ہر کردار کو مہارت کے ساتھ ادا کرتے ہیں عامر خان

ممبئی۔ بالی ووڈ میں ’’مسٹر پرفیکشنسٹ ‘‘کے نام سے مشہور عامر خان ان منتخب اداکاروں میں سے ایک ہیں جو فلم کی تعداد کے بجائے فلم کے معیار کو زیادہ اہمیت دیتے ہیں۔

Mar 14, 2017 01:41 PM IST | Updated on: Mar 14, 2017 01:41 PM IST
ہر کردار کو مہارت کے ساتھ ادا کرتے ہیں عامر خان

ممبئی۔  بالی ووڈ میں ’’مسٹر پرفیکشنسٹ ‘‘کے نام سے مشہور عامر خان ان منتخب اداکاروں میں سے ایک ہیں جو فلم کی تعداد کے بجائے فلم کے معیار کو زیادہ اہمیت دیتے ہیں۔ ان امتیازات وخصوصیات کی وجہ سے عامر خان اپنے ہم عصر اداکاروں سے کافی آگے نکل چکے ہیں اور آج کسی فلم میں ان کا ہونا ہی کامیابی کی ضمانت سمجھا جاتا ہے۔ عامر خان کی پیدائش 14 مارچ 1965 کو ممبئی میں ہوئی۔ ان کے والد طاہر حسین اور چچا ناصر حسین جانے مانے فلم ساز تھے۔ گھر میں فلمی ماحول کی وجہ سے عامر خان کی دلچسپی بھی فلموں میں ہو گئی اور وہ اداکار بننے کا خواب دیکھنے لگے۔ عامر خان نے اپنے فلمی کیریئر کی شروعات سال 1973 میں بطور چائلڈ اسٹار اپنے چچا ناصر حسین کے بینر کے تحت بنی فلم یادوں کی بارات .. سے کی۔ بعد میں انہوں نے سال 1974 میں آئی فلم مدهوش .. میں بھی بطور چائلڈ اسٹار کام کیا۔ اس کے بعد انہوں نے تقریبا ً11 برسوں تک فلم انڈسٹری سے کنارہ کر لیا۔

سال 1984 میں آئی فلم ہولي سے عامر خان نے بطور اداکار فلمی کیریئر کا آغاز کیا، لیکن شائقین کے درمیان اپنی شناخت بنانے میں ناکام رہے۔ تقریبا ًچار سال تک ممبئی میں جدوجہد کرنے کے بعد 1988 میں اپنے چچا ناصر حسین کے بینر کے تحت بنی فلم قیامت سے قیامت تک كي کامیابی کے بعد عامر خان بطور اداکار فلم انڈسٹری میں اپنی شناخت بنانے میں کامیاب ہو گئے۔ فلم میں اپنی بااثر اداکاری کے لیے انہیں اس سال نوآموز اداکار کا فلم فیئر ایوارڈ حاصل ہوا۔ سال 1994 میں راج کمار سنتوشی کی ہدایت میں بنی فلم انداز اپنا اپنا میں عامر خان کی اداکاری کا نیا رنگ دیکھنے کو ملا۔ اس فلم سےپہلے ان کے بارے میں یہ بات کہی جاتی تھی کہ وہ صرف رومانی کردار ہی ادا کر سکتے ہیں لیکن عامر خان نے اداکار سلمان خان کے ساتھ اپنی مزاحیہ اداکاری سے شائقین کو خوب ہسایا۔ فلم میں اپنی بہترین اداکاری کے لیے وہ بہترین اداکار کے فلم فیئر ایوارڈ کے لیے نامزد بھی کئے گئے۔ سال 1994 میں ہی ریلیز ہوئی فلم بازی میں ان کی اداکاری کی نئی شکل دیکھنے کو ملی۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ اس فلم کے ایک گانے میں عامر خان نے ایک لڑکی کا کردار ادا کیا اور اس کے لئے انہوں نے اپنے پورے جسم پر ویكسن کا استعمال کیا۔ سال 1996 میں عامر خان کے فلمی کیریئر کی ایک اور اہم فلم راجہ ہندوستانی ریلیز ہوئی۔ اس فلم میں انہوں نے اپنی بااثر اداکاری سے ایک بار پھر شائقین کومسحور کردیا۔

اس فلم سے منسلک ایک دلچسپ حقیقت یہ ہے کہ فلم میں ایک گانے کے دوران عامر خان کو نشے میں اداکاری کرنی تھی اور عامر خان نے ذاتی زندگی میں کبھی شراب نہیں پی تھی۔ فلم میں شرابی کے کردار کو اسکرین پر حقیقی طور پر پیش کرنے کیلئے عامر خان نے اپنی زندگی میں پہلی بار شراب کا استعمال کیا اور اداکاری کی۔ سال 1998 میں عامر خان کے فلمی کیریئر کی ایک اور سپر ہٹ فلم غلام ریلیز ہوئی۔ اس فلم سے منسلک ایک دلچسپ حقیقت یہ ہے کہ فلم کے ایک سین کے دوران عامر خان کو ٹرین کے برعکس سمت میں دوڑ لگانی ہوتی ہے اور فلم کے سین کو چیلنج کے طور پر لیتے ہوئے موت کی پرواہ کئے بغیر وہ ٹرین کے سامنے آنے سے بھی نہیں هچكے اور اس سین کو انہوں نے خود کیا۔

Loading...

Loading...