ہوم » نیوز » معیشت

امریکہ نے ہندستان کو دیا بڑا جھٹکا! ڈونلڈ ٹرمپ نے کیا H1-B ویزا پر پابندیوں کا اعلان

ٹرمپ کے اس فیصلے سے دنیا بھر سے امریکہ میں نوکری کرنے کا خواب دیکھنے والے تقریبا ڈھائی لاکھ لوگوں کو جھٹکا لگ سکتا ہے۔ اس سے سب سے بڑا نقصان ہندستانی پیشہ وروں کو ہو گا۔

  • Share this:
امریکہ نے ہندستان کو دیا بڑا جھٹکا! ڈونلڈ ٹرمپ نے کیا H1-B ویزا پر پابندیوں کا اعلان
امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی فائل فوٹو

واشنگٹن۔ کورونا بحران  (COVID-19 Crisis) کے درمیان امریکہ میں بڑھی بےروزگاری کی شرح کے پیش نظر صدر ڈونلڈ ٹرمپ (Donald Trump) نے ہندستان کو بڑا جھٹکا دیتے ہوئے H1-B ویزا پر پابندیوں کا اعلان کر دیا ہے۔ 31 دسمبر 2020 تک اس پر روک لگانے کا اعلان کیا گیا ہے۔ ٹرمپ کے اس فیصلے سے دنیا بھر سے امریکہ میں نوکری کرنے کا خواب دیکھنے والے تقریبا ڈھائی لاکھ لوگوں کو جھٹکا لگ سکتا ہے۔ اس سے سب سے بڑا نقصان ہندستانی پیشہ وروں کو ہو گا۔ آپ کو بتا دیں کہ امریکہ میں کام کرنے والی کمپنیوں کو غیرملکی کامگاروں کو ملنے والے ویزا کو ایچ ون۔ بی ویزا کہتے ہیں۔ اس ویزا کو ایک طئے مدت کے لئے جاری کیا جاتا ہے۔



امریکہ میں کام کرنے کے لئے H1-B ویزا پانے والے لوگوں میں سب سے زیادہ ہندستانی آئی ٹی پیشہ ور ہوتے ہیں۔ ایسے میں ویزا پابندیوں کا سب سے زیادہ نقصان ہندستانیوں کو ہونا طئے ہے۔ حالانکہ، یہ بھی مانا جا رہا ہے کہ نئی ویزا پابندیوں سے اس وقت ورک ویزا پر امریکہ میں کام کرنے والے لوگوں پر اثر نہیں پڑے گا۔

امریکہ میں کام کر رہی کمپنیاں اگر کسی بیرونی شخص کو نوکری دینا چاہتی ہیں تو ایسا شخص ایچ ون بی ویزا لے کر ہی امریکہ میں کسی کمپنی میں کام کر سکتا ہے۔ ہندستان سے بڑی تعداد میں آئی ٹی پیشہ ور ایچ ون بی ویزا کے ساتھ امریکہ میں کام کرنے جاتے ہیں۔

ایچ ون بی ویزا تین سال کے لئے دیا جاتا ہے۔ جسے زیادہ سے زیادہ چھ سالوں کے لئے بڑھایا جا سکتا ہے۔ ایچ ون بی ویزا ختم ہونے کے بعد درخواست گزار کو امریکہ میں شہریت کے لئے درخواست دینی پڑتی ہے۔ اس کے لئے درخواست گزار کو گرین کارڈ دیا جاتا ہے۔
First published: Jun 23, 2020 08:58 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading