உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Budget 2022: وزیر خزانہ کا بڑا اعلان، RBI لانچ کرے گا Digital Currency، بلاک چین ٹیکنالوجی پر مبنی ہوگی کرنسی

    Union Budget 2022:  وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن نے کہا کہ بلاک چین (Blockchain) اور دیگر ٹیکنالوجی کی مدد سے آر بی آئی 2022-23 میں ڈیجیٹل روپیہ جاری کرے گا ۔ اس سے معیشت کو فروغ ملے گا۔

    Union Budget 2022: وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن نے کہا کہ بلاک چین (Blockchain) اور دیگر ٹیکنالوجی کی مدد سے آر بی آئی 2022-23 میں ڈیجیٹل روپیہ جاری کرے گا ۔ اس سے معیشت کو فروغ ملے گا۔

    Union Budget 2022: وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن نے کہا کہ بلاک چین (Blockchain) اور دیگر ٹیکنالوجی کی مدد سے آر بی آئی 2022-23 میں ڈیجیٹل روپیہ جاری کرے گا ۔ اس سے معیشت کو فروغ ملے گا۔

    • Share this:
      نئی دہلی : مرکزی وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن  (Nirmala Sitharaman)  نے 2022-23 کا بجٹ (Budget 2022-23) پیش کیا ۔ انہوں نے وزیر خزانہ کے طور پر اپنا چوتھا بجٹ پیش کیا ۔ وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن نے کہا کہ بلاک چین (Blockchain) اور دیگر ٹیکنالوجی کی مدد سے آر بی آئی 2022-23 میں ڈیجیٹل روپیہ جاری کرے گا ۔ اس سے معیشت کو فروغ ملے گا۔

      کرپٹو کرنسی کی ریڑھ کی ہڈی ہے بلاک چین ٹیکنالوجی

      بلاک چین ٹیکنالوجی کو کرپٹو کرنسی کی ریڑھ کی ہڈی کہا جاتا ہے۔ حالانکہ بلاک چین کا استعمال صرف مقبول ترین کریپٹو کرنسی بٹ کوائن  (Bitcoin) میں ہی نیں، بلکہ بہت سے دوسرے شعبوں میں بھی ہو سکتا ہے اور ہوتا ہے۔ یہ ایک سیکور ، محفوظ اور ڈی سینٹرلائزڈ ٹیکنالوجی ہے ، جس کو ہیک کرنا یا چھیڑ چھاڑ کرنا تقریباً ناممکن ہے ۔

      بلاک چین کیا ہوتا ہے؟

      بلاک چین کو سمجھنے کیلئے آئیے اس کا موازنہ ڈیٹا بیس سے کرکے سمجھتے ہیں ۔ ڈیٹا بیس کسی بھی سسٹم کی انفارمیشن کا کلیکشن ہوتا ہے ۔ مثال کے طور پر فرض کریں کہ ایک اسپتال کے ڈیٹا بیس میں مریضوں کی جانکاری ہوگی ، عملے، ادویات، مریضوں کی نقل و حرکت وغیرہ جیسی سب معلومات ڈیٹا بیس میں رہیں گی ۔ بلاک چین بھی ایک ڈیٹا بیس کی طرح ہوتا ہے ۔ یہ کئی کٹیگریوں کے تحت معلومات جمع کرتا ہے ۔ ان گروپس کو بلاکس کہا جاتا ہے اور یہ بلاکس کئی دوسرے بلاکس سے جڑے ہوتے ہیں ، جو ایک طریقہ کے ڈیٹا کی چین بناتے ہیں ۔ اسی لئے اس سسٹم کو بلاک چین کہا جاتا ہے ۔ حالانکہ عام ڈیٹا بیس کے برعکس بلاک چین کو کوئی ایک اتھارٹی کنٹرول نہیں کرتی ہے ۔ اس کو ڈیزائن ہی اس جمہوری سوچ کے ساتھ گیا تھا کہ اس کو اس کے صارفین ہی چلائیں گے ۔

      بلاک چین کیسے کام کرتا ہے؟

      سیدھے الفاظ میں بلاک چین ایک ڈیجیٹل بہی کھاتہ ہے اور اس پر ہونے والا کوئی بھی ٹرانزیکشن چین سے جڑے ہر کمپیوٹر پر نظر آتا ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ بلاک چین میں کہیں بھی کوئی لین دین ہوتا ہے، تو اس کا ریکارڈ پورے نیٹ ورک پر درج ہوجائے گا ۔ اس کو Distributed Ledger Technology (DLT) کہا جاتا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: