உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    RIL Q2 Result : منافع 46 فیصد اچھل کر 15479 کروڑ روپے پر رہا ، انکم میں بھی 50 فیصد کا اضافہ

    RIL Q2 Result : منافع 46 فیصد اچھل کر 15479 کروڑ روپے پر رہا ، انکم میں بھی 50 فیصد کا اضافہ

    RIL Q2 Result : منافع 46 فیصد اچھل کر 15479 کروڑ روپے پر رہا ، انکم میں بھی 50 فیصد کا اضافہ

    کمپنی کے چیئرمین اور مینجنگ ڈائریکٹر مکیش امبانی نے اس موقع پر کہا کہ مالی سال 2022 کی دوسری سہ ماہی میں کمپنی کی کارکردگی کافی مضبوط رہی ہے ۔

    • Share this:
      مارکیٹ کیپ کے اعتبار سے ملک کی سب سے بڑی کمپنی ریلائنس انڈسٹریز نے دوسری سہ ماہی کے نتائج اعلان کردئے ہیں ۔ 30 ستمبر 2021 کو ختم ہوئی سہ ماہی میں کمپنی کا منافع 15479 کروڑ روپے پر رہا ہے جبکہ پچھلی یعنی جون کی سہ ماہی میں کمپنی کا منافع 12273 کروڑ روپے رہا تھا ۔ بتادیں کہ دوسری سہ ماہی میں کمپنی کا منافع کے 12480 کروڑ روپے پر رہنے کا اندازہ لگایا گیا تھا ۔

      30 ستمبر 2021 کو ختم ہوئی سہ ماہی میں کمپنی کی کنسولیٹیڈ انکم 1.67  لاکھ کروڑ روپے رہی ہے ۔ غور طلب ہے کہ اسی مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں کمپنی کی کنسولیٹیڈ انکم 1.40 کروڑ روپے رہی تھی جبکہ CNBC TV18 کے تخمینہ پول میں اس کے 1.58 کروڑ روپے رہنے کا اندازہ لگایا گیا تھا ۔

      فیصد کی بنیاد پر دیکھیں تو سالانہ بنیاد پر کمپنی کے منافع میں 46 فیصد کا اضافہ دیکھنے کو ملا ہے ۔ وہیں سہ ماہی کی بنیاد پر اس میں 12.1 فیصد کا اضافہ دیکھنے کو ملا ہے ۔ غور طلب ہے کہ پچھلے سال کی اسی سہ ماہی میں کمپنی کا منافع 10602 کروڑ روپے پر رہا تھا جبکہ سہ ماہی بنیاد پر دیکھیں تو اسی مالی سال کی جون سہ ماہی میں کمپنی کا منافع 13806 کروڑ روپے پر رہا تھا ۔

      وہیں اگر کمپنی کی انکم پر نظر ڈالیں تو فیصد کی بنیاد پر اس میں سالانہ بنیاد پر 49.8 فیصد کا اضافہ دیکھنے کو ملا ہے وہیں سہ ماہی بنیاد پر 20.6 فیصد کا اضافہ دیکھنے کو ملا ۔ دوسری سہ ماہی میں کمپنی کا کنسولیٹیڈ EBITDA  پچھلی سہ ماہی کے 23368 کروڑ روپے سے بڑھ کر 26020 کروڑ روپے پر رہا ہے جبکہ کنسولٹیڈ EBITDA مارجن 15.5 فیصد پر رہا ۔

      کمپنی کے چیئرمین اور مینجنگ ڈائریکٹر مکیش امبانی نے اس موقع پر کہا کہ مالی سال 2022 کی دوسری سہ ماہی میں کمپنی کی کارکردگی کافی مضبوط رہی ہے ۔

      کمپنی کو اس کی اندرونی طاقت کے ساتھ ہی ہندوستانی اور عالمی معیشت میں ہورہی ریکوری کا زوردار فائدہ ملا ہے ۔ ہمارے سبھی بزنس ورٹیکلس کے کاروبار میں پری کووڈ لیول سے زیادہ گروتھ دیکھنے کو ملی ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ کمپنی کی آپریشنل اور مالی کارکردگی کمپنی کے ریٹیل آئل اینڈ کیمیکل اور ڈیجیٹل کاروبار میں آئی مضبوط گروتھ کو دکھاتا ہے ۔

      انہوں نے  مزید کہا کہ کمپنی کے O2C کاروبار کو سبھی پروڈکٹس کی ڈیمانڈ میں آئے زدور اچھال اور ہائر ٹرانسپورٹیشن فیول مارجن کا فائدہ ملا ہے ۔ ریلائنس ریٹیل کے کاروبار میں ڈیجیٹل اور فیزیکل دونوں طرح کے پلیٹ فارموں کے فروغ کا اثر دیکھنے کو ملا ہے ۔اس کی وجہ سے کمپنی کے ریٹیل کاروبار کی آمدنی اور مارجن دونوں میں اضافہ دیکھنے کو ملا ہے ۔

      امبانی نے مزید کہا کہ ریلائنس جیو انڈین برانڈ بینڈ مارکیٹ کے بدلاو کا ذریعہ بنی ہوئی ہے ۔ مستقبل میں یہ انڈسٹری کیلئے نئے معیارات کا تعین کرے گی ۔ غور طلب ہے کہ 19 اکتوبر کو کمپنی کے شیئروں نے 2750 روپے کا نیا ریکارڈ بنایا تھا ۔ کمپنی کا مارکیٹ کیپ 18 لاکھ کروڑ پہنچ گیا تھا ۔

      کمپنی نے حال ہی میں سولر اینرجی کیلئے کئی قرار کئے ہیں ۔ جولائی سے اب تک یہ شیئر 24 فیصدی بڑھا ہے اور اس کا مارکیٹ کیپٹیلائزیشن تقریبا ۔۔۔ کروڑ روپے پہنچ گیا ہے ۔

      DISCLAIMER: Network18 and TV18 – the companies that operate news18urdu.com – are controlled by Independent Media Trust, of which Reliance Industries is the sole beneficiary.
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: