உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Tata Steelنے لیا بڑا فیصلہ، روس کے ساتھ کاروبار کرنے پر لگائی روک

    ٹاٹا اسٹیل نے روس کے ساتھ بزنس کرنے سے کردیا انکار۔

    ٹاٹا اسٹیل نے روس کے ساتھ بزنس کرنے سے کردیا انکار۔

    Tata Steel Stopping Business With Russia: کمپنی نے کہا کہ میٹنگ میں بورڈ آف ڈائریکٹرز کی جانب سے طے شدہ طریقے سے 10 روپے کی قیمت کے شیئر کو تقسیم کرنے پر غور کیا جائے گا۔ اس کے لیے ریگولیٹری منظوری کے علاوہ شیئر ہولڈرز کی منظوری بھی لی جائے گی۔

    • Share this:
      Tata Steel Stopping Business With Russia:ہندوستان کی بڑی اسٹیل کمپنی ٹاٹا اسٹیل نے روس یوکرین جنگ (Ukraine-Russia War) کے درمیان بڑا فیصلہ لیا ہے۔ ٹاٹا اسٹیل نے کہا ہے کہ وہ روس کے ساتھ کاروبار کرنا چھوڑ دے گا۔ ہندوستانی اسٹیل چیف نے بدھ کو اس کی جانکاری دی۔

      جنگ کی وجہ سے لیا یہ فیصلہ
      ہندوستانی اسٹیل کمپنی ٹاٹا اسٹیل کی یورپی یونٹ نے بدھ کو کہا کہ وہ روس کے ساتھ کاروبار کرنا بند کردے گی۔ آپ کو بتادیں کہ یوکرین پر حملہ کرنے کے لیے روس کے ساتھ تعلقات منقطع کر نے والی نئی گلوبل کمپنی ہے۔

      کاروبار بند کرنے کا لیا فیصلہ
      ٹاٹا اسٹیل نے ایک بیان میں کہا، "ٹاٹا اسٹیل کا روس میں کوئی آپریشن یا ملازم نہیں ہے۔ ہم نے روس کے ساتھ کاروبار بند کرنے کا شعوری فیصلہ کیا ہے۔"

      یہ بھی پڑھیں:
      Elon Musk: ایلون مسک کا ٹویٹر کی پیشکش پر سعودی شہزادہ سے جھگڑا؟ کہی یہ بڑی بات!

      خام مال کی فراہمی
      ٹاٹا اسٹیل نے کہا کہ ہندوستان، برطانیہ اور ہالینڈ میں کمپنی کی تمام اسٹیل مینوفیکچرنگ سائٹس نے روس پر انحصار ختم کرنے کے لیے خام مال کی متبادل سپلائی کی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      مفت سہولیات کی اسکیمات سے کئی States پر بھاری مالیاتی دباؤ،اقتصادی حالت ہورہی ہے خراب!

      کمپنی شیئروں کو بانٹنے پر کر رہی ہے غور
      آپ کو بتادیں کہ ٹاٹا اسٹیل کا بورڈ آف ڈائریکٹرز 3 مئی کو کمپنی کے شیئرز کی تقسیم کی تجویز پر غور کرے گا۔ کمپنی نے حال ہی میں اس بارے میں جانکاری دی ہے۔ کمپنی نے کہا ہے کہ اس کا بورڈ آف ڈائریکٹرز 3 مئی کو 31 مارچ 2022 کو ختم ہونے والے مالی سال کے مالیاتی نتائج پر غور کرنے کے لیے میٹنگ کرے گا۔

      کمپنی نے کہا کہ میٹنگ میں بورڈ آف ڈائریکٹرز کی جانب سے طے شدہ طریقے سے 10 روپے کی قیمت کے شیئر کو تقسیم کرنے پر غور کیا جائے گا۔ اس کے لیے ریگولیٹری منظوری کے علاوہ شیئر ہولڈرز کی منظوری بھی لی جائے گی۔ اجلاس میں بورڈ آف ڈائریکٹرز مالی سال 2021-22 کے لیے منافع کی سفارش بھی کر سکتا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: