உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہوائی جہاز سے سفر کرنے والوں کے لئے بڑی خبر، ڈی جی سی اے نے جاری کیا نیا آرڈر

    ہوائی جہاز سے سفر کرنے والوں کے لئے بڑی خبر، ڈی جی سی اے نے جاری کیا نیا آرڈر

    ہوائی جہاز سے سفر کرنے والوں کے لئے بڑی خبر، ڈی جی سی اے نے جاری کیا نیا آرڈر

    ڈائریکٹوریٹ جنرل نے آج ایک سرکلر جاری کیا جس میں 31 اگست سے 30 ستمبر تک اس سلسلہ میں جاری آرڈر کی مدت میں توسیع کی گئی ہے۔ اس نے واضح کیا ہے کہ اس حکم کا اطلاق کارگو طیاروں اور خصوصی اجازت یافتہ پروازوں پر نہیں ہوگا۔

    • Share this:
      نئی دہلی۔ ڈائرکٹوریٹ جنرل آف سول ایوی ایشن (ڈی جی سی اے) نے بین الاقوامی پروازوں پر پابندی میں 30 ستمبر تک توسیع کردی ہے۔ ڈائریکٹوریٹ جنرل نے آج ایک سرکلر جاری کیا جس میں 31 اگست سے 30 ستمبر تک اس سلسلہ میں جاری آرڈر کی مدت میں توسیع کی گئی ہے۔ اس نے واضح کیا ہے کہ اس حکم کا اطلاق کارگو طیاروں اور خصوصی اجازت یافتہ پروازوں پر نہیں ہوگا۔ نیز منتخب روٹوں پر باقاعدہ بین الاقوامی پروازوں کی اجازت دی جاسکتی ہے۔

      قابل ذکر ہے کہ کووڈ ۔19 کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے 22 مارچ سے ملک میں بین الاقوامی پروازیں بند ہیں۔ گھریلو پروازوں پر بھی 25 مارچ سے پابندی عائد کی تھی ، لیکن 25 مئی سے محدود تعداد میں گھریلو پروازیں شروع کردی گئی ہیں۔


      آپ کو بتا دیں کہ بیرون ملک میں پھنسے ہندستانیوں کو لانے کے لئے وندے بھارت مشن کے تحت ائیر انڈیا کے طیارے ہی دوسرے ملکوں میں جا رہے ہیں۔ حکومت نے پچھلے دنوں کچھ ملکوں کے ساتھ ائیرببل کے تحت بھی پروازیں شروع کی ہیں۔ کورونا کی وجہ سے دو مہینے گھریلو پروازیں بند رکھنے کے بعد حکومت نے 25 مئی سے پھر سے پروازیں شروع کرنے کی چھوٹ دی تھی، لیکن آغاز میں پروازوں میں کھانا دینے کی اجازت نہیں دی گئی تھی۔ وہیں خصوصی بین اقوامی پروازوں میں دوری کے حساب سے پری۔ پیکڈ کھانا اور اسنیکس دئیے جا رہے تھے۔

      گھریلو ہوائی مسافروں کے لئے نئے رہنما خطوط

      کورونا وائرس کے درمیان حکومت نے ائیرلائنس کو فلائٹ میں کھانا دینے کی اجازت دے دی ہے۔ لیکن ماسک نہیں پہننے والے مسافروں کے ساتھ سختی سے نمٹا جائے گا۔ ڈی جی سی اے نے ائیرلائنس سے کہا ہے کہ اگر کوئی مسافر ماسک نہیں پہنے تو اپنے حساب سے فیصلہ لے کر اس کا نام نو۔ فلائی لسٹ میں ڈال سکتے ہیں۔ یعنی اس کے ہوائی سفر پر کچھ وقت کے لئے روک لگائی جا سکتی ہے۔

      یو این آئی، اردو کے ان پٹ کے ساتھ
      Published by:Nadeem Ahmad
      First published: