உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندوستان میں مہنگائی میں مزید اضافہ کا خدشہ، آخر کیا ہے وجہ؟ RBI کی جولائی کے بلیٹن میں وضاحت

    تاہم یہ مسلسل دوسرا مہینہ ہے

    تاہم یہ مسلسل دوسرا مہینہ ہے

    بلیٹن کے مطابق اس پس منظر میں ہمیں امید ہے کہ ہندوستان میں ضروری مانیٹری پالیسی کے اقدامات دنیا کے دیگر حصوں کے مقابلے میں زیادہ معتدل ہوں گے اور یہ کہ ہم مہنگائی کو دو سال کے عرصے کے اندر ہدف پر واپس لانے کے قابل ہو جائیں گے۔

    • Share this:
      ریزرو بینک آف انڈیا (RBI) کے جولائی 2022 کے بلیٹن میں کہا گیا ہے کہ ملک کی معیشت کے حوالے سے ایسے اشارے مل رہے ہیں کہ ہندوستان میں افراط زر مزید عروج پر پہنچے گا اور یہ 23-2022 کی چوتھی سہ ماہی تک دوبارہ 6 فیصد سے کم میں آ سکتا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ دنیا کی دیگر جگہوں کے مقابلے ہندوستان میں مہنگائی قابو میں ہے۔ مسلسل بڑھتے ہوئی مہنگائی کو دو سال کے اندر ہدف (4 فیصد) پر واپس لایا جاسکتا ہے۔

      جولائی 2022 کے بلیٹن کے مطابق مانیٹری پالیسی کی وجہ سے مہنگائی پر قابو پایا جاسکتا ہے۔ جب بھی ہندوستانی معیشت کو خطرات لاحق ہوتے ہیں، آر بی آئی ہندوستانی معیشت کے دفاع میں اپنے اختیارات کے ساتھ کھڑا ہوتا ہے اور اس کا مقابلہ کرتا ہے۔

      معیشت کے استحکام کے لیے ضروری اقدام:

      بلیٹن کے مطابق ایسے اشارے مل رہے ہیں کہ مہنگائی عروج پر پہنچے گی۔ جیسا کہ مانیٹری پالیسی معیشت کے استحکام کے لیے کام کرتی ہے اور افراط زر 23-2022 کی چوتھی سہ ماہی تک دوبارہ کم ہوسکتی ہے۔ بلیٹن کے مطابق اس پس منظر میں ہمیں امید ہے کہ ہندوستان میں ضروری مانیٹری پالیسی کے اقدامات دنیا کے دیگر حصوں کے مقابلے میں زیادہ معتدل ہوں گے اور یہ کہ ہم مہنگائی کو دو سال کے عرصے کے اندر ہدف پر واپس لانے کے قابل ہو جائیں گے۔

      واضح رہے کہ جولائی 2022 کے بلیٹن کو آر بی آئی کے ڈپٹی گورنر مائیکل پاترا اور دیگر معاونین نے تیار کیا ہے۔ اس میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ مہنگائی کی بدترین شرح ہمارا پیچھے کرسکتی ہے۔ جون میں لگاتار دوسرے مہینے میں بھی مہنگائی برقرار رہی۔ قومی شماریات کے دفتر (NSO) کے ڈیٹا کے مطابق عالمی سطح پر بھی دنیا کی بڑی معیشیتں مہنگائی کا سامنا کررہی ہیں۔

      مزید پڑھیں: 

      کب کب مہنگائی میں ہوا اضافہ:

      جون کے دوران ہندوستان میں خوردہ مہنگائی 7.01 فیصد رہی، جو مئی میں ریکارڈ کی گئی 7.04 فیصد سے تھوڑی کم ہے۔ یہ لگاتار چھٹا مہینہ ہے جب افراط زر زیادہ ہے۔ جون 2022 کے دوران دیہی علاقوں میں افراط زر کی شرح 7.09 فیصد رہی جبکہ شہری علاقوں میں یہ 6.92 فیصد تھی۔

      مزید پڑھیں: 


      تاہم یہ مسلسل دوسرا مہینہ ہے جس میں گزشتہ ماہ کے مقابلے مہنگائی میں معمولی کمی دیکھی گئی ہے۔ اپریل میں افراط زر کی شرح 7.79 فیصد تھی جو مئی میں گر کر 7.04 فیصد اور اب جون میں 7.01 فیصد پر آ گئی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: