ہوم » نیوز » معیشت

بری خبر: 1 دسمبرسے مہنگا ہوسکتاہے موبائل فون کا استعمال،عام آدمی کی جیب پرپڑے گا بوجھ

ملک بھرمیں اس سال کے آخری مہینے کی پہلی تاریخ سے،عام آدمی کی جیب پربوجھ اضافہ ہوسکتاہے

  • Share this:
بری خبر: 1 دسمبرسے مہنگا ہوسکتاہے موبائل فون کا استعمال،عام آدمی کی جیب پرپڑے گا بوجھ
بری خبر: 1 دسمبر سے مہنگا ہوسکتاہے موبائل فون کا استعمال، عام آدمی کی جیب پرپڑے گا بوجھ ۔(تصویر:نیوز18)۔

ملک بھر میں اس سال کے آخری مہینے کی پہلی تاریخ سے،عام آدمی کی جیب پربوجھ اضافہ ہوسکتاہے۔1 دسمبر سے ، موبائل فون صارفین کے لئے کالنگ کے ساتھ ساتھ انٹرنیٹ کا استعمال بھی مہنگا ہوجائے گا۔(ووڈافون، آئیڈیا، ایئرٹیل کمپنیاں 1 دسمبر سے اپنی ٹیرف میں اضافہ کرنے کا منصوبہ رکھتے ہیں)۔ یہ واضح ہے کہ ٹیلی کام کمپنیاں ٹیرف پلان کی قیمت میں اضافہ کرنے کی تیاری کررہی ہیں۔ ٹیلی کام کمپنیوں (آئیڈیا ، ووڈافون ، ایئرٹیل) نے پہلے ہی اس کا اعلان کیا ہے۔ ٹیلی کام سیکٹر کے ماہرین کا کہنا ہے کہ 14 سالہ قدیم ایڈجسٹڈ گراس ریونیو (اے جی آر) کیس سے متعلق سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ٹیلی کام کمپنیوں پر قرضوں کا بوجھ بڑھ گیا ہے۔ اسی لئے کمپنیوں کی جانب سے ٹیرف پلان کی شرح میں اضافے کے لئے تیاریاں مکمل کی جارہی ہے ۔۔


آئندہ ماہ یعنی یکم دسمبر سے فون پر گفتگو کرنا مہنگا ہوگا ۔ بھارتی ایئرٹیل اورووڈافون آئیڈیا 1 دسمبر 2019 سے اپنے ٹیرف پلان میں اضافہ کرنے جارہے ہیں۔ دونوں کمپنیاں ایڈجسٹٹ گراس ریونیو (AGR) کے بڑے بقایا جات کو پُر کرنے کے لئے ایسا کرنے پرغور کر رہی ہیں۔ تاہم ، دونوں کمپنیوں نے ابھی تک یہ واضح نہیں کیا ہے کہ موبائل ٹیرف کتنا مہنگا کیا جائیگا۔


ٹیرف پلان کتنا ہوگا مہنگا؟


منی کنٹرول کی رپورٹ کے مطابق ٹیلی کام کمپنیاں موبائل ٹیرف میں 35 فیصد تک اضافہ کرسکتی ہیں۔بھارتی ایئرٹیل کا کہنا ہے کہ ٹیلی مواصلات کے شعبے میں نئی ​​ٹکنالوجی متعارف کروانے کے لیے بہت زیادہ سرمایہ کاری کی ضرورت ہے،لہذا آمدنی میں اضافہ پرغور کیاجارہاہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا جارہا ہے کہ ایرٹیل کا 100 روپئے ری چارج کے لیے اب آپ کو 135 روپئے ادا کرنے پڑسکتے ہیں

یہ بھی قیاس آرائیاں ہے کہ ریچارج کی قیمت میں اضافہ نہیں کرنے کے بجائے چند خدمات میں جیسے وائس کال ، ایس ایم ایس یا ڈیٹاکی حد کوکم کیاجاسکتاہےتاہم،1 یا 2 دن کے بعد ہی تصویرپوری صاف ہوگی۔یاد رہے کہ اے جی آر کیس کی وجہ سے کمپنیوں پر قیمتوں میں اضافے کے لئے دباؤہے سپریم کورٹ نے اے جی آر تنازعہ پر ٹیلی کام کمپنیوں کے خلاف حکم دیا تھا، جس میں آپریٹرزکوحکومت کو بھاری بقایاجات ادا کرنے ہوں گے۔ ایسی صورتحال میں کمپنیاں ٹیرف میں اضافہ کرکے اس کو پورا کرنا چاہتی ہیں۔ اگر کمپنیاں ٹیرف باؤچر میں 10 فیصد اضافہ کرتی ہیں تو اس کے ذریعہ اگلے 3 سالوں میں 35 ہزار کروڑ روپئے کی آمدنی متوقع ہے۔
First published: Nov 29, 2019 10:23 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading