உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جانیے کیا ہے Economic Survey، بجٹ سے پہلے کیوں ہوتا ہے پیش

    کیا ہے Economic Survey

    کیا ہے Economic Survey

    اس مرتبہ اکنامک سروے چیف اکنامک ایڈوائزر کی غیر موجودگی میں پرنسپل اکنامک ایڈوائزر اور دیگر عہدیداروں کی جانب سے تیار کیا جارہا ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ اس سے پہلے کے سی ای اے کے وی سبرامنیم کی تین سال کی معیاد 6 دسمبر کو ختم ہوگئی تھی۔

    • Share this:
      نئی دہلی:وزارت فائنانس 31 جنوری، 2022 کو فائنانشیل ایئر 2021-22 کے معاشی جائزے (Economic Survey) کو جاری کرے گا۔ اس بات کی امید کی جارہی ہے کہ اس اکنامک سروے (Economic Survey 2021-22) میں اگلے مالیاتی سال (22022-23) میں تقریباً 9 فیصدی کے گروتھ ریٹ کا اندازہ لگایا جائے گا۔ گزشتہ سال کے معاشی جائزے میں رواں مالی سال کے لیے 11 فیصد شرح نمو کا تخمینہ لگایا گیا تھا۔ یہ باتیں سننے کے بعد آپ بھی سوچ رہے ہوں گے کہ معاشی جائزہ کیا ہے، جس کے بارے میں لوگ اتنی باتیں کرتے ہیں۔ ایسے میں آئیے جانتے ہیں کہ معاشی جائزہ کیا ہے:

      کیا ہوتا ہے معاشی جائزہ (What is the Economic Survey)
      اقتصادی سروے ایک فائنانشیل ڈاکیومنٹ ہے۔ اس میں گزشتہ ایک مالی سال کے دوران ہندوستان کی اقتصادی ترقی کا جائزہ لیا جاتا ہے۔ اس کے لیے مختلف شعبوں، صنعت، زراعت، صنعتی پیداوار، روزگار، مہنگائی، برآمدات جیسے ڈیٹا کا استعمال کیا جاتا ہے۔ اقتصادی جائزہ ان اعداد و شمار کے تفصیلی تجزیے پر مبنی ہے۔ یہ رقم کی فراہمی اور غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر جیسے دیگر پہلوؤں کو بھی مدنظر رکھتا ہے، جن کا ہندوستان کی معیشت پر اثر پڑتا ہے۔

      بجٹ سے پہلے اکنامک سروے کیا جاتا ہے پیش
      اقتصادی سروے پارلیمنٹ میں مرکزی بجٹ پیش کرنے سے ایک دن قبل جاری کیا جاتا ہے۔ وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن یکم فروری 2022 کو پارلیمنٹ میں مالی سال 2022-23 کا بجٹ پیش کریں گی۔

      کون تیار کرتا ہے اکنامک سروے (Who prepares Economic Survey)
      یہ سروے وزارت خزانہ کے تحت کام کرنے والے محکمہ اقتصادی امور کے اکنامکس ڈویژن نے تیار کیا ہے۔ یہ چیف اکنامک ایڈوائزر (CEA) کی رہنمائی میں تیار کیا جاتا ہے تاہم اسے وزیر خزانہ کی منظوری کے بعد ہی جاری کیا جاتا ہے۔
      حالانکہ، اس مرتبہ اکنامک سروے چیف اکنامک ایڈوائزر کی غیر موجودگی میں پرنسپل اکنامک ایڈوائزر اور دیگر عہدیداروں کی جانب سے تیار کیا جارہا ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ اس سے پہلے کے سی ای اے کے وی سبرامنیم کی تین سال کی معیاد 6 دسمبر کو ختم ہوگئی تھی۔

      کتنا اہم ہوتا ہے اکنامک سروے
      اقتصادی سروے یا معاشی سروے وزارت خزانہ کا ایک اہم مالیاتی دستاویز تصور کیا جاتا ہے۔ اسے موجودہ مالی سال کے حوالے سے مرکزی حکومت کی رپورٹ کے طور پر بھی دیکھا جاتا ہے۔ اس سے ایک مالی سال میں ملک بھر میں معاشی ترقی کی تصویر سامنے آتی ہے۔ اس میں نہ صرف پچھلے مالی سال کی مائیکرو اکنامک صورتحال کا تجزیہ کیا جاتا ہے بلکہ یہ اگلے مالی سال کی سمت کے بارے میں بھی معلومات فراہم کرتا ہے۔

      کب پیش ہوا تھا ہندوستان کا پہلا اکنامک سروے
      ہندوستان کا پہلا اکنامک سروے 1950-51 میں پیش کیا گیا تھا۔ سال 1964 تک اسے مرکزی بجٹ کے ساتھ پیش کیا جاتا تھا۔ 1964 سے اسے بجٹ سے الگ کردیا گیا۔

      بجٹ سے پہلے کیوں پیش کیا جاتا ہے معاشی سروے
      اکنامک سروے میں رواں مالی سال کے پرفارمنس کا ریویو کیا جاتا ہے۔ ایسے میں اس سے مرکزی بجٹ کو بہتر ڈھنگ سے سمجھنے میں مدد ملتی ہے۔ سروے سے ملک کو اگلے مالی سال کی ترجیحات طئے کرنے میں مدد ملتی ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: