உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ملک کے مختلف شہروں میں اسٹامپ ڈیوٹی اور رجسٹریشن چارجز کیوں لگائے جاتے ہیں؟ جانیے تفصیلات

    سٹیمپ ڈیوٹی اور رجسٹریشن چارجز عائد کیے جاتے ہیں۔

    سٹیمپ ڈیوٹی اور رجسٹریشن چارجز عائد کیے جاتے ہیں۔

    اپنی جائیداد کا ٹائٹل کسی دوسرے شخص کو منتقل کرتے وقت آپ سے پراپرٹی سٹیمپ ڈیوٹی وصول کی جائے گی۔ یہ ایک فیس ہے جو ریاستی حکومت کی طرف سے ان دستاویزات پر عائد کی جاتی ہے جن کی آپ کو اپنی جائیداد کے اندراج کے لیے ضرورت ہوتی ہے۔

    • Share this:


      جائیداد خریدنے سے زیادہ اسے رجسٹر کرنا اہم ہوتا ہے۔ تاکہ وہ ملکیت آپ کے نام ہوجائے اور قانونی اعتبار سے بھی آپ اس جائیداد کے مالک بن جائے۔ اگر آپ پراپرٹی خریدنے کا ارادہ کر رہے ہیں، تو یاد رکھیں کہ بیچنے والے کی طرف سے آپ کو بتائی گئی رقم وہ حتمی قیمت نہیں ہے جو آپ کو ادا کرنی ہوگی۔

      جب آپ جائیداد کو اپنے نام پر رجسٹر کریں گے تو آپ کو بتائی گئی قیمت میں چند لاکھ کا اضافہ ہو جاتا ہے۔ کیا آپ جانتے ہیں کہ جب آپ کوئی پراپرٹی منتخب کریں گے تو آپ سے اسٹیمپ ڈیوٹی (Stamp Duty ) اور رجسٹریشن چارجز (registration charges)، سیس (cess) اور سرچارجز (surcharges) وصول کیے جائیں گے؟ جی ہاں ایک ساتھ لگائے گئے تمام چارجز پراپرٹی کی کل بازاری قیمت (market value) کے 7 فیصد سے 10 فیصد تک یا اس سے زیادہ ہو سکتے ہیں۔ ہندوستان کی زیادہ تر ریاستوں میں جائیداد کی کل بازاری قیمت کا 5 فیصد سے 7 فیصد اسٹیمپ ڈیوٹی کے طور پر وصول کیا جاتا ہے جبکہ 1 فیصد رجسٹریشن فیس کے طور پر وصول کیا جاتا ہے۔

      اسٹیمپ ڈیوٹی سے آپ کا کیا مطلب ہے؟

      اپنی جائیداد کا ٹائٹل کسی دوسرے شخص کو منتقل کرتے وقت آپ سے پراپرٹی سٹیمپ ڈیوٹی وصول کی جائے گی۔ یہ ایک فیس ہے جو ریاستی حکومت کی طرف سے ان دستاویزات پر عائد کی جاتی ہے جن کی آپ کو اپنی جائیداد کے اندراج کے لیے ضرورت ہوتی ہے۔

      اسٹیمپ ڈیوٹی اور رجسٹریشن چارجز ایک ریاست سے دوسری ریاست میں مختلف ہوتے ہیں۔ کسی پراپرٹی کو رجسٹر کرتے وقت آپ کو سٹیمپ ڈیوٹی ادا کرنی ہوگی کیونکہ یہ انڈین سٹیمپ ایکٹ 1899 کے سیکشن 3 کے تحت لازمی ہے۔

      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: