش، کیا آنے والی ہے نئی لہر؟ ماہرین نے کہی یہ بات

      اسی طرح اگر آپ نے 20 سال کے لیے 40 لاکھ روپے کا قرض لیا ہے، تو آپ کی ای ایم آئی میں 1200 روپے کا اضافہ ہونے کا امکان ہے۔ جن لوگوں کے ہوم لون کی رقم 50 لاکھ روپے ہے، ان کی ای ایم آئی میں 1500 روپے کا اضافہ ہوگا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: