உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    RBI Monetary Policy Key Decisions:پالیسی جات شرحوں میں کوئی تبدیلی نہیں

    علامتی تصویر

    علامتی تصویر

    ریپو ریٹ کو چار فیصد، ریورس ریپور ریٹ کو 3.35 فیصد، مارجنل اسٹینڈنگ فیسیلِٹی ریٹ کو 4.25 فیصد اور بینک ریٹ کو 4.25 فیصد مستحکم رکھا گیا ہے۔ نقد ریزرو تناسب چار فیصد اور ایس ایل آر 18فیصد پر رہے گا۔

    • Share this:
      مہنگائی بڑھنے اور کورونا کی دوسری لہر کے بعد معاشی معمولات کے پٹری پر لوٹنے کا حوالہ دیتے ہوئے ریزرو بینک آف انڈیا (آر بی آئی) نے ریپو ریٹ اور دیگر پالیسی جات شرحوں کو جوں کے توں رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

      آر بی آئی گورنر شکتی کانت داس کی صدارت میں آر بی آئی کی مانیٹری پالیسی کمیٹی کی آج ختم سہ روزہ میٹنگ میں تمام پالیسی جات شرحوں کو بغیر تبدیلی کے رکھنے کا فیصلہ کیا گیا۔ ریپو ریٹ کو چار فیصد، ریورس ریپور ریٹ کو 3.35 فیصد، مارجنل اسٹینڈنگ فیسیلِٹی ریٹ کو 4.25 فیصد اور بینک ریٹ کو 4.25 فیصد مستحکم رکھا گیا ہے۔ نقد ریزرو تناسب چار فیصد اور ایس ایل آر 18فیصد پر رہے گا۔


      میٹنگ کے بعد مسٹر داس نے بتایا کہ مالی سال 2021-22 میں حقیقی جی ڈی پی کی ڈیویلپمنٹ ریٹ 9.5 فیصد رہنے کی امید ہے۔ معیشت دھیرے دھیرے پٹری پر آ رہی ہے۔ ساتھ ہی امسال کچھ تاخیر کے بعدمانسون میں بہتری ہونے سے خریف کی بوائی میں تیزی آئی ہے۔ آنے والے دنوں میں کووڈ-19 ٹیکہ کاری بھی رفتار پکڑے گی۔ یہ سبھی وجوہات معیشت کو رفتار دیں گے۔

      ریزرو بینک آف انڈیا نے رواں مالی سال کی شرح نمو 9.5 فیصد پر برقرار رہنے کی پیش گوئی کی ہے۔ تاہم ، یہ تخمینہ مختلف حلقوں کے لیے تبدیل کیا گیا ہے۔ جون سہ ماہی میں شرح نمو کا تخمینہ 18.5 فیصد سے بڑھ کر 21.4 فیصد ہو گیا ہے۔ ستمبر کی سہ ماہی میں شرح نمو کی پیش گوئی 7.9 فیصد سے کم ہو کر 7.3 فیصد رہ گئی ہے۔ دسمبر کی سہ ماہی میں ترقی کی شرح 7.2 فیصد کے مقابلے میں 6.3 فیصد رہ گئی ہے اور چوتھی سہ ماہی (جنوری تا مارچ 2022) کی شرح نمو 6.6 فیصد کے مقابلے میں 6.1 فیصد رہ گئی ہے۔ یہ شرح نمو سالانہ بنیادوں پر ہے۔


      بڑھتی ہوئی افراط زر کے درمیان ، ریزرو بینک نے کنزیومر پرائس انڈیکس (CPI) یعنی خوردہ افراط زر کے تخمینے پر نظر ثانی کی ہے۔ گزشتہ مالی سال کے لیے افراط زر کی پیش گوئی 5.1 فیصد سے بڑھا کر 5.7 فیصد کر دی گئی ہے۔ رواں مالی سال کی دوسری سہ ماہی کے لیے سی پی آئی کو 5.4 فیصد سے 5.9 فیصد ، تیسری سہ ماہی کے لیے خوردہ افراط زر کو 4.7 فیصد سے 5.3 فیصد اور چوتھی سہ ماہی کے لیے 5.3 فیصد سے 5.8 فیصد کیا گیا ہے۔ دیا گیا ہے۔ مالی سال 2022-23 کی پہلی سہ ماہی کے لیے افراط زر کی پیشن گوئی 5.3 فیصد سے بڑھ کر 5.8 فیصد ہو گئی ہے۔

      یو این آئی ان پٹ کے ساتھ 
      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: