உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia-Ukraine Crisis:جنگ کی وجہ سے مہنگی ہوں گی دوائیں! فارما سیکٹر اور انڈسٹری بحران کا شکار

    روس یوکرین جنگ کا اثر: مہنگی ہوں دوائیاں۔

    روس یوکرین جنگ کا اثر: مہنگی ہوں دوائیاں۔

    Russia-Ukraine Crisis: ایک ہفتے سے جاری جنگ کے دوران اب 470 روپے فی کلو تک پہنچ گیا ہے۔ اسی طرح دیگر خام مال بھی جنگ سے متاثر ہوا اور وہ سب مہنگے داموں میں دستیاب ہیں۔ فارما کمپنی آپریٹرز کا کہنا ہے کہ اگر جلد حالات معمول پر نہ آئے تو فارما سیکٹر کو بڑا دھچکا لگے گا۔ جس کی وجہ سے اسے ٹھیک ہونے میں کافی وقت لگ سکتا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی:روس اور یوکرین کے درمیان جاری جنگ (Russia-Ukraine Crisis) نہ صرف ان دونوں ممالک بلکہ ہندوستان سمیت کئی دوسرے ممالک پر بھی اثر انداز ہو رہی ہے۔ یہاں، اتراکھنڈ کے ہریدوار (Haridwar)کی صنعتوں پر بحران کے بادل چھانے لگے ہیں۔ آنے والے دنوں میں فیکٹریوں میں پیداوار متاثر ہو سکتی ہے، خاص طور پر یوکرین سے درآمد کیے جانے والے خام مال، تیل اور کیمیکلز کی سپلائی بند ہونے کی وجہ سے۔ اس میں بھی فارما سیکٹر (Pharma Sector) کو دھچکا لگا ہے۔ زیادہ تر کمپنیاں دواسازی کیمیکلز اور پیکیجنگ کے خام مال کے لیے روس-یوکرین سمیت CIS (آزاد ریاستوں کی دولت مشترکہ) پر انحصار کرتی ہیں۔

      خبر کے مطابق ہریدوار کے سیڈکول صنعتی علاقے میں قائم فارما کمپنیوں کے علاوہ دیگر صنعتی یونٹس جیسے آئرن گڈز کمپنیاں، بیوٹی پراڈکٹس، پرفیوم فیکٹریاں مختلف بندرگاہوں کے ذریعے یوکرین سے خام تیل، کیمیکل اور لوہا وغیرہ درآمد کرتی ہیں۔ یہ ضلع کی کیمیکل اور دیگر فیکٹریوں میں استعمال ہوتے ہیں۔ جنگ کی وجہ سے بندرگاہوں پر کروڑوں روپے کا سامان پھنس گیا ہے۔

      بڑی مقدار میں ایلومینیم فائل کا ہوتا ہے امپورٹ
      خام مال کی قیمتوں میں اضافے کے باعث ادویات کی پیکنگ اور قیمتوں پر بھی اثر دیکھا جائے گا۔ فارما یونٹس بڑے پیمانے پر روس اور یوکرین سے پیکیجنگ کی شکل میں مختلف کیمیکلز اور ایلومینیم فوائل درآمد کرتے ہیں۔ جنگ کی وجہ سے گزشتہ 10 دنوں میں ایلومینیم فوائل (پیکیجنگ) کی قیمت میں 100 روپے فی کلو سے زائد کا اضافہ ہوا ہے۔ ایلومینیم فوائل کورونا کے دور میں 265 روپے فی کلو تک بڑھ گیا، پھر 335 روپے فی کلو ہو گیا تھا۔

      ایک ہفتے میں 470 روپے کلو پہنچ گئی قیمت
      ایک ہفتے سے جاری جنگ کے دوران اب 470 روپے فی کلو تک پہنچ گیا ہے۔ اسی طرح دیگر خام مال بھی جنگ سے متاثر ہوا اور وہ سب مہنگے داموں میں دستیاب ہیں۔ فارما کمپنی آپریٹرز کا کہنا ہے کہ اگر جلد حالات معمول پر نہ آئے تو فارما سیکٹر کو بڑا دھچکا لگے گا۔ جس کی وجہ سے اسے ٹھیک ہونے میں کافی وقت لگ سکتا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: