உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اپنے اے ٹی ایم کارڈ (ATM Card) کا استعمال کرتے ہوئے کیسے کریں رقم کی منتقلی؟ جانیے تفصیلات

    ذیل میں ہندوستان میں کچھ مشہور بینکوں کی نقد رقم نکالنے کی حد اور نقد لین دین کی حد کا ذکر کیا گیا ہے۔

    ذیل میں ہندوستان میں کچھ مشہور بینکوں کی نقد رقم نکالنے کی حد اور نقد لین دین کی حد کا ذکر کیا گیا ہے۔

    اگرچہ یہ سہولت تمام بینکوں کے ڈیبٹ کارڈز کے لیے دستیاب نہیں ہے، لیکن زیادہ تر مشہور بینک اپنے صارفین کو یہ سہولت فراہم کرتے ہیں۔ ڈیبٹ کارڈ کا استعمال کرتے ہوئے اے ٹی ایم کے ذریعے رقم کی منتقلی ذیل میں درج مراحل پر عمل کرتے ہوئے کی جا سکتی ہے۔

    • Share this:
      بینکنگ سیکٹر میں ٹیکنالوجی کی ترقی کے ساتھ لوگوں کے لیے چند بٹنوں کے ذریعے متعدد بینکنگ لین دین کرنا آسان ہو گیا ہے۔ ان دنوں تقریباً تمام بینک انٹرنیٹ بینکنگ (internet banking) کی سہولیات فراہم کرتے ہیں تاکہ صارفین کو فوری طور پر دوسرے بینک کھاتوں میں رقوم کی منتقلی میں مدد مل سکے۔ ان افراد کے لیے جو اپنے بینک کی انٹرنیٹ بینکنگ کی سہولیات استعمال نہیں کرتے ان کے ڈیبٹ کارڈز کے ذریعے بھی رقوم کی منتقلی کی جا سکتی ہے۔

      اگرچہ یہ سہولت تمام بینکوں کے ڈیبٹ کارڈز کے لیے دستیاب نہیں ہے، لیکن زیادہ تر مشہور بینک اپنے صارفین کو یہ سہولت فراہم کرتے ہیں۔ ڈیبٹ کارڈ کا استعمال کرتے ہوئے اے ٹی ایم کے ذریعے رقم کی منتقلی ذیل میں درج مراحل پر عمل کرتے ہوئے کی جا سکتی ہے۔

      کارڈ کے لین دین کی سب سے نمایاں خصوصیت یہ ہے کہ یہ محفوظ ہے (shutterstock)
      کارڈ کے لین دین کی سب سے نمایاں خصوصیت یہ ہے کہ یہ محفوظ ہے (shutterstock)


      اے ٹی ایم کارڈ (ATM Card) سے رقم کی منتقلی کا طریقہ کار:

      مرحلہ 1: بینک کے اے ٹی ایم پر جائیں۔

      مرحلہ 2: ڈیبٹ کارڈ داخل کریں اور پن نمبر درج کریں۔

      مرحلہ 3: ٹرانسفر کے عنوان سے آپشن کو منتخب کریں۔

      مرحلہ 4: فائدہ اٹھانے والے کا ڈیبٹ کارڈ نمبر درج کریں۔

      مرحلہ 5: منتقل کی جانے والی رقم درج کریں۔

      مرحلہ 6: اکاؤنٹ کی قسم منتخب کریں — بچت یا کرنٹ

      مرحلہ 7: منتقلی کی تصدیق کریں۔

      اے ٹی ایم کارڈ کے ذریعے منتقل کی گئی رقوم فوری طور پر فائدہ اٹھانے والے کے کھاتے میں جمع ہو جاتی ہیں۔

      اے ٹی ایم کارڈ کے ذریعے منتقل کی گئی رقوم فوری طور پر فائدہ اٹھانے والے کے کھاتے میں جمع ہو جاتی ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: