ہرن شکار کیس : سلمان خان کی ضمانت کی عرضی پر سماعت کل ، جیل میں ہی گزارنی ہوگی آج کی رات

راجستھان میں جودھپور کی مقامی عدالت نے سرخیوں میں رہنے والے کانکانی سیاہ ہرن شکار معاملہ میں سلمان خان کو قصور وار قراردیتےہوئے انھیں پانچ سال کی سزا اور 10ہزار روپئے کا جرمانہ عائد کیا ہے ۔

Apr 05, 2018 09:38 AM IST | Updated on: Apr 06, 2018 11:50 AM IST
ہرن شکار کیس : سلمان خان کی ضمانت کی عرضی پر سماعت کل ، جیل میں ہی گزارنی ہوگی آج کی رات

جے پور۔ راجستھان میں جودھپور کی مقامی عدالت نے سرخیوں میں رہنے والے کانکانی سیاہ ہرن شکار معاملہ میں سلمان خان کو قصور وار قراردیتےہوئے انھیں پانچ سال کی سزا اور 10ہزار روپئے کا جرمانہ عائد کیا ہے ۔ چیف جوڈیشیل مجسٹریٹ (دیہات )دیوکمار کھتری نے اس معاملہ میں دفعہ 9/51کے تحت قصور وار قراردیتے ہوئے سزاسنائی ۔ سلمان کو اب عدالت سے سیدھے پولیس کی گاڑی میں ہی جودھپور کی سنٹرل جیل لے جایا جا رہا ہے۔ آج رات انہیں جیل میں ہی رات گزارنی ہو گی۔ کیونکہ ان کی ضمانت کی عرضی پر سماعت کل ہوگی ۔

فیصلہ سناتے ہی عدالت میں خاموشی چھاگئی اور عدالت میں موجود سلمان کے گھروالے مایوس ہوگئے اور انکی دونوں بہنیں رونے لگیں ۔ سلمان کو قصور وار قراردئے جانے کے بعد انکے وکیل ہستی مل سارسوت نے عدالت سے درخواست کی کہ وہ اچھے انسان ہیں اس لئے انھیں سزا کم سے کم دئ جائے اور انکے تئیں نرمی برتی جائے ۔وہیں سرکاری وکیل نے سلمان کو عادی مجرم بتاتےہوئے سخت سے سخت سزادینے کی درخواست کی ۔ لنچ کے بعد عدالت کی کارروائی شروع ہوتے ہی فاضل جج نے سزاکا اعلان کیا ۔عدالت کے فیصلہ کے بعد پولیس نے سلمان کو اپنی حراست میں لے لیا۔

عدالت کا فیصلہ سنتے ہی سلمان کے مداحوں میں مایوسی چھاگئی ۔ دوسری طرف جیو رکشا وشنوئی سماج کے صدر شیوراج وشنوئی نے اداکار سلمان خان کو پانچ سال کی سزا کے فیصلےپر تو خوشی ظاہر کی لیکن دیگر ملزمان کو بری کئے جانے کی مخالفت کی ۔ جب جج دیوکمار کھتری سزاسنا رہے تھے تو سلمان خان جذباتی ہوگئے ،وہیں سلمان کی بہنیں بھی عدالت میں رونے لگیں ۔ایسے میں خود سلمان انھیں تسلی دیتے نظر آئے ۔

واضح رہے کہ فلم ’ہم ساتھ ساتھ ہیں ‘کی شوٹنگ کے دوران 1998میں سلمان خان اور انکے ساتھی اداکاروں پر دو سیاہ ہرنوں کے شکار کا معاملہ درج کیا گیاتھا۔ اس معاملہ میں انھیں زیادہ سے زیادہ چھ سال کی سزاہوسکتی تھی لیکن عدالت نے پانچ سال کی سزاسنائی ہے ۔عدالت نے آج صبح گیارہ بجے سلمان خان کو قصوروار قرار دیا تھا اور اس معاملہ میں انکے شریک ملزمان سیف علی خان ،دشینت سنگھ ،تبو ،نیلم اور سونالی بیندرے کو ناکافی ثبوت کی بنیاد پر بری کردیا گیا تھا۔

Loading...

بالی ووڈ کے اسٹار سلمان خان سمیت سبھی شریک ملزم سخت سیکورٹی کے درمیان عدالت میں پہنچے۔ بالی ووڈ کے اسٹار سلمان خان سمیت سبھی شریک ملزم سخت سیکورٹی کے درمیان عدالت میں پہنچے۔

قبل ازیں، بالی ووڈ کے اسٹار سلمان خان سمیت سبھی شریک ملزم سخت سیکورٹی کے درمیان عدالت میں پہنچے۔ اس وقت سبھی کے چہروں پر تشویش چھائی ہوئی تھی۔ عدالت کے فیصلے کے بعد سلمان کے وکیل ہستیمل سارسوت نے سزا سے متعلق بحث کی۔ چیف جوڈیشیل مجسٹریٹ دیو کمار کھتری نے اس معاملے میں 28 مارچ کو ہوئی سماعت میں ہی فیصلہ محفوظ کر لیا تھا۔

عدالت میں داخل ہوتے ہی مجسٹریٹ نے مسکرا کر سبھی ملزمان کو خوش آمدید کہا اور سب سے پہلے سلمان کا نام پوچھا جس پر سلمان نے اپنا نام بتایا۔ فیصلے کے دوران سلمان کے گھر والے بھی عدالت میں موجود تھے۔ عدالت کے فیصلے کے امکان میں سلمان خان سمیت سبھی شریک ملزم کل شام ہی جودھپور پہنچ گئے تھے۔ اس کیس کے تمام ملزم گزشتہ رات سے ہی الجھن میں مبتلا تھے۔ اداکار سلمان کو قتل کرنے کی دھمکی کے پیش نظر پولیس نے ان کے ہوٹل کے باہر سخت سیکورٹی کا انتظام کررکھا تھا اور آج سماعت کے دوران عدالت کے احاطے میں سخت حفاظتی انتظامات کئے گئے تھے۔

فلم ’’ ہم ساتھ ۔ ساتھ  ہیں‘ کی شوٹنگ کے دوران 1998 میں ان پر دو کالے ہرنوں کے شکار کا معاملہ درج کیا گیا تھا۔ اداکار سلمان خان کے علاوہ ان کے شریک اداکار سیف علی خان، سونالی بیندرے، تبو اور نیلم بھی اس معاملے میں ملزم تھے جنہیں عدالت نے بری کر دیا ہے۔

Loading...